بلاگستان

تاریخ اشاعت: جمعرات, November 3, 2011 - 12:18
پرسوں "بولتا پاکستان" کے فیسبک صفحے پر ایک سوال دیکھا۔سوال تھا، "لندن کی عدالت نے پاکستانی کرکٹرز کو سزا دے دی۔ پاکستان کو کیا کرنا چاہیے؟"نیچے کیے گئے تبصروں کے درمیان کچھ عجیب و غریب سے تبصرے دیکھنے کو ملے۔کسی کا کہنا ہے کہ تاحیات پابندی لگا دی جائے۔ کسی نے کہا کہ تاحیات پابندی کے ساتھ پانچ کروڑ جرمانہ بھی ہونا چاہیے۔ جبکہ کوئی اتنے کم جرمانے پر خوش نہیں اور چاہتا ہے کہ ان کے تمام اثاثے ہی منجمد کر دیے جائیں۔ کوئی چاہتا ہے کہ ان کی پاکستانی قومیت ہی ختم کر دی جائے جبکہ کسی کو یہ اعتراض ہے کہ پاکستان کو اتنا بدنام کرنے پر...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, November 2, 2011 - 19:16
جو پستی کی جانب اترتا ہوں میں بیاں تیری تسبیح کرتا ہوں میں                     بلندی  پہ جس وقت چڑھتا ہوں میں                     تو اللہ اکبر ہی پڑھتاہوں میں تو الحمدللہ کا رہتا ہے ورد  جو ہموار راہوں پہ چلتا ہوں میں                     تعجب کی جب بھی کوئی بات ہو                      تو حیرت سے تسبیح پڑھتا [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, November 1, 2011 - 08:36


طب یونانی قومی ورثہ ہے ‘جس کا ہرممکن تحفظ کیا جائے گا:حکیم قاضی ایم اے خالد
ڈینگی کی آگہی کے حوالے سے اطبائے کرام اور میڈیانے بلامعاوضہ اہم کردار ادا کیا’کونسل آف ہربل فزیشنز

لاہور یکم نومبر:مرکزی سیکرٹری جنرل کونسل آف ہربل فزیشنز پاکستان اور یونانی میڈیکل آفیسر حکیم قاضی ایم اے خالد نے ایک پر ہجوم پریس کانفرنس میںملکی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, October 31, 2011 - 18:10


ایماں کو بسا لو دل میں کچھ غور تم کرو
نبی کا جو طریقہ ہے   اسی پر   تم  چلو
جو ہٹ کر دکھے اس سے فورا پرے کرو
چھوڑو فساد کو      بس تم   الله الله   کرو

قرآن کو سر پہ رکھو دجل و فریب سے تم بچو
راستہ جو  اصحاب    کا ہے    اسی پر تم چلو
آسرے اپنے سارے     رحمان پر   تم رکھو
چھوڑو فساد کو            بس تم الله الله کرو

