وجدان عالم

ساتویں صلیبی جنگ، معرکہ المنصورۃ اور صلیبی جنگوں کا خاتمہ

یہ تیرھویں صدی کا وسط ہے،  عیسائی یروشلم  پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں اور یہ بات جانتے ہیں کہ مصر فتح کئے  بغیریروشلم پر قبضہ نہیں کیا جا سکتا۔ چھ صلیبی جنگیں گذر چکی ہیں لیکن یروشلم  اب تک مسلمانوں کے قبضے میں ہی ہے اور یہ بات عیسائیوں کو سکون لینے نہیں دے رہی۔پچھلے کچھ برسوں میں 2 مرتبہ یروشلم عیسائیوں کے ہاتھوں نکل چُکا ہے، دو بار کی مسلسل شکست عیسائیوں کا چین غارت کئے بیٹھی ہے، پہلی مجلسِ لیون میں عیسائیوں کے پادری  “انوسینٹ چہارم” نے ساتویں صلیبی جنگ کے لئے مکمل حمایت  کا اعلان کر دیا ہے اور یہ جنگ لوئی نہم  (فرانسیسی بادشاہ) کی قیادت میں لڑی جائے گی۔

اس جنگ کا اولین مقصد ، مصر میں ایوبی سلطنت کا خاتمہ کر کے یروشلم پر قبضہ کرنا ہے ، اس سلسلے میں عیسائیوں کا ایک وفد منگولوں کے سردار گیوک خان سے جا کر ملتا ہے اور کہتا ہے  کہ ہم عیسائی مغربی سمت سے  مسلمانوں پر حملہ کریں گے اور تم منگول مشرقی جانب سے ان پر حملہ آور ہونا اور اس جنگ میں ہمارے  حلیف بن جاؤ، جواب میں منگولوں کا سردار ان کا ساتھ دینے کی بجائے کہتا ہے کہ تم اور تمہارے پادری کو چاہئے کہ وہ اپنی سلطنت منگولوں کے حوالے کر دیں۔منگولوں سے نا اُمید ہونے کے باوجود بھی عیسائیوں  کے حوصلے بُلند ہیں اور جنگ کی تیاریاں جاری رہتی ہیں۔لوئی نہم کے بھائی چارلس اور رابرٹ کی قیادت میں ساتویں صلیبی جنگ کے لئے بحری بیڑے  ایگوس مارٹس  سے نکل چُکے ہیں۔صلیبی افواج قبرص سے ہوتی ہوئی مصر میں داخل ہو رہی ہیں اور وہاں سے یہ فوجیں  دمیاط پہنچ کر باقاعدہ مصر میں داخل ہونے کو ہیں۔ ادھر لوئی نہم   الصالح ایوب کو خط لکھتا ہے اور خط ملنے کے بعد  دمیاط میں فوجی مستقر کے امیر فخرالدین   یوسف   فوج کے ساتھ اشموم کی طرف پسپائی اختیار کرتے ہیں جس کا نتیجہ  یہ نکلتا ہے کہ دمیاط میں مقیم   لوگوں میں افراتفری پھیل جاتی ہے۔دمیاط کے باشندے یہ سب دیکھ کر شہر خالی کر رہے ہیں اور نیل کے اوپر بنا پُل جو کہ مغربی سمت سے شہر کو جوڑتا ہے خالی رہ جاتا ہے جسے اب صلیبی افواج پار کر کے شہر میں داخل ہو رہی ہیں  لیکن شہر پہلے ہی خالی ہو چکا ہے۔دمیاط پر عیسائی قبضے کی وجہ سے پورے مصر میں “ایمرجنسی” جسے مقامی زبان میں “النفیر العام” کہا جاتا ہے نافذ کر دی گئی ہے جس کی وجہ سے قاہرہ اور مصر بھر سے لوگ  میدانِ جنگ کی طرف کُوچ کرنے لگے ہیں۔

