Feed aggregator

روح کی حقیقت اور احادیث

مذہب فلسفہ اور سائنس -

اللہ تعالی ہر چیزکوپیدا کرنے والاہے ، اورروح بھی مخلوقات کی طرح ایک مخلوق ہے ، اس حقیقت وغیرہ کا علم تو اللہ تعالی کی خصوصیت ہے جس طرح کہ حدیث میں وارد ہے : عبداللہ بن مسعود رضي اللہ تعالی عنہما بیان کرتے ہيں کہ میں ایک دن نبی صلی اللہ علیہ وسملم کے…

رُوح کیا ہے؟ ایک سائنسی نظر

مذہب فلسفہ اور سائنس -

روح کیا ہے ؟ انسانوں کی اکثریت روح کے تصوّر سے آشناہے لیکن مادّہ پرست روح سے انکاری ہیں۔ روح ہے یا نہیں یا کیا ہے؟ اس کی تشریح محض اپنی تمنّا پر نہیں کی جاسکتی بلکہ کائنات اور حیات کے تناظر میں اس کا عقلی جائزہ ہی کسی قابل قبول رائے تک پہنچائے گا…

روح یا کیمیائی تعاملات

مذہب فلسفہ اور سائنس -

یہ بات درست ہے کہ تمام تر جذباتی کیفیات جسم میں موجود رطوبتوں کے نظام کی وجہ سے پیدا ہوتی ہیں۔ خوشی، غم، غصہ، خوف، یہ سب کیمیائی تعاملات ہیں۔ لیکن کیا ’’سرشاری‘‘ ، ’’استغنأ‘‘ ، ’’اُنس‘‘، ’’بے نیازی‘‘ ، “سخاوت ” بھی کیمیائی تعامل کے ذریعے پیدا ہونے والی کیفیات ہیں؟ کیا غریب کی…

روح کا وجود

مذہب فلسفہ اور سائنس -

قارئین ! کسی چیز کے وجود کو نہ ماننا اور کسی چیز کے وجود کا انکار کر ڈالنا ۔ یہ دو مختلف باتیں ہیں ۔ ان کے محرکات بھی مختلف ہیں اور نتائج بھی ۔کسی چیز کو نہ ماننا اس کے نہ ہونے کی دلیل نہیں ہوتا بلکہ آپ کی کم علمی کی دلیل ہوتا…

کیاجنات حقیقت ہیں؟

مذہب فلسفہ اور سائنس -

کیا جنّات حقیقت ہیں؟ کیا سائنس آگ سے زندگی کی تصدیق کرتی ہے؟ جواب یہی ہوگا کہ سائنس موجودہ علوم کی روشنی میں اس کی تصدیق نہیں کرتی۔ لیکن ا س موضوع پر سائنس، کامن سینس اور قرآن کے زاویوں سے طائرانہ نظر ڈالنا ایک دلچسپ امر ہوگا۔ کائنات اور اس میں زندگی کے حوالے…

کابل: وزارت مواصلات و آئی ٹی کمپاؤنڈ پر حملہ، 3 اہلکاروں سمیت 10 افراد ہلاک

اقبال جہانگیر (آواز پاکستان) -

کابل: وزارت مواصلات و آئی ٹی کمپاؤنڈ پر حملہ، 3 اہلکاروں سمیت 10 افراد ہلاک افغانستان کے درالحکومت کابل میں وزارت مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے کمپاؤنڈ پر  داعش کےحملے میں 3 سیکیورٹی اہلکاروں سمیت 10 افراد ہلاک ہوگئے8 شہری زخمی ہوئے جب کہ سیکیورٹی فورسز نے عمارت کو کلیئر کردیا ہے اور آپریشن میں 4 حملہ آور بھی مارے گئے ہیں۔مرنے والوں میں 2 بے گناہ عورتیں اور 5  بے گناہ سویلین شامل ہیں۔ افغان حکام کے مطابق حملہ آوروں نے وزارت مواصلات اور آئی ٹی کی عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کی جس دوران سیکیورٹی فورسز اور حملہ آوروں میں مقابلہ ہوا۔