ادھر ادھر دیکھو گے سرے سے بھٹک جاؤگے
گرو گے اس طرح     پھر الٹے لٹک...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, October 31, 2011 - 10:09
انسان اپنی سوچ کے دھارے میں بہنے اور بہانے کے عمل سے دوچار رہتا ہے ۔ کبھی خوشی سمیٹتا تو کبھی غموں کے جام چھلکاتا ہے ۔ جینے کے نت نئے انداز لبادے کی طرح اوڑھے جاتے ہیں ۔ مگر جینا کفن کی طرح ایک ہی لبادے کا محتاج رہتا ہے ۔ برداشت دکھ جھیلنے اور درد سہنے میں طاقت کی فراہمی کا بندوبست کرتی ہے ۔
نقصان عدم اعتماد پیدا کرتا اور بھروسہ کو پامال کرتا ہے ۔ فائدہ تکبر کا مادہ پیدا کرتا ہے ۔ مقدر کے سمندر میں سکندر کی ناؤ بہاتا ہے ۔ انسان سوچتا وہی ہے جو پانا چاہتا ہے ۔ ہوتا وہی ہے جو تقدیر میں لکھا ہو ۔
زندگی میں خوشیاں تلاش کی جاتی ہیں ۔ جبکہ خوشی موقع کی تلاش میں رہتی ہے ۔ اور مواقع حسد ،...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, October 30, 2011 - 13:57
مصنف: آہنگ ادب
لفظ ”بادشاہ“ کے ساتھ میرا تعلق تقریباً اتنا ہی پرانا ہے جتنی کہ میری عمر ہے۔ بچپن میں پہلی دفعہ ماں جی کو یہ دعا دیتے سنا تھا کہ ”بیٹا! اللہ میاں تجھے بادشاہ بنا دے“ اُسی دن سے میرے ننھے سے ذہن میں دو باتیں بیٹھ گئیں ۔ ایک یہ کہ اللہ میاں کوئی [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, October 29, 2011 - 21:19
کچھ لوگ دوسروں کو یہ کہہ کردوسری شادی سے روکتے ہیں کہ پہلی بیوی کے اخراجات پورے نہیں ہورہے اور تم دوسری کی بات کرتے ہو۔ دراصل آج کل کے زمانے میں جو مزید پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں Filed under: گل دستہ (کاپی پیسٹ) Tagged: پہلی بیوی, دوسری شادی, شادیاں
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, October 29, 2011 - 11:50
سرسید احمد خان  ہمارے ملک کے بہت سے لوگوں کے لیےانتہائی محترم ہیں جبکہ کچھ کے نزدیک وہ دنیا کی ایک مخصوص "برادری" کے متحرک فرد تھے،  خود  ہمارے سامنے سکولوں کالجوں میں سرسید احمدخان کو ایک عظیم قائدکے طور پر پیش کیا گیا، آج بھی  انکی تصویر ہر سکول کالج میں لٹکی نظر آتی ہے،   جسے ہماری قوم کا ہر بچہ آتے جاتے دیکھتا ہے اور صبح شام ان کی عظمت کا قائل ہوتا جاتا ہے ۔کئی دفعہ ان کی معتبر شخصیت اور تاریخی کارناموں  پر لکھنے کا ارادہ کیا  لیکن  توفیق نہ ہوسکی ۔ چند دن پہلے  خان صاحب کی ایک کتاب پڑھنے کو ملی جس میں خود خان صاحب نے اپنا نظریہ، اپنے خیالات و...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, October 27, 2011 - 23:05
زبان یار من ترکی و من ترکی نمی دانم
کبھی یہ محاورہ/کہاوت/ مصرع سنا تھا۔ زبان ثقافت، زبان کلچر، زبان زندگی جینے کا ڈھنگ، زبان  نسلوں کی وراثت کی امین۔ زبان نہ رہے تو  نسلوں کی نسلیں بدل جاتی ہیں۔ اور یہی ہو رہا ہے۔ پنجاب میں، خیبر پختونخواہ میں، سندھ میں، بلوچستان میں یہی  ہور ہا ہے۔ مجھے دوسرے صوبوں کے شہری علاقوں کا نہیں پتا۔ لیکن مجھے اتنا پتا ہے کہ میرے صوبے پنجاب کے، سوہنے پنجاب کے شہری علاقوں لاہور، فیصل آباد، گوجرانوالہ، گجرات ، شیخوپورہ، ملتان سے میری ماں بولی مر رہی ہے۔ پنجاب سے پنجابی مر رہی  ہے۔ اور اسے مارنے والے پنجابی ہیں۔ آٹھ کروڑ پنجابی، جو مل کر اپنی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, October 27, 2011 - 12:48
آج کل لاہور میں جلسے جلسوں اورریلیوں کا زور ہے۔ جسے دیکھو وہ اپنی سیاست چمکا رہا ہے۔27 اکتوبر کومعروف گلوکار ابرارالحق کی "پاکستان بچاؤ ریلی" ناصرباغ میں ہونی ہے۔ 28 اکتوبرکون لیگ کی نواز شریف کی زیر قیادت " زرداری ہٹاؤ مُلک بچاؤ "ریلی ناصر باغ سے بھاٹی گیٹ پرمنعقد ہوگی اور30اکتوبرکو تحریکِ انصاف کا عمران خان کی قیادت میں مینارپاکستان پر"پاکستان بچاؤ"جلسہ ہونا ہے۔
 میڈیا اطلاعات کے مطابق دونوں جماعتیں اور ابرارالحق بڑ ی گرمجوشی سےتیاریوںمیں مصروف ہیں۔ لاہور کی اہم شاہراوں پر دونوں جماعتوں اور ابرارالحقکے بڑے بڑے پوسٹرز آویزاں ہوچُکے ہیں۔ دیکھتے ہیں یہ دنگل کون...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, October 26, 2011 - 13:12

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, October 25, 2011 - 16:30
 چھٹیوں کے شوقین لوگوں کیلئےبطورخاص ایک نظم
بڑوں کو اور چھوٹوں کو انہیں صدمات نے مارا
مجھے دفتر انہیں کالج کی تعطیلات نے مارا

کبھی سردی کی چھُٹی ہے، کبھی گرمی کی چھٹی ہے
یہ سب اس کے علاوہ ہیں جو ہٹ دھرمی کی چھٹی ہے

کبھی تعطیل کھانے کی، کبھی تعطیل پینے کی
پڑھائی دو مہینے، چھٹیاں ہیں دس مہینے کی

ابھی پرسوں تو رنگینیئ حالت کی چھٹی
پھر اُس کے بعد پورے ماہ ہے برسات کی چھٹی

کبھی اسکول میں اُستاد کے سردرد کی چھٹی
ہوائے سرد چل جائے تو پھر ہر فرد کی چھٹی

کبھی افسر کو تھوڑا بخار...
زمرہ: اردو بلاگ

”خواب اور تجربے“ ۔۔ از شاہد حمید

تاریخ اشاعت: منگل, October 25, 2011 - 11:44
مصنف: محمود مغل
معاملہ ہے جو درپیش‘ہے وہ پیشِ نظرکوئی مثال نہیں دوسری مگر ہے بھی یہ وہ زمانہ ہے کہ اپنے احوالِ ناگفتہ بہ پر شکوہ سنج زمانہ بھر ہے۔ زمانہ معاشرے یا معاشروں کے اجتماعی وجودوں سے متشکل ہوتا ہے۔ آسانی سے یہ بات اِس طرح بھی قابلِ فہم کہی جا سکتی ہے کہ گویا ہر معاشرے کا ہر فرد شکوہ سنجی کی تصویرِ فردِ عمل بنا ہُوا ہے۔ یہ زمانہ کس کا ہے، یہ ہمارا زمانہ ہے یعنی گذشتہ زمانوں کا جدید تر زمانہ موجودہ زمانہمحمد محمود مغلnoreply@blogger.com0
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, October 23, 2011 - 10:37
آج کل میڈیا عمران خان کو بہت پروموٹ کر رہا ہے اور خود عمران خان نے جب سے ایک سال قبل دھرنے دیئے تھے خود کو آنے والے وقت کا وزیر اعظم سمجھ رہے ہیں۔ کبھی کبھی تو وہ مثال بھی دیتے ہیں کہ اگر وہ وزیر اعظم ہوتے تو ایسا کرتے ویسا کرتے ایک ہاتھ سے وہ صدر زرداری کو للکارتے ہیں تو دوسرے ہاتھ سے وہ نوا ز شریف کی خبر لیتے ہیں۔ ایسی چٹ پٹی خبروں کو میڈیا والے خوب مزے لے کر اچھالتے ہیں تو عمران خان اور اُن کی پارٹی کے لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ واقعی اگر وہ وزیر اعظم بن گئے
تو وہ دونوں پہلوانوں کو ایک ہی وار میں چت کر لیں گے۔ حالانکہ حالیہ ضمنی انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کے ایک...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, October 22, 2011 - 20:19
مصنف: محمد اسد