کئی ہفتے گذر چُکے ہیں، مسلمان گوریلا جنگ پر عمل کرتے ہوئے عیسائیوں پر حملہ کر کے ان کو گرفتار کرتے ہیں اور قیدی بنا کر قاہرہ روانہ کر دیتے ہیں،  لیکن تب ہی  لوئی نہم کا تیسرا بھائی  الفونسو بحری بیڑے کے ساتھ دمیاط پہنچ جاتا ہے جس کے بعد عیسائی مزید حوصلے بُلند  کر کے قاہرہ کی طرف  پیشقدمی شروع کر دیتے ہیں۔انہی دنوں میں  ایوبی سلطان الصالح ایوبی کی وفات ہو جاتی ہے جس کو کچھ روز تک ان کی بیوہ شجر الدر خفیہ رکھتی ہیں اور  ساتھ ہی اپنے بیٹے اور سلطنت کے اگلے سلطان توران شاہ کو پیغام بھیجتی ہیں کہ فوراً پہنچ کر فوج کی کمان سنبھالے۔ادھر المنصورۃ سے 2 میل دور عیسائی افواج  مسلمانوں کے ایک کیمپ پر حملہ کرتی ہیں جبکہ حالات یہ ہیں کہ مصری سلطنت اس وقت الصالح ایوبی کی بیوہ الشر الدر کے ہاتھ میں ہیں اور فوج کی کمان پہلی بار مملوکوں کو سونپی جا رہی ہیں۔عیسائی افواج شاہی محل (منصورہ) کی جانب بڑھ رہی ہیں اور ادھر  فارس الدین اکتائی اور بيبرس البندقداري ملکہ کو یہ مشورہ دیتے ہیں کہ عیسائی افواج کو شہر کے اندر بُلا کر جنگ شروع کی جائے ، ملکہ الشجر الدر اس کی منظوری دے دیتی ہیں اور شہر کے دروازے کھول دئیے جاتے ہیں۔ عیسائی خوش ہیں کہ یہ شہر بھی بنا کسی مزاحمت کے ہاتھ آگیا ہے اور اسی جوش میں اندر داخل ہوتے ہیں لیکن اندر فوج کے ساتھ ساتھ عام رعایا بھی ان پر ایک زوردار حملہ کرتی ہے۔ لوئی نہم کا بھائی رابرٹ مارا جاتا ہے  اور پانچ کے علاوہ باقی تمام ہیکل بردار بھی مارے جاتے ہیں، عیسائی بھاری نقصان اٹھا رہے ہیں اور اب ان کی پسپائی شروع ہو رہی ہے، وہ لاشیں اور زخمی چھوڑ کر واپس بھاگ جاتے ہیں۔

توران شاہ المنصورہ پہنچ چکا ہے اور الصالح ایوبی کی وفات کا باقاعدہ اعلان کر دیا جاتا ہے، فوج کی کمان اب توران شاہ کے ہاتھ میں ہے اور دوسری جانب مسلمانوں کے بحری بیڑے صلیبی جہازوں کے عقب میں نمودار ہوتے ہیں اور ادھر مسلمان عیسائیوں کے کیمپ پر تابڑ توڑ حملے کر کے ان کو مزید نقصان پہنچا رہے  ہیں، بیشتر صلیبی بحری جہاز تباہ ہو چکے ہیں، کچھ دن مزید گزرتے ہیں اور صلیبی افواج میں بیماریاں اور خوراک کی کمی پیدا ہونے لگی ہے جس کی وجہ سے اب عیسائی فوج سے لوگ نکل کر مسلمانوں سے پناہ  میں آنے لگے ہیں۔لوئی نہم، بدترین شکست کے باوجود بھی پُر امید ہے اور مصری حکمرانوں کو خط لکھ کر کہتا ہے کہ اگر وہ شامی  سمندری پٹی کے ساتھ ساتھ کچھ شہر اور یروشلم عیسائیوں کے حوالے کر دے تو وہ دمیاط مسلمانوں کے حوالے کرنے کو تیار ہے لیکن توران شاہ کی جانب سے مکمل انکار کر دیا جاتا ہے۔

رات ہو گئی ہے اور اب عیسائی افواج اندیھرے کا فائدہ اٹھا کر دمیاط کی طرف پسپائی اختیار  کر رہی ہیں، مسلمان اب بھی ان کے پیچھے ہیں،یہیں  اس صلیبی جنگ کا فیصلہ کُن معرکہ جو کہ معرکہ فرسکر کے نام سے جانا جاتا ہے پیش آتا ہے اور مسلمان،  صلیبی افواج کو  بُری طرح  شکست دے کر لوئی نہم کو گرفتار کر لیتے ہیں۔ ساتویں صلیبی جنگ اپنے اختتام کو پہنچتی ہے۔پچھلے کچھ عرصے سے یورپ میں یہی خبریں گردش کر رہی ہیں کہ صلیبی افواج نے مسلمانوں کو شکست دے دی ہے اور ان کے سلطان کو مارا جا چکا ہے اور اب صلیبی افواج یروشلم کی جانب پیش قدمی شروع کر چکی ہیں لیکن لوئی نہم کی گرفتاری کے بعد جیسے ہی عیسائیوں کی شکست کی خبریں یورپ پہنچتی ہیں تو وہاں لوئی نہم کو بازیاب کروانے کی مہم کا آغاز ہوتا ہے۔

