بلاگ اے

آدھی رات کا لاہور

لاہور میرے لیے ایک افسانوی شہر ہے، جسے پڑھتے، گھومتے، سمجھتے میں کبھی تھکا ہوں اور نہ ہی ایسا کوئی ارادہ ہے۔ صرف لاہور ہی نہیں میرے لیے پورے پنجاب کا احساس ہی الگ ہے، لاہور کچھ اس لیے زیادہ دل کے قریب ہے کیونکہ یہاں وہ وقت گزارا ہےجو باقی زندگی کی کہانی میں … جاری رکھئیے پڑھنا آدھی رات کا لاہور

امی، میں ویریفائڈ ہوگیا

اچھا، تو تم ویریفائیڈ نہیں ہوئے کیا؟ گھر، آفس، پارک، دوست، رشتے دار، جہاں بھی جاتا یہ سوال میرا پیچھا کررہا ہوتا، اور پہلے سے پریشان زندگی کی اذیتوں میں ایسے اضافہ کرتا جیسے ٹویٹ وائرل ہونے پر انڈے فالورز کا اضافہ ہوتا ہے۔ یہ سوال میرے ذہن کی دیواروں سے ٹکرا کر ایسا شور … جاری رکھئیے پڑھنا امی، میں ویریفائڈ ہوگیا

جب جنید جمشید نے مجھے پیغام بھیجا

کبھی ایسا ہوا ہے کہ آپ کے بچپن کا ہیرو، جس کی آواز پر پورا ملک جھومتا ہو، جس کے اخلاق کی گواہی بڑے سے بڑا شخص دیتا ہو، ہر گنگنانے والا جس کے گانے گاتا ہو، ہر عاشق رسول جس کی نعتیں پڑھتا ہو۔۔۔ جس سے آپ کی کبھی ملاقات تک نہ ہوئی ہو، بات تک نہ ہوئی ہو۔ وہ اچانک کسی دن آپ کو پیغام بھیجے کہ آپ سے کچھ بات کرنی ہے۔ کیا حال ہوا ہوگا میرا جب جنید جمشید نے مجھے ٹوئٹر پر ذاتی پیغام بھیجا؟

وہ لاکھوں میں ایک لمحہ

کبھی کہیں سڑک پر، کسی گلی میں، کسی رستے پر جب چل رہا ہوتا ہوں تو اچانک کوئی منظر، کوئی لمحہ ایسا آتا ہے جو پہلے کبھی نہ کبھی زندگی میں ہوچکا ہوتا ہے، گزر چکا ہوتا ہے، دیکھا ہوتا ہے یا گزارا ہوتا ہے۔ چاہے وہ درختوں کی ایک قطار ہی کیوں نہ ہو، … جاری رکھئیے پڑھنا وہ لاکھوں میں ایک لمحہ

کیا یہ شیشہ گر اردو کو بچا لے گا؟

"میری ہاتھ سے بنائے گئے اینی میشن پر مبنی فلم 'شیشہ گر' میں ایک ایسا معاشی اور سیاسی یورپی ماحول دکھایا گیا ہے جو پاکستان سے ملتا جلتا ہے، لیکن میرے کردار اردو بولیں گے، میری قومی زبان"

کیا پاکستانی بچے اپنے ٹی وی سے خوش ہیں؟

"بل بتوڑی ناساں چوڑی، ادی میٹھی، ادی کوڑی، آئی ایم سوری، آئی ایم سوری” یہ الفاظ سن کر آج کل کا کوئی بھی پاکستانی جو اپنی زندگی کی دو دہائیاں گزار چکا ہے مسکرائے بغیر نہ رہ پائے گا، اور ‘عینک والا جن’ کی قصہ چھیڑ دے گا۔ نستور، زکوٹا، ہامون جادوگر، بل بتوڑی، چارلی ماموں … جاری رکھئیے پڑھنا کیا پاکستانی بچے اپنے ٹی وی سے خوش ہیں؟

کالے بکسے کا خزانہ

"اس مہینے کا رسالہ آگیا ہے؟”، امید بھری نظروں سے وہ کتاب گھر کے دکاندار کے سامنے کھڑا وہی سوال پوچھ رہا تھا جو وہ پچھے چار دن سے روزانہ پوچھتا چلا آرہا تھا۔ دکاندار نے اسے مسکراہتے ہوئے دیکھا اور بولا، "تمہیں چین نہیں ہے؟ جب بھی آیا میں تمہیں خود بتا دوںگا، تمہارے … جاری رکھئیے پڑھنا کالے بکسے کا خزانہ

پکوانوں کو محفوظ کرتے انسٹاگرامرز

کراچی کے انسٹاگرامز نے اس بار شہر کی مشہور ترین فوڈ سٹریٹ برنس روڈ کو چنا اور وہاں پکتے پکوان، ان کو پکاتے لوگوں اور ارد گرد بنی پرانی عمارتوں کو اپنی تصاویر میں محفوظ کیا۔ انسٹاگرام ہر سال دو بار بین الاقوامی سطح پر انسٹامیٹ کے انعقاد کا اعلان کرتا ہے جس کے بعد دنیا بھر … جاری رکھئیے پڑھنا پکوانوں کو محفوظ کرتے انسٹاگرامرز

ویڈیو: شہاب نامہ کی چندراوتی

یہ ویڈیو عطوفہ نجیب کی جانب سے دیے گئے "بک ریڈنگ چیلنج” کا حصہ ہے۔ اقتباس ہے قدرت اللہ شہاب کی کتاب شہاب نامہ کے باب "چندراوتی” سے۔ میرے تلفظ کی غلطیاں معاف فرما دیجیے گا۔

ایک تصویر ایک کہانی: سیلفی

اڑنگ کیل سے واپس کیل آتے ہوئے، پہاڑ پر بنے اینٹوں سے بنے رستے پر قدم جمائے زور لگاتے، میں پھولی سانس کے ساتھ گرمی سے تنگ آچکا تھا۔ کشمیری بزرگوں کا ایک گروہ قریب سے گزرا تو ہم نے سلام  کی آواز بلند کی تو ادھر سے ایک مسکراتا ہوا پرجوش سا جواب آیا۔ صبح جب ہم … جاری رکھئیے پڑھنا ایک تصویر ایک کہانی: سیلفی