داعش نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ داعش کو علم ہونا چاہئیے کہ ایک بے گناہ انسان کا خون پو ری انسانیت کا خون ہے اور یہ بات طے ہے دہشت گر دی کہ اس طر ح کے واقعات میں ملوث لوگ نا تو انسان ہیں اور نا ہی ان کو کو ئی مذہب ہو تا ہے ۔ حضرت  ابوہریرہ سے روایت ہے کہ رسول اللہؐ نے فرمایا: مسلمان وہ ہے  جس کی زبان اور ہاتھ سے مسلمان محفوظ ہیں اور مؤمن وہ ہے جس سے لوگ اپنی جانوں مالوں کو مامون جانیں۔’  فساد پھیلانا قتل و غارتگری کرنا ناقابلِ معافی جرم ہے۔ اللہ کے رسول اکرم کا ارشا د ہے: اللہ کے ساتھ شرک کرنا یا کسی کو قتل کرنا اور والدین کی نا فرمانی کرنا اللہ کے نزدیک گناہ کبیرہ ہے۔ (البخاری) بے گناہ مسلمانوں کا قتل اور دہشت گردی اسلام میں قطعی حرام بلکہ کفریہ اعمال ہے۔ کبار ائمہ تفسیر و حدیث اور فقہاء و متکلمین کی تصریحات سمیت چودہ سو سالہ تاریخِ اسلام میں جملہ اہلِ علم کا فتویٰ یہی رہا ہے ۔ اپنی بات منوانے اور دوسروں کے موقف کو غلط قرار دینے کے لئے اسلام نے ہتھیار اُٹھانے کی بجائے گفت و شنید اور دلائل سے اپنا عقیدہ و موقف ثابت کرنے کا راستہ کھلا رکھا ہے۔ ہتھیار وہی لوگ اُٹھاتے ہیں جن کی علمی و فکری اساس کمزور ہوتی ہے اور وہ جہالت و عصبیت کے ہاتھوں مجبور ہوتے ہیں، ایسے لوگوں کو اسلام نے باغی قرار دیا ہے جن کا ٹھکانہ جہنم ہے۔اسلام میں عام شہریوں، عورتوں اور بچّوں کے خلاف طاقت کے استعمال کی بڑی سختی کے ساتھ ممانعت کی گئی ہے۔بے گناہوں کا خون بہانے والے اسلام کی کوئی خدمت نہیں کر رہے۔دہشت دہشتگردی ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ جہاد کا حقیقی  مقصد امن کی بحالی ہوتا ہے۔ داعش کی دہشتگردی اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے. یہ جہاد نہ ہے بلکہ دہشتگردی گردی ہے۔ خطے کے ممالک کی سلامتی اور استحکام کیلئے داعش ایک سنجیدہ خطرہ ہے اور اس خطرے سے نمٹنے کیلئے مشترکہ کاوشیں کی  ضرورت ہے۔