بعد کے حالات:

اس جنگ میں پندرہ ہزار سے تیس ہزار کے قریب عیسائی مارے گئے تھے، لوئی نہم اور اس کے دو بھائی چارلس اور الفونسو کو امیر  ابراہیم ابن لقمان اور ان کے محافظ صبیح المعظمی  نے گرفتار کر کے اپنے گھر میں بیڑیاں پہنا کر قید کر دیا، بعد ازاں شہر کے باہر  ایک خیمہ لگایا گیا اور لوئی نہم  کو اس شرط پر رہا کیا گیا کہ وہ دوبارہ مصر کی طرف پیش قدمی نہیں کرے گا اور ساتھ  چار لاکھ دینار بھی ادا کرے گا۔لوئی نہم اور اس کے بھائیوں کو بارہ ہزار قیدیوں کے ہمراہ رہا کر دیا گیا ، دمیاط مسلمانوں کے قبضے میں واپس آگیا اور لوئی نہم عاکہ طرف واپس چلا گیا۔اس جنگ کی خاص بات یہ بھی ہے کہ اس جنگ  نے مصنفوں اور شاعروں کو بہت متاثر کیا،  جمالدین، ایک تاریخ دان  نے کچھ ان الفاظ میں اس صلیبی جنگ  کے بارے میں لکھا:

“اگر وہ (صلیبی فوج) بدلے کے لئے  یا کسی  بُری نیت سے واپس آنے کا ارادہ کرتے ہیں تو ان کو بتا دو کہ ابنِ لقمان کا گھر بھی وہیں ہے ، وہ بیڑیاں بھی وہیں ہیں اور صبیح بھی ادھر ہی ہوتا ہے”

ساتویں صلیبی جنگ آخری صلیبی جنگ تھی، اور صلیبی جنگوں میں کبھی بھی عیسائی یروشلم پر قابض نہ ہو سکے،اس جنگ کے کچھ عرصہ بعد توران شاہ کو فرسکر میں قتل کر دیا گیا اور یہاں سے ایوبی سلطنت کا خاتمہ ہوا اور مصر مملوکوں کے پاس آگیا۔ لوئی نہم کے علاوہ کسی دوسرے عیسائی بادشاہ نے صلیبی جنگ کے ذریعے یروشلم پر قبضہ کرنے کی کوشش نہیں کی۔

کیا ہم محفوظ ہیں؟

زیرِ نظر تصویر ایک کمپیوٹر گیم “واچ ڈاگز” Watch Dogs سے لی گئی ہے جو کہ گزشتہ دنوں کھیلنے کا اتفاق ہوا اور ابھی تک یہ اتفاق چل ہی رہا ہے۔اس گیم میں امریکہ کے شہر شکاگو کو دکھایا گیا ہے اور اس کا تانے بانے جا کر 2003 میں ہوئے ایک واقعہ سے ملتے […]

The post کیا ہم محفوظ ہیں؟ appeared first on وجدان عالم.

ثقبِ اسود / بلیک ہولز، کیا، کیسے کہاں؟

حرفِ اول: پہلی بات تو یہ کہ ہمیں سائنس کے بارے کچھ علم نہیں، تھوڑا بہت بھی نہیں، اس لئے فیصلہ یہ ہوا ہے کہ مولوی لینکس اپنے  مصروف وقت سے تھوڑا سا مزید مصروف وقت نکال کے ہمارا یہ مضمون پڑھنے کے گناہ کے مرتکب ہوں اور ہمیں بتائیں کہ یہ ٹھیک ٹھاک ہے یا نہیں کیونکہ سائنس خاص کر طبیعات سے ہمارا رشتہ واجبی سا ہی ہے۔غلطی کے امکانات کو مدِ نظر رکھتے ہوئے اگر کچھ غلطیاں ملیں تو ہمیں ضرور آگاہ کریں آپکو کچھ نہیں کہا جائے گا اس بارے ڈرنے کی بالکل ضرورت نہیں۔ بلیک ہولز کیا ہوتے ہیں: ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں۔۔۔۔۔ بلیک ہولز جسے اردو میں ثقبِ اسود کہتے ہیں، ثقب […]

The post ثقبِ اسود / بلیک ہولز، کیا، کیسے کہاں؟ appeared first on وجدان عالم.