(گزشتہ سے پیوستہ)

اگلی صبح تقریباً آٹھ بجے کیفے میں ہلکا پھلکا ناشتہ کیا اور پھر ورکشاپ ہال کی راہ لی۔ چند لوگ پہلے ہی وہاں موجود تھے اور کچھ بعد میں وہاں پہنچے جن میں نئے چہرے بھی نظر آئے۔ منظور علی اور اشرف الدین کی جوڑی، جن سے ہم گزشتہ رات ملاقات کر چکے تھے، 9 بجے کے بعد پہنچی۔ وجہ معلوم کی تو اشرف الدین نے بتایا کہ منظور علی کو کل رات بخار ہوگیا تھا۔ یہ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, October 21, 2011 - 22:28

بسم اللہ الرحمن الرحیم

جس طرح کسی بھی زبان میں الفاظ اور جملے حروف تہجی سے ملکر بنتے ہیں۔ اسی طرح الیکٹرونیات میں بڑے بڑےسرکٹ چاہے وہ اینا لاگ سسٹم ہوں یا پیچیدہ ڈیجیٹل سسٹم الیکٹرونیات کے حروف تہجی سے ملکر بنتے ہیں۔
اور وہ حروف تہجی ہیں رزسٹنس (Resistance)، کیپسٹینس (Capacitance)، اور انڈکٹنس (Inductance)

 

رزسٹنس (Resistance): کرنٹ کے بہاؤ میں مزاحمت۔ اور کرنٹ الیکٹرونز کے بہاؤ کو کہتے ہیں۔ آپ ایسے تصور کرلیں جب آپ ذیادہ بھیڑ والی جگہ پر چلوگے تو ذیادہ رکاوٹ ہوگی اور کم بھیڑ والی جگہ پر کم رکاوٹ محسوس ہوگی یہی حال بے چارے الیکٹرونز کا ہے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, October 21, 2011 - 17:49
کہندے نیں یار دی گلی دا کتا وی مجنوں نوں یار وانگوں پیارا سی۔ لوگ اونہوں کملا تے سودائی کہندے سن پر مجنوں یار دی گلے دے کتے نوں وی اونج ای چم کے گل نال لاندا سی۔ عاشق تے کتے وچ بوہت گلاں اکوں جہیاں نیں۔ عاشق نوں کتے وانگوں وفادار ہونا پیندا۔ یار دے قدماں وچ لوٹنیاں لانیاں پیندیاں۔ یار دی بری بھلی سننی پیندی تے چپ رہنا پیندا۔ یار جوٹھے منہ بلاوے تے جی آکھاں کہہ کے فٹ حاضر ہوناں پیندا،۔ پانویں یار اگوں عاشق دی کتیاں والی کرے۔ پر عشق کیتا تے فیر بندہ کی تے کتا کی۔ جے بندہ رہنا ہندا سی تے عشق کردا؟ یار نوں بے نیازی سجدی اے تے عاشق نوں فرمانبرداری۔ جداں کتا ہر ویلے مالک دے اگے پچھے پوچھ ہلاندا،...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, October 20, 2011 - 15:13
مصنف: آہنگ ادب
دھنک ملے تو نگاہوں میں قید رنگ کریں رم آج رات چلو چاندنی کے سنگ کریں یہ آئینہ سا میرا دل ہے اس میں سجتی رہو پھر اس کے بعد تمنا نئی امنگ کریں بدن تو مل گئے روحوں کی تشنگی بھی مٹے سو اختیار چلو آج کوئی ڈھنگ کریں نہیں ہیں فرصتیں آلامِ روزگار [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, October 17, 2011 - 20:19
مصنف: محمد اسد

صحافت دنیا میں ایک مقدس پیشہ سمجھا جاتا ہے جس سے وابستہ افراد پر ایک جانب لوگوں کو مکمل سچائی سے باخبر رکھنے کی بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے تو دوسری جانب پیشہ ورانہ فرائض کی انجام دہی میں کئی طرح کے خطرات کا بھی سامنا ہوتا ہے۔ ایسے میں انٹرنیٹ بالخصوص سوشل میڈیا (ٹویٹر، فیس بک اور ویڈیو و تحریری بلاگنگ) صحافت میں کس قدر کارآمد ثابت ہوسکتا ہے اس حوالے سے پاکستان پریس فاؤنڈیشن (پی پی ایف) کی جانب سے ذرائع ابلاغ کے صحافیوں کے لیے تین روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں مجھے بھی شرکت کا موقع ملا۔