اسلام اور احترام انسانیت

اقبال جہانگیر (آواز پاکستان) -

اسلام  اور احترام انسانیت شریعتِ اسلامی کی رُو سے ہر انسان مکرم اور معزّز ہے۔ ‘اسلام میں انسان کو اشرف المخلوقات قرار دیا گیا ہے، اس کے احترام و اکرام کی تعلیم دی گئی، انسان ہونے کے ناطے اسے پوری کائنات پر فضیلت و برتری عطا کی گئی ۔ اسلام کے علاوہ کسی اور مذہب یا تہذیب میں انسانیت نوازی اور عام انسانوں پر رحم و کرم کا وہ تصور نہیں ملتا،جو اسلام نے پیش کیا ہے۔ اسلام نے احترام انسانیت کا نہ صرف درس دیا، بلکہ اس پر انتہائی عمل پیرا ہونے کا حکم بھی دیا۔ اسلام نے انسانوں کی دل آزاری سے اجتناب برتنے اور حقوق انسانی کے تحفّظ پر انتہائی زور دیا ہے۔ احترام کی صفت اسلامی اخلاقیات میں سے ایسی خوبی ہے جو ایک دوسرے کے ساتھ ربط اور تعلق کی بنیاد ہے۔  اسلام احترامِ انسانیت اور امن و سلامتی کا علم بردار ہے۔انسان دوستی اور احترام انسانیت دین اسلام کا امتیاز اور بنیادی شعار ہے ،جس کے بغیر احترام انسانیت اور امن و سلامتی کا تصور بھی محال ہے۔ رسول اللہ ؐ كے عطا كرده حقوق اللہ وحقوق العباد كے فلسفہ وحكمت سے يہ امر واضح ہے كہ يہ ہی نظام، عدل، وانصاف كا حامل ہے جو معاشرے كو امن وآشتى كا گہواره  بناتے ہوئے ايك فلاحى مملكت كى حقيقى بنياد فراہم كرتا ہے۔در حقيقت رسول اللہ ؐكے نظام حقوق وفرائض، انسانى حقوق كا ايك بے مثال عالمى چارٹر ہے۔ اور جسے انسانى حقوق كى پہلى دستاويز يا منشور  ہونے كا شرف  بھى حاصل ہے۔ اسلام نے ہمیشہ محبت و اخوت اور اعتدال وتوازن کا درس دیا ہے۔ انتہا پسندی ایک ایسی اصطلاح ہے جس کی اسلام میں کوئی گنجائش نہیں بلکہ یہ دین کی حقیقی تعلیمات، اسلام کے پیغام امن وسلامتی اور پیغمبر رحمت، محسن انسانیت کے اسوہ حسنہ کے بالکل منافی ہے۔ قرآن مجید نے انتہا پسندی کے مقابلے میں اعتدال پسندی کو مستحسن عمل اور دین کی روح قرار دیا ہے۔ اسلام امن، محبت، تحمل، برداشت کی تعلیم دیتا ہے، ایک دوسرے کے عقائدو نظریات کا احترام سکھاتا ہے، اسلام میں انسانی جان کی قدر و قیمت اور حرمت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ دین اسلام میں ایک انسان کا قتل پوری انسانیت کے قتل کے مترادف ہے، اسلام بلاتفریق رنگ و نسل بے گناہ انسانوں کے قتل کی سختی سے ممانعت کرتا ہے، اسلام احترام انسانیت اور امن کا مذہب ہے۔ قرآن حکیم میں ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ جس نے کسی شخص کو بے وجہ(ناحق) قتل کیا تو گویا اس نے تمام لوگوں کو قتل کر ڈالا، اللہ کریم کا حکم مرد، عورت ،چھوٹے ،بڑے، امیر غریب، مسلم ،غیر مسلم سب کے لیے ہے، قرآن حکیم نے کسی بھی انسان کو بلاوجہ قتل کرنے کی نہ صرف سخت ممانعت فرمائی ہے بلکہ اسے پوری انسانیت کا قتل ٹھہرایا ہے، انہوں نے کہا کہ اللہ اور اس کے رسول  اکرم کے نزدیک مسلمان کے جسم و جان ،عزت و آبرو کی اہمیت کعبۃاللہ سے بھی زیادہ ہے، بے گناہوں کی جان لینے والوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں، معصوم انسانوں کی جان لینے والوں میں خوف خدا ہوتا تو ان کی وحشت اور بربریت سے لوگ محفوظ رہتے، اسلام جیسے پرامن و عافیت والے دین میں بے گناہوں کی جان لینے اور فساد برپا کرنے کی کوئی گنجائش نہیں۔

سائنس کےخوف سے معجزات کاانکار

مذہب فلسفہ اور سائنس -

جدید عقلیت نے کسی بھی چیز کے درست ہونے کا معیار یہ رکھا ہے کہ وہ انسانی عقل میں آجائے اوراسکا تجربہ بھی ممکن ہو ۔ اس لاجک کے تحت مذہبی عقائد کو بھی ہدف تنقید بنایا گیا ہے چنانچہ جہاں عقیدہ توحید، رسالت، آخرت پر عقلی سوالات اٹھائے گئے ہیں وہاں اس زد میں…

معجزے کی سائنسی تشریح

مذہب فلسفہ اور سائنس -

  جب سے انسانوں کی ایک بڑی آبادی نے اس مادی دنیا کو سمجھنے پر زور دیا اور اس کو اپنے فوائد کے لئے استعمال کرنا شروع کیا تو مذاہب پر بہت سارے نئے اعتراضات کچھ زیادہ ہی خود اعتمادی لے کر حاضر ہوا۔ اس کے نتیجے میں کچھ مسلمانوں کو جوابات دینے میں کچھ…

حضرت آدمؑ، عیسیؑ وحواؑ کی پیدائش کس سائنسی اصول کے تحت ہوئی؟

مذہب فلسفہ اور سائنس -

ایک ملحد نے ایک پوسٹ کی ہے جس پر ہمارے کچھ ردِ الحاد کے ساتھی عجیب و غریب طریقے سے حضرت مریم علیہ السلام میں Y کروموزومز کی موجودگی کی وضاحتیں کرنے میں مصروف ہیں ۔ یہ وہ معجزات ہیں جن کا سائنس انکار کر سکتی ہے نہ کوئی وضاحت ۔ ان کا پہلا سوال…