قرآن کا معجزہ – روشنی کی درست رفتار

اسلام میں اور دیگر بھی کئی مذاہب میں یہ بات موجود ہے کہ اللہ اپنا حکم فرشتوں کے ذریعے پہنچاتا ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ سب کچھ لوحِ محفوظ میں لکھا جا چکا ہے اور کائنات کے مختلف امور فرشتے اللہ کے حکم سے انجام دیتے ہیں۔ صحیح مسلم میں حضرت عائشہ رضی اللہ سے روایت ہے کہ آپ ﷺ نے فرمایا: “خُلِقَتِ الْمَلاَئِكَةُ مِنْ نُورٍ” (فرشتوں کو نور سے بنایا گیا) (حدیث نمبر: 2996)۔ قرآن میں اللہ نے فرمایا: يدبر الأمر من السماء إلى الأرض ثم يعرج إليه في يوم كان مقداره ألف سنة مما تعدون ترجمہ: وه آسمان سے لے کر زمین تک (ہر) کام کی تدبیر کرتا ہے۔ پھر (وه کام) ایک ایسے دن میں اس کی […]

The post قرآن کا معجزہ – روشنی کی درست رفتار appeared first on وجدان عالم.

قرآن کی زبان – عربی

زبانِ قرآن یہ بتانے کی تو ضرورت نہیں کہ قرآن عربی زبان میں نازل ہوا۔جیسا کہ ہر زبان کا ایک لہجہ ہوتا ہے ویسے ہی عربی زبان کے بھی بہت سے لہجے موجود ہیں بلکہ یوں کہیں کہ ہر ملک کی عربی کا اپنا ایک لہجہ ہے جو وہاں استعمال ہوتا ہے۔قرآن بعض روایات کے مطابق قبیلہ مضر کی خاص زبان میں نازل ہوا  اور بعض روایات میں قریش کی زبان بھی آئی ہے بہر حال جو بھی ہو قرآن صاف ستھری عربی زبان میں نازل ہوا اور یہ عربی حجاز کی عربی تھی نہ کہ نجد کی کیونکہ بعض جگہ لوگوں نے نجد کی عربی کہا ہے جو کہ غلط ہے۔عربی تین طرح کی ہے۔۔ اللھجۃ جسے اردو میں […]

The post قرآن کی زبان – عربی appeared first on وجدان عالم.

مکہ اور خانہ کعبہ کی تاریخ

مکہ اور خانہ کعبہ کی تاریخ: مکہ: عیسائی مؤرخ لکھتے ہیں کہ مکہ کا ذکر قدیم تاریخ میں کہیں نہیں ملتا، مسلمانوں نے اپنے دین کی وجہ سے اسے مشہور کر رکھا ہے، خیر ان سے کچھ بعید بھی نہیں کیونکہ زمانہ قدیم سے یہود و نصاریٰ مکہ کی تذلیل کے درپے رہے ہیں لیکن اللہ نے قرآن میں فرمایا ہے: إن أول بيت وضع للناس للذي ببكة مباركا وهدى للعالمين ترجمہ: اللہ تعالیٰ کا پہلا گھر جو لوگوں کے لئے مقرر کیا گیا وہی ہے جو بکہ (شریف) میں ہے جو تمام دنیا کے لئے برکت وہدایت واﻻ ہے۔ (ـترجمہ از محمد جوناگڑھی) اس آیت مبارکہ میں مکہ کا نام بکہ ارشاد ہوا ہے اور مزید یقین دہانی کے […]

The post مکہ اور خانہ کعبہ کی تاریخ appeared first on وجدان عالم.