گو کہ میں نے اس...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, October 16, 2011 - 13:24
ڈاکٹر محمد حمید اللہ (پیدائش: [حیدرآباد دکن] 9 فروری 1908ء ، انتقال : [امریکہ] 17 دسمبر 2002ء) معروف محدث، فقیہ، محقق، قانون دان اور اسلامی دانشور تھے اور بین الاقوامی قوانین کے ماہر سمجھے جاتے تھے۔ تاریخ حدیث پر اعلٰی تحقیق، فرانسیسی میں ترجمہ قرآن اور مغرب کے قلب میں ترویج اسلام کا اہم فریضہ نبھانے پر آپ کو عالمگیر شہرت ملی۔
حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کے شاگرد حضرت ہمام ابن منبہ کے صحیفے کی دریافت اور اس کی تدوین کا کام ڈاکٹر حمید اللہ کا بہت بڑا کارنامہ تسلیم کیا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, October 14, 2011 - 02:26
ابھی کچھ دن پہلے ایمیل سے کسی کا ایک سوال یوں موصول ہوا کہ :
کیا امر بالمعروف و نھی عن المنکر کا فریضہ ہر مسلمان پر لاگو ہوتا ہے؟ اور اگر ہاں تو اس کے شرعی آداب و شرائط کیا ہیں؟

اس موضوع پر ہر چند کہ ایک طویل عرصہ سے راقم الحروف نے مراسلات تحریر کئے ہیں۔ جن میں سے چند ایک یہ ہیں :

نیکی کی تلقین اور برائی سے روکنے کا فرض
بےشک یہ بات درست نہیں کہ خود سراسر بےعمل ہو کر دوسروں کو نصیحتیں کرتے جائیں۔ لیکن اس کا یہ مطلب بھی نہیں کہ "امر بالمعروف و نھی عن المنکر" کا فریضہ اسلیے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, October 13, 2011 - 11:13
گو سراپا کيف عشرت ہے شراب زندگي
اشک بھي رکھتا ہے دامن ميں سحاب زندگي
موج غم پر رقص کرتا ہے حباب زندگي
ہے 'الم' کا سورہ بھي جزو کتاب زندگي

ايک بھي پتي اگر کم ہو تو وہ گل ہي نہيں
جو خزاں ناديدہ ہو بلبل، وہ بلبل ہي نہيں

آرزو کے خون سے رنگيں ہے دل کي داستاں
نغمہ انسانيت کامل نہيں غير از فغاں
ديدہ بينا ميں داغ غم چراغ سينہ ہے
روح کو سامان زينت آہ کا آئينہ ہے

حادثات غم سے ہے انساں کي فطرت کو کمال
غازہ ہے آئينہء دل کے ليے گرد ملال

غم جواني کو جگا ديتا ہے لطف خواب سے
ساز يہ بيدار ہوتا ہے اسي مضراب سے
طائر دل...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, October 11, 2011 - 21:34
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, October 11, 2011 - 17:06
المیہ ہے یہ تو ۔۔۔۔۔۔ اس دور کا سب سے بڑا المیہ جس میں، میں خود بھرپور طریقے سے مبتلا ہوں وہ یہ ہے کہ ۔۔۔۔۔۔۔۔ صحیح کو غلط اور غلط کو صحیح سمجھنا ۔۔۔

آپ کسی بھی صحیح بات کو غلط سمجھیں گے تو اور غلط کو صحیح تو پھر کسی بھی انسان کا اور اس معاشرے کا ٹھیک ہونا نا ممکن ہی ہے ۔

بات یہ ہے کہ کل مجھے میرے ایک جانے والے نے کنیڈا سے فون کیا اور کہا کہ تم ایسا کرو یہاں آجاو بڑا سکون ہے بہت آزادی ہے بہت ڈویلویپمنٹ ہے ترقی کی راہیں بہت ہیں ۔۔ میں نے ان سے کہا کے یار یہ سب تو یہاں بھی بہت ہے ۔۔۔

تو مجھ سے کہا گیا ۔۔۔۔ ارے یار کہاں پھنسے ہوئے ہو یہ بھی کوئی آزادی ہے مرد...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, October 11, 2011 - 15:49



How NOTto Invite and Welcome Friends to your HomeM. Khalil ur Rahmanmailto:khalil.rahman@live.com
Thanks mainly to Facebook, LinkedIn, Twitter and other socialmedia; the world is fast turning into, quite literally, a global village. As a result of this epidemic, you end up with a lot more friends and acquaintances nowadays than you could have ever imagined in the times of Dale Carnegie, who took great pains to write How to Win Friends and Influence People.
Should these friends decide on the frightful...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, October 10, 2011 - 13:20
مصنف: ابو موسیٰ


میرے کانوں میں پہلی بار اسکی آواز اس وقت پڑی جب میں لڑکپن سے نو جوانی کی دہلیز پر قدم رکھ رہا تھا ، بڑے بھائی نے کیسٹ میں اپنی پسند کے نغمے بھرواۓ ، پر مجھ کو تو اسکی کاغذ کی کشتی ہی اپنے سنگ لے چلی . گو کہ ابھی بچپن کے دن دور نا گزرے تھے پر کانوں سے دل تک جاتی اسکی آواز نے بچپن میں ہی بچپن کی ان چھوٹی چھوٹی چیزوں کو انمول کردیا .. یہ بتا دیا کہ ابھی بھی وقت ہے کرلو قدر ان کی …

جوانی میں قدم رکھا تو اکھڑ دماغ کو دنیاوی خوہشات کی اوقات یاد دلانے کے لیے غالب کی “ہزاروں خوائشیں” کی نصیحت سنا ڈالی.. اسکے بعد ایسا سلسلہ ہوا کہ سینکڑوں...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, October 4, 2011 - 16:03


آپ میں سے تقریبا ہر ایک نےزندگی میں کم ازکم ایک بار MP3سونگ فری سائیٹ سے ڈاؤن لوڈ کیا ہوگا۔ کوئی چیز مفت مل جانا بڑی بات ہےتاہم اگر وہ کسی اور کو اُسکی محنت اور کوشش کو نقصان پہنچائے بغیر ہو ۔کبھی آپ نے سوچا کہ مفت گانے، فلمیں، گیمز اور سافٹ وئیرزڈاؤن لوڈکرنے سےانکو بنانے والوں کی رائلٹی کو نقصان پہنچتاہے۔...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, September 30, 2011 - 21:56
مصنف: ابو موسیٰ


گزشتہ سے پوستہ ….