واقعہ معراج اورجدیدذہن کےاشکالات

مذہب فلسفہ اور سائنس -

کہا جاتا ہے کہ موجودہ سائنس انسانی شعور کے ارتقاء کا عروج ہے لیکن سائنس دان اور دانشور یہ حقیقت تسلیم کرنے پر مجبور نظر آتے ہیں کہ انسان قدرت کی ودیعت کردہ صلاحیتوں کا ابھی تک صرف پانچ فیصد حصہ استعمال کرسکا ہے ۔قدرت کی عطا کردہ بقیہ پچانوے فیصد صلاحیتیں انسان سے پوشیدہ…

معجزات کی سائنسی افادیت

مذہب فلسفہ اور سائنس -

معجزات کے عقلی و سائنسی پہلووں پر مختلف محققین نے طبع آزمائی کی ہے ، صاحبِ تفسیر عثمانی مولانا شبیر احمد عثمانی رحمہ اللہ نے اپنے رسالے ‘ اسلام اور معجزات’میں لکھا کہ معجزات قوانین فطرت کے خلاف نہیں ہوتے بلکہ ایک اعلی قانون فطرت پر ہی مشتمل ہوتے ہیں جسکو ہم اپنی کم علمی…

قرآن میں آسمان اورزمین کاذکراورجدید سائنسی اصطلاحات

مذہب فلسفہ اور سائنس -

اعتراض:جدید سائنس کے مطابق آسمان نام کی بھی کوئی چیز وجود نہیں رکھتی، ایک خلا ہے جس میں زمین اور باقی ستارے ، سیارے تیر رہے ہیں، جبکہ قرآن زمین اور آسمان کا ذکر کرتا ہے۔ قرآن اور آسمان کا مطلب : پہلے تو یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ قرآن سائنسی کتاب نہیں ہے…

زمین وآسمان کی تخلیق چھےایام میں یاآٹھ

مذہب فلسفہ اور سائنس -

اعتراض : قرآن کئی مقامات پر بیان کرتا ھے کہ زمین و آسمان چھ دن میں پیدا کئے گے لیکن سورۃ فصّلَت میں کہا گیا ھے کی زمین و اسمان 8 دنوں میں بناے گے کیا یہ تضاد نہیں؟ جواب: قرآن کے مطابق آسمان و زمین چھ دنوں یعنی چھ ادوار میں پیدا کیے گے…

کیاتخلیق سےپہلےزمین وآسمان آپس میں جڑےہوئےتھے؟

مذہب فلسفہ اور سائنس -

اعتراض : اکثر مومنین ان آیات کو استعمال کر کے بگ بینگ کو قران سے ثابت کرنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں، مگر مومنین یہ بھول جاتے ہیں کہ زمین کو وجود میں آنے کے سائنسی شواہد بالکل مختلف ہیں، بگ بینگ آج سے 13.7 ارب سال پہلے ہوا، جبکہ زمین 4.6 ارب سال پہلے…

قرآن میں شہاب ثاقب کا تذکرہ اور اسکی حقیقت

مذہب فلسفہ اور سائنس -

شہاب ثاقب عربی زبان کا لفظ ہے شہاب کا معنیٰ ہے دہکتا ہوا شعلہ اور ثاقب کا معنیٰ ہے سوراخ کرنے والا ۔ہمارے نظام شمسی میں مریخ اور مشتری کے مدار کے درمیان چکر لگانے والے خلائی پتھر جنہیں ’’ سیارچے ‘‘ (Asteroids) کہا جاتا ہے بعض اوقات زمین کی طرٖف آجاتے ہیں اور زمین…

سورج چاند گرہن اور ملحدین

مذہب فلسفہ اور سائنس -

ملاحدہ کااعتراض: اسلام خوف کا مذہب ہے۔ مثلاً سورج اور چاند گرہن عام واقعات ہیں جن کی سائنس نے قابلِ فہم توجیہ پیش کی ہے جس کو پانچ سال کا بچہ بھی سمجھ سکتا ہے۔ سائنس نہ ہونے کی وجہ سے نبی اکرم ﷺ مسلمانوں کو ڈرا کر سورج اور چاند گرہن کی نماز پڑھانے…