دجال

دنیا کی تخلیق سے لیکر قیامت تک، حضرت آدمؑ سے لیکر کائنات میں موجود آخری انسان تک کوئی بھی فتنہ کوئی بھی آزمائش دجال کے فتنے سے بڑی نہیں۔ ایک لاکھ چوبیس ہزار انبیاء کرام میں سے ایک بھی ایسا نہیں جس نے اپنی امت کو دجال کے فتنے سے نہ ڈرایا ہو۔اس کو کوئی روک نہیں سکے گا، کوئی ہرا نہیں سکے گا کوئی مار نہیں سکے گا۔حضرت مہدی اس دور میں موجود ہونگے اور مسلمانوں کے ساتھ ہونگے لیکن وہ اس کا مقابلہ نہیں کر سکیں گے۔دجال اس دنیا میں چالیس روز تک رہے گا جس میں ایک دن ایک سال کے برابر، ایک دن ایک مہینے کے برابر، ایک دن ایک ہفتے کے برابر اور باقی دن […]

The post دجال appeared first on وجدان عالم.

1.2.3 مسلم اور مسلمۃ چارٹ

الحمد للہ رب العالمین والصلوٰۃ والسلام علی سید الانبیاء والمرسلین اما بعد فاعوذ باللہ من الشطین الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم مسلم چارٹ: عام طور پر کتابوں میں گردانیں کروائی جاتی ہیں جن کو بنیادی طور پر تو رٹنا ہی ہوتا ہے ، یہاں بھی گردان کی قسم ہی ہے لیکن ہم کوشش کریں گے کہ ان الفاظ کو سمجھ سکیں۔ نیچے موجود ٹیبل پر نظر ڈالیں اگر آپکو سمجھ نہ بھی آئے تو فی الوقت کے لئے رٹّا مار لیں کیونکہ آگے ہم ان کو بہت پڑھیں گے۔ مذکر مفرد (واحد) مثنی(دو) جمع رفع مُسلِمٌ مُسْلِمَانِ مُسْلِمُوْنَ نصب مُسلِمً مُسْلِمَيْنِ مُسْلِمِيْنَ جر مُسلِمٍ مُسْلِمَيْنِ مُسْلِمِيْنَ اس ٹیبل میں کچھ باتیں نوٹ کرنے کی ہیں ان پر پہلے ایک نظر […]

رسول اللہ ﷺ کا خط اور ہرقل کا ابوسفیان سے مکالمہ

621ء میں ہرقل روم سے نکل کر یروشلم اور دمشق کو واپس فتح کر چکا تھا اور نہ صرف اس نے فارسی حکومت سے اپنے چھینے ہوئے علاقے واپس لئے تھے فارسی سلطنت کے بھی بیشتر شہروں پر قبضہ کر لیا تھا۔ یہ وہ وقت تھا جب رسول اللہ ﷺ نے دحية الكلبى (یہ وہی […]

قرآن تک رسائی۔۔۔

قرآن کو  سمجھنے یا قرآن تک رسائی حاصل کرنے لئے دو چیزوں کی ضرورت ہے۔ ان دو چیزوں کے نام یہ ہیں: نفسیاتی یا جذباتی لوازمات تعلیمی لوازمات یہ لوازمات ہیں ان کو شرائط بھی کہہ سکتے ہیں لیکن ہم ان کو یہاں شرائط کی بجائے لوازمات یا ضروریات کے طور پر دیکھیں گے ۔آپ […]

اندلس میں آخری اسلامی حصار – غرناطہ

711ء میں جزیرہ نما آئبیریا میں لدریق کی ظلم و جبر سے بھری سلطنت کو ختم کرنے کے لئے جب مسلمانوں کو پکارا گیا تو اموی خلیفہ نے طارق بن زیاد کو ایک لشکر دے کر بھیجا جو جبلِ طارق (موجودہ جبرالٹر) کے مقام پر لنگر انداز ہوا۔ تقریبا! سات برس کا عرصہ لگا اور […]

حالتِ اسم – الفاظ کے ذریعے رفع، نصب اور جر کی پہچان

الحمد للہ رب العالمین والصلوٰۃ والسلام علی سید الانبیاء والمرسلین اما بعد فاعوذ باللہ من الشطین الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم اردو میں لکھتے ہوئے فاعل اور جملے میں موجود تفصیلات کا اندازہ جملے میں آنے والی ترتیب سے لگایا جا سکتا ہے جیسے: استادوں نے طلباء کی مدد کی طلباء نے استادوں کی مدد […]