متحرم دوست (خاور) ، زمانے کے بدلتے انداز اور قومی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے اسسی کی دہائی میں ملک عزیز کے عظیم سائنسدانوں نے جنگی اور بھنگی اطوار کو مزید فعال اور کامیاب بنانے کے لیے ان کو نئی شکل دینے کے ساتھ ، ساتھ اشتہاری مہم کو بھی کچھ اس نئے انداز سے بدلا کہ آج تین دہایوں گزرنے کے باوجود ، یہ نئے اطوار عطیہ ، عہد حاضر تک کامیابی کے زینے پھلانگتے جا رہے ہیں … قوم میں خون کے فشار میں توازن برقرار رکھنے کے لیے اس کو دو عدد نئی دریافتوں سے متعارف کروایا گیا

١ – ہولی
٢ – گولی

ہولی یعنی مقدس...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, September 30, 2011 - 14:35
ہوا  یوں کہ   ایک شخص  سفر کے دوران ایک راستہ سے گزر رہا تھا ،  کہ اچانک اس نے ایک  آواز سنی ۔  آواز آسمان میں موجود بادلوں  سے مخاطب تھی ۔ اور بادلوں کو حکم دیا جارہا تھا کہ فلاں آدمی کے باغ کو پانی کی ضرورت ہے لھذا   اسکے باغ  پر جا کر [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, September 29, 2011 - 23:11
یہ ٹیکسی ڈرائیورصاحب دراصل چینی تھے اور نام ولیئم تھا، ہم نے ان سے پیٹروناس ٹاور اور مسجد سلطان صلاح الدین عبدالعزیز دیکھنے کی خصوصی فرمائش کی۔ انھوں نے موخر الذکر پر معذرت کر لی کہ وہ ہمارے راستے سے قدرے ہٹ کر تھی مگر شہر دکھانے کا وعدہ کیا۔ ملائیشیا بھی ہماری طرح فرنگی آقا رکھتا ہے اور اس کا یومِ آزادی ۳۱اگست کومنایا جاتا ہے اس وجہ سے شہر بھر میں ہمیں وہاں کے قومی پرچموں کی بہار دکھائی دی۔ ہم ایم۔اے۔امینhttp://www.blogger.com/profile/04425754577499948453noreply@blogger.com2http://bayaadesydney....
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 25, 2011 - 21:38
مصنف: دریچہ
میں کب سے گوش بر آواز ہوں پکارو بھی۔ تصور خانم




میں کب سے گوش بر آواز ہوں پکارو بھی
زمین پر یہ ستارے کبھی اتارو بھی

میری غیور امنگو! شباب فانی ہے
غرورِ عشق کا دیرینہ کھیل ہارو بھی

میرے خطوط پہ جمنے لگی ہے گردِ حیات
اُداس نقش گرو اب مجھے نکھارو بھی

بھٹک رہا ہے دھندلکوں میں کاروانِ حیات
بس اب خدا کے لئے کاکُلیں سنوارو بھی
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 25, 2011 - 17:10
نیٹ پر کسی جگہ ایک دینی علمی مضمون پڑھ رہا تھا ، اچانک خیال آیا کہ کچھ الفاظ و فقروں کے الٹ پھیر سے ایک اور نقطہ نظر کو واضح کیا جا سکتا ہے۔ اعجاز الدین عمری صاحب کے شکریے کے ساتھ راقم کی طرف سے تبدیل شدہ عبارت ملاحظہ فرمائیں ۔۔۔

فکر و نظر اپنے بطن میں انمول جواہر رکھتے ہیں مگر مسئلہ یہی ہے کہ ہر کوئی اس سے غافل ہے! شاید کسی نے سچ کہا ہو کہ ہر نادان کو یہاں دانائی کا غرور ہے ، ہر بےخبر کو اپنی بیداری کا دعویٰ ہے۔
چند مخصوص قسم کی کتابیں اپنے محدود ذوق کے سہارے کیا پڑھ ڈالیں ، بندہ سمجھتا ہے کہ وہ علم میں ماہر ہو گیا ، علامہ بن گیا ، علماء و فضلاء سے کچھ اتنا آگے بڑھ گیا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, September 23, 2011 - 14:11
مصنف: ابو موسیٰ


زندگی میں بہت سے واقعات ایسے ہو جاتے ہیں ہیں کہ بندہ چپ سادھنے اور صبر کرنے میں بہتری جانتا ہے یا جسے پنجابی میں کہتے ہیں نا “در وٹ جانا” میں آفیت سمجھتا ہے . سو ایک ایسی ہی بات پر ہم نے بھی سادھ لی چپ، پر آخر کب تک ؟ یہ غم اب زیادہ سمنبھالا نہی جا رہا کلیجہ پھٹنے کو ہے کے اگر دل کی بات باہر نا آئی! ضمیر بار بار ملامت کرتا ہے کہ ایسی بےغیرتی کیوں ؟ ہوا کچھ یوں تھا کہ عرصہ پہلے میرے ایک ساتھی بلاگر خاور کھوکر نے “خون کا عطیہ کریں” کے نام سے تحریر لکھی ، اور اس میں فشارخون کو برابر رکھنے کے لئے جاپانیوں کے رواج کو تو بہت اعلی مقام پر پہنچا دیا...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, September 21, 2011 - 22:43
صبح کا وقت تھا ۔ میں گھر میں تھا کہ ایک بچہ اندر آگیا اور  کہنے لگا کہ باہر آپکے دو دوست آپکو بلا  رہے ہیں۔میں نے اسکو کہا کہ ٹھیک ہے میں باہر آرہا ہوں ۔ چونکہ میں کہیںجانے والا تھا ، اسی لئے میں تھوڑی دیر بعد نکلا۔ باہر جاکر  میں  ان دونوں [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, September 21, 2011 - 22:21
امسال رمضان کے آخری عشرہ میں ہم وطن کے لئے عازمِ سفر ہوئے تو ہوائی سفر کی پیشگی ٹکٹ حاصل کرلی۔ گذشتہ دو برسوں سے ہم سڈنی میں ہی مقیم تھے اور یہیں اس بلاگ کی بنیاد بھی رکھی تھی۔ اب کی بار ہمارا یہاں سے واپس جانا ایسا ہی تھا  کہ جیسے کوئی جہاں سے اٹھتا ہے یعنی کہ دو سال کے وقفہ کے بعد وطنِ عزیز میں زندگی کے معمولات وہیں سے اختیار کرنا تھے یہاں موقوف ہوئے تھے۔ اس لئے ہماری خوشی اس قیدی جیسی تھی جو ایم۔اے۔امینhttp://www.blogger.com/profile/04425754577499948453noreply@blogger.com3http://bayaadesydney....
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, September 21, 2011 - 06:59
Hamd By: MUHAMMAD ASADULLAH Hamdo Sana Usi Ki Jis Ne Jahan Banaya Mitti mien Jan Dali , Aarame Jan Banaya Ghunche Khilaye Us Ne Pholon KoTazgi Di Izhare Iltija Ko Hrfo Bayan Banaya. Pairon Tale Hamare Mamta Bhari Zameen Di Mushfiq Sa Apne Sar Par Ik Aasman Banaya Raheen Usi Ki Sanat , Samtein Usi Ki ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, September 20, 2011 - 06:48
مولانا ابوالکلام آزاد ہا ئی اسکول و جو نیئر کالج ،ناگپورمیںقومی گیتو ں کا مقابلہناگپور :اردو کے مشہور شاعروں کے قومی گیت طلباء نے اپنی مترنم آ وازمیں پیش کئے ،میں تمام طلبا وطالبات کو مشورہ دوں گا کہ وہ دوسرے شاعروں کی تخلیقات کا مطالعہ کر نے کے ساتھ ہی خود بھی ایسی نظمیں لکھیں اور اپنے وطن کے بارے میں اپنے خیالات اور حب الوطنی کے جذبات کا اظہار کریں، اس سے بھی زیادہ اہم یہ ہے کہ اپنے ملک کی ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, September 19, 2011 - 22:04
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, September 19, 2011 - 13:08




پپیتے کے پتوں کا تازہ رس زیادہ موثر ہے’قہوہ یا جوشاندہ نہ بنائیں
ڈینگی مچھر سے بچاؤ کیلئے پپیتہ کا پودا قدرتی ڈھال ہے’گھر گھر لگایا جائے
طب یونانی’ ایلو پیتھک سے زیادہ سائنٹیفک ہے:کونسل آف ہربل فزیشنز

لاہور:ڈینگی بخار کے کامیاب ترین علاج کیلئے پپیتے کے پتوں پر دنیا کے بیشتر ممالک سری لنکا،ملائشیا، تھائی لینڈ، فلپائن، بھارت اور وطن عزیز میں متعددسائنسی تحقیقات جاری ہیں حال ہی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 18, 2011 - 14:15
جب بخار کی شدت میں دو تین ڈگری کمی آتی تو تیمار داری کے لئے آنے والوں سے ہنسی مذاق میں موڈ خوش گوار کر لیتا ۔ جیسے ہی دوا کے اثرات زائل ہونا شروع ہوتے تو ٹمپریچر 105 سینٹی گریڈ تک پہنچتے پہنچتے مجھے نڈھال کر دیتا ۔ سر ایک طرف ڈھلک جاتا ۔ کھانا پینا تو پہلے ہی دواؤں کی کڑواہٹ کا شکار تھا ۔ کمزوری و نقاہت سے بدن حاجت کے لئے بھی سہارے کا محتاج ہو چکا تھا ۔ نرس گلوکوز کی بوتل میں ہی وقفے وقفے سےگھونٹ گھونٹ ٹیکے ٹکا رہی تھی ۔ خواتین تیمار داری کے ساتھ ساتھ باتیں کم اور کچھ پڑھتے ہوئے ہاتھ کے انگوٹھے سے انگلیوں کو جگا رہی تھی ۔ اور میں جاگتے ہوئے بھی مدہوشی کی کیفیت میں مبتلا تھا ۔
کسی بھی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, September 17, 2011 - 16:34
وہ میرے دوست کے محلے میں رہتی ہے ۔اسکا خاوند پشاور یونیورسٹی میں پروفیسر ہے۔اکثر میرے سے ملتا رہتا ہے۔اور گپ شپ ہوتی رہتی ہے۔محکمہ  بہبود آبادی کے مشورے کے مطابق اسکے تین بچے ہیں   جن میں سے ایک بچہ اور دو بچیاں ہیں۔ اسکا یہ بچہ آج کل شائد ایم بی اے کر [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, September 16, 2011 - 11:18
مصنف: ابو موسیٰ


گھر میں آرائش کا کام جاری تھا ، گھر کے تمام لوگ اسی سلسلے سے جڑے تھے کہ جانے اسکے من میں کیا آیا اور وہ گھر سے نکل پڑی. فرصت ملنے پر جب گھر والوں کو اسکے کے غائب ہونے کا احساس ہوا تو ورثا کے ساتھ ، ساتھ حکومتی اداروں نے بھی نے اس کو ڈھونڈنے کی لاکھ کوشش کی، قریب کے گھروں میں ڈھونڈا ، ارد گرد کے محلوں ، گلی کوچوں میں دیکھا ، شہر چھان مارا، اعلانات کرواے گے ، پر سب لا حاصل رہا اور بلآخر اسکو لاپتا قرار دے دیا گیا . ورثا تو کچھ عرصہ بعد نا امید ہوکر صبر کر کے بیٹھ گئے پر حکومتی اداروں نے اپنی آنکھیں نا موندیں اور مسلسل ورثا سے رابطے میں رہے کہ انکی ڈھارس بندھی رہے .. اس...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, September 15, 2011 - 20:26
مصنف: عادل بھیا

اِنسانوں کے اِس بازار میں، خالص اِنسان نہایت قلیل ہیں۔ مانتا ہوں یہ انسان نما ضرور مگر انسان نہیں درحقیقت فقط بیوپاری ہیں۔ یہ اُستاد، طالبِعلم، وکیل، ڈاکٹر، انجینئر، ملازمین، مزدور، مذہبی و سیاسی رہنما غرض تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والا ہر اِک فرد اصل میں بیوپاری ہے جس میں میں اور تم بھی شامل ہیں۔ ہاں۔۔۔ تم مانو یا نہ مانو۔۔۔ میں اور تُم بھی بزنس مین ہیں۔ ہماری زندگیوں کا مقصد صرف پیسہ کمانا ہے یہی وجہ ہے کہ میں جب سے انٹرنیٹ پر بلاگنگ کر رہا ہوں، بے شمار افراد نے مجھ سے ایک ہی سوال کیا کہ کیا اِس بلاگنگ سے کوئی آمدنی بھی ہوتی ہے؟ میرا جواب ہمیشہ نفی میں رہا۔ جس پر دوسرا سوال جو میرے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 11, 2011 - 13:46
جب چنگیز خان کی پیدائش ہوئی ہوگی تو اسکے والدین نے ایک جشن منایا ہوگا ۔۔۔۔۔۔۔ اور اگر انکے والدین اور اس جشن میں شریک کسی بھی فرد کو اس بات کا رتی برابر بھی اندازہ ہوتا کہ یہ چنگیز خان جب بڑا ہوگا تو کیا، کیا کارنامے انجام دیگا تو شائد وہ اسکو اسی دن مار دیتے ۔۔۔۔۔۔۔

ہم مسلمانوں میں بھی ایک شخص گذرا ہے حجاج بن یوسف کے نام سے اسکے کارنامے تو کسی سے ڈھکے چھپے نہیں اسکا بھی اگر کسی کو پتہ ہوتا تو وہ بھی مار دیا جاتا ۔۔۔۔۔۔۔ جب کے اسکے خاندان میں تو بڑے بڑے عرب شرفاء شامل تھے اور دین اسلام کے لئے انکی خدمات اور قربانیاں بھی بڑی تھیں ۔۔۔۔۔۔۔

کہنے کا مقصد صرف اتنا ہے کہ جب...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, September 10, 2011 - 18:50

 

کسی جنگل میں ایک بھینسا رہتا تھا۔ جنگل کے جس حصے میں وہ قیام پذیر تھا وہاں گھاس کی کافی قلت تھی۔ وہ چرنے کیلیے جنگل کے دیگر قطعوں میں جانے سے ڈرتا تھا کیوں کہ وہاں دیگر جانوروں کا راج تھا اور وہ اسے ادھر پھٹکنے نہیں دیتے تھے اور اسے مار بھگاتے تھے۔ اس صورتحال کی وجہ سے بھینسا بہت کمزور ہو گیا۔ 

ایک رات بھینسا سویا ہوا تھا کہ اسے خواب میں ایک بزرگ بھینسے کی روح کی زیارت ہوئی۔ انہوں نے اسے حالات تبدیل کرنے کیلیے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, September 9, 2011 - 22:22
Do what you can ,with what you have,where you are By...........................Theodore Roosevelt
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, September 6, 2011 - 08:24
WONDRES ARE MANY AND NOTHING IS MORE WONDRFUL THAN MAN ..........SOPHOCLES
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, September 5, 2011 - 15:09
مصنف: ابو موسیٰ


گاؤں میں بدبودار جوہڑ کی طرف کوئی نہی جاتا تھا کہ ٹہرے پانی کی بدبو لوگوں کی سانس تک کو اکھاڑ دیتی ، جا بجاہ گھومتے پھرتے گندے کیڑوں مکڑوں سے لے کر زہریلے حشرات، لوگوں کے دلوں میں جوہڑ کے لیے مزید نفرت اور دوری کا سامان پیدا کرتے … اپنی دنیا میں مست بستی والوں کو اتنی فرصت کہاں تھی کے بدبودار پانی کا سوچتے، پس بہتر حل یہی نکلا کہ اس بے فیض پانی کے ٹکڑے کو اسکے حال پر چھوڑنا اور خود اس سے دور رہنا ہی بہتر ہے … یونہی سال پر سال بیتتے گئے اور زندگی چلتی رہی کہ اک دن دور سے جوہڑ میں نہایت ہی سفید اور چمکتی شہ دکھائی دی ، فطرت انسانی کے عین مطابق ناپسنددیگی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 4, 2011 - 22:43
مصنف: دریچہ
سب کو بہت بہت عید مبارک۔ میری عید آج ختم ہو رہی ہے کیونکہ آج آخری چھٹی تھی۔ کل سے پھر واپس کام کام اور کام :( ۔۔۔ بلاگ سے بہت دنوں سے رابطہ ٹوٹا ہوا ہے۔ حالانکہ اتنا کچھ ہے بولنے اور لکھنے کو۔ لیکن اس وقت تو اپنے انکل گیلانی کی شان میں کچھ کہنا ہے۔ شاہد ہمارے حمکرانوں کے نصیب میں عوام کی بدعائیں اور آہیں سننا ہی رہ گیا ہے اور یہ ان کا من پسند مشغلہ بھی ہے۔ تبھی تو وقتاً فوقتاً وہ عوام کو اس کا موقع فراہم کرتے رہتے ہیں۔ جیسے کہ محترم وزیرِ اعظم صاحب نے کیا۔ سوچا ہو گا عوام بور نہ ہو گئے ہوں۔ تو چلو کچھ کرتے ہیں۔ نکل پڑے جمعتہ الوداع کی نماز ادا کرنے۔ اب پبلک کو یہ بھی بتانا مقصود تھا کہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, September 4, 2011 - 13:23
مصنف: عادل بھیا
اِک زمانہ میں ماحول اور وقت نے ہمیں بھی شاعری کرنے پر مجبور کیا لہٰذا ہم قلم اور کاغذ ہاتھ میں تھامے بیٹھ گئے اور شام تک اپنے مقصد میں کُچھ حد تک کامیاب ہو ہی گئے۔ چند اشعار تو لکھ لئے مگر مسئلہ یہ پیدا ہوا کہ ہمارے علاوہ یہ اشعار پورے گھرانے میں کسی کے بھی پلے نہ پڑے۔۔۔۔ گھرانے میں کیا، آج تک یہ اشعار جس کو بھی سُنائے، بیشتر کے سر کے اوپر سے ہی گزر گئے۔ اپنی کوشش کو جاری رکھتے ہوئے ہم نے چند اِک مرتبہ دوبارہ بھی قلم اُٹھایا اور ہر مرتبہ اپنی ڈائری میں لکھ کر ڈائری سنبھالے دیتے۔ بالآخر اُردو کے ایک پروفیسرکو ڈائری دِکھائی تو جناب نے ہماری آنکھیں کھولنے میں ہماری معاونت فرمائی کہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, August 31, 2011 - 10:33

تمام عالم میں جہاں جہاں عید منائی جارہی ہے وہاں بسنے والے تمام مسلمانان کو عیدالفطر مبارک ہو۔ ساتھ ساتھ یہ دعا بھی کہ اس خوشی کے موقع پر اللہ تعالیٰ آپ سب کو ڈھیروں خوشیاں نصیب کرے اور آپ کے چہروں پر ہمیشہ خوشی کے پھول کھلائے رکھے۔  :pray: اور اگر کوئی اپنی خوشی سے عیدی دینا چاہے تو ہم حاضر ہیں  :moneyeyes: ماشاءاللہ کافی بزرگ بلاگرز بھی موجود ہیں۔...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, August 31, 2011 - 01:15
مسلسل دو برس دیارِغیر میں گزارنے کے بعد جب بندہ وطن آتا ہے تو وطن کےلوگوں سے لے کر آب وگیا تک سب خوبصورت و حسین لگتے ہیں مگر آہستہ آہستہ حقیقت کھلنے لگتی ہے اور یہ ادراک ہوتا ہے کہ'خوب تھا کہ جو دیکھا، جو سنا افسانہ تھا'۔ قصہ کچھ یوں ہوا کہ چند دن پہلے ہم ایک قدرے نئی انٹرنیٹ سروس پروائیڈر کے ہتھے چڑھ گئے اور قریب کی ایک دوکان سے وائی فاوئی ڈیوائیس  خرید لی۔ بتایا گیا کہ دو گھنٹوں میں انٹرینیٹ ایم۔اے۔امینhttp://www.blogger.com/profile/04425754577499948453noreply@blogger.com8http://bayaadesydney....
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, August 29, 2011 - 08:13
بسم اللہ الرحمٰن الرحیم نحمدہ و نصلی علی رسولہ الکریم                                           اما بعد:             چونکہ عید کے دن قریب ہیں اور مسلمان بھرپور طریقے سے عید کو منانے کی کوشش [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, August 28, 2011 - 07:13
Filed under: گل دستہ (کاپی پیسٹ) Tagged: فرنٹ پیج, مسلم ہیکرز, نفسیاتی محاذ, ایک محاذ
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, August 27, 2011 - 17:08
مصنف: عادل بھیا
جہاں کمپیوٹر موجودہ دور کی اِک اہم ضرورت اور نوجوانوں کیلئے تفریح کا سبب بن چُکا ہے وہیں اِسکے بہت سے نقصانات بھی ہیں جن سے ہم سب