کائنات محدود یا لامحدود؟

مذہب فلسفہ اور سائنس -

کائنات کے محدود یا لامحدود ہونے کا مسئلہ بہت ہی عجیب ہے۔ سب سے پہلے لامحدود ہونے کا مطلب سمجھ لیا جائے تو بات کرنے میں آسانی ہو۔ جب ہم کہتے ہیں کہ کائنات لامحدود ہے، یا محدود ہے تو سوال ہوگا کہ اسے محدود یا لامحدود کن معانی میں کہا جارہا ہے؟ دو باتیں…

پھول کی فریاد

افتخار اجمل بھوپال -

یہ نظم میں نے ساتویں جماعت (1949ء تا 1950ء)کی مرقع ادب میں پڑھی تھی

کیا خطا میری تھی ظالم تو نے کیوں توڑا مجھے
کیوں نہ میری عمر ہی تک شاخ پہ چھوڑا مجھے
جانتا گر اس ہنسی کے دردناک انجام کو
میں ہوا کے گُگُدانے سے نہ ہنستا نام کو
خورشید کہتا ہے کہ میری کرنوں کی محنت گئی
مہ کو غم ہے کہ میری دی ہوئی سب رنگت گئی

سری لنکا میں ہلاکتوں کی تعداد 300 ہو گئی، 24 ملزمان گرفتار

اقبال جہانگیر (آواز پاکستان) -

سری لنکا میں ہلاکتوں کی تعداد 300 ہو گئی، 24 ملزمان گرفتار سری لنکا میں مسیحی تہوار ایسٹر کے موقع پر گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر ہونے والے  بم دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 300 ہوگئی ہے، سیکیورٹی اداروں کو ان دھماکوں میں انٹرنیشنل نیٹ ورک کے ملوث ہونے کے شواہد ملے ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سری لنکا میں گزشتہ روز ہونے والے 8 بم دھماکوں میں ہلاکتوں کی تعداد 300 ہوگئی ہے اور 500 افراد زخمی ہیں۔ متعدد زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ کا خدشہ ہے۔ یہ بم دھماکے 3 چرچوں اور 3 ہوٹلوں پر کیے گئے جب کہ ایک ایک دھماکا دوسرے مقامات پر ہوئے۔

ملک میں ایک بار پھر کرفیو نافذ کردیا ہے جو رات 8 بجے تک جاری رہے گا، وزیر صحت اور کابینہ کے ترجمان نے بم حملوں میں ’انٹرنیشنل نیٹ ورک‘ کے ملوث ہونے کے شواہد ملنے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام خود کش بمبار سری لنکا کے شہری ہی تھے۔ تاہم ان کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔ گزشتہ روز پہلے دارالحکومت کولمبو سمیت 2 شہروں نیگمبو، بٹّی کالؤا کے تین گرجا گھروں میں دھماکے ہوئے۔ اس کے بعد کولمبو میں تین ہوٹلوں دی شینگریلا، سینامن گرانڈ اور کنگز بری کو بم حملوں کا نشانہ بنایا گيا۔ https://www.express.pk/story/1641421/10/ مذہب و اخلاق کی رو سے انسانی جان کو ہمیشہ حرمت حاصل رہی ہے۔ اللہ تعالیٰ نے اپنی کتاب میں پوری صراحت کے ساتھ حکم دیا ہے کہ کوئی شخص کسی کو قتل نہ کرے، قتل شرک کے بعد سب سے بڑا جرم ہے۔ شرک کے بعد سنگین ترین جرم ناحق قتل ہے، چنانچہ کسی کو قتل کرنا باعثِ خسارہ، اور دائمی جہنمی بننے کا سبب ہے۔ کسی کو قتل کرنا انسانیت کی تذلیل، قاتل و مقتول کیلئے ظلم اور زمین میں فساد کا باعث ہے، اس سے معاشرے میں خوف و ہراس پھیلتا ہے، اور آبادیوں کی آبادیاں تباہ، اور زندگی اجیرن ہو جاتی ہے، قتل کی وجہ سے قاتل کے ساتھ ساتھ معاشرے کو بھی درد ناک عذاب سے دو چار ہونا پڑتا ہے، قتل کے باعث مقتول کے ورثاء اور دیگر افراد کے حقوق تلف ہو جاتے ہیں، اسی کی وجہ سے امن و امان داؤ پر لگ جاتا ہے۔قتل بدترین جرم، اور قاتل بد ترین مجرم ہے۔عبادت گاہوں پر حملے غیر اسلامی اور غیر اخلاقی ہیں۔

Pages

Subscribe to اردو بلاگ ایگریگیٹر aggregator