اسماء بنت عمیس رضی اللہ

اسمء بنت عمیس رضی اللہ عنہا ان اولین مسلمانوں میں سے ہیں جنہوں نے پہلے حبشہ بعد میں مدینہ کی طرف یجرت کی۔ ایک بار وہ ام المومنین حضرت حفصہ رضی اللہ جو کہ حضرت عمر رضی اللہ کی بیٹی بھی ہیں کے پاس تشریف فرما تھیں کہ حضرت عمر رضی اللہ وہاں آئے، انہوں […]

[تفصیلی ] پاکستان میں سائبر کرائم بِل کیا ہے اور پاکستانی شہری پر اس کا کیا اثر پڑ سکتا ہے

 “سائبر کرائم” یا وہ جرائم جو کمپیوٹر یا اس ے متعلق  جیسے ہیکنگ، کسی کی شناخت کا غلط یا غیر قانونی استعمال الغرض الیکٹرانک ذرائع کا استعمال کر کے کئے جانے والے تمام جرائم سائبر کرائم کے ضمرے میں شامل کئے جا سکتے ہیں۔ پاکستان میں ان جرائم کے حوالے سے قومی اسیمبلی کی قائمہ […]

شجرہ نبوی ﷺ

كلاب بن مُرة کی شادی فاطمہ بنتِ سعد سے ہوئی ان کی اولاد میں زهيرة بن كلاب بن مُرة اور قصي بن كلاب بن مُرة شامل ہیں۔عبدِ مناف، زهيرة بن كلاب بن مُرة کے بیٹے تھے جن سے بعد میں وہب بن عبدِ مناف پیدا ہوئے جو کہ حضرت بی بی آمنہ رضی اللہ عنہا […]

1.2.1 حالتِ اسم – رفع، نصب، جر

الحمد للہ رب العالمین والصلوٰۃ والسلام علی سید الانبیاء والمرسلین اما بعد فاعوذ باللہ من الشطین الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم السلام علیکم! پچھلے حصے میں ہم نے عربی میں الفاظ کی تین اقسام کے بارے میں پڑھا تھا جس میں ، حرف، فعل اور اسم شامل ہیں۔ اسم ان میں تھوڑا تفصیل کے ساتھ […]

دنیا ترقی کر گئی ہے۔۔۔۔

سرف ایکسل نے ہمارا نصف ایمان مکمل کر دیا، جو رہتا تھا سیف گارڈ اس کے کام آگیا۔ گلُوکو بسکٹ آئے تو قوم کو علم ہوا کہ بڑے بڑے فٹ بالر ہیں جی ہمارے ملک میں تو، پیپسی کی وجہ سے آج قوم میں مایا ناز کرکٹ کے کھلاڑی پیدا ہو رہے ہیں، بوم بوم […]

1.1.2 الفاظ کی تین اقسام

پچھلا سبق – عربی کورس اردو زبان میں – تعارف ولقد یسرنا القراٰن لذکرِ الحمد للہ رب العالمین والصلوٰۃ والسلام علی سید الانبیاء والمرسلین اما بعد فاعوذ باللہ من الشطین الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم السلام علیکم! آج سے باقاعدہ عربی کی کلاسز کا آغاز ہوگا اور ایک بات ذہن میں رہے کہ  یہاں ہم […]

1.1 عربی کورس، اردو زبان میں – تعارف

السلام علیکم عربی سیکھنے کا  پہلا مقصد یا بنیادی مقصد کیا ہے؟ آپ کیوں عربی سیکھنا چاہتے ہیں؟ ان سوالوں کا سادہ سا جواب یا بہترین جواب یہ ہو سکتا ہے کہ ہم قرآن سمجھنا چاہتے ہیں، ہم چاہتے ہیں جب نماز میں یا کسی کو قرآن  پڑھتا سنیں تو ہمیں پتا ہو کہ قاری […]

اوس اور خزرج کا قبولِ اسلام، بیعتِ عقبہ اول اور بیعت عقبہ ثانی (10 نبوی تا 13 نبوی ﷺ)

یہ ہجرت مدینہ سے پہلے کی بات ہے۔ مکہ میں کفار، مسلمانوں بالخصوص رسول اللہ ﷺ  کو بہت تنگ کرتے تھے۔ہجرت نبوت کے تیرھویں برس ہوئی جبکہ نبوت کے دسویں برس سے تیرھویں برس تک آپ ﷺ مکہ میں آنے والے قبائل کو اسلام کی دعوت دینے پر زور دیتے تھے، باہر کے قبائل کو […]

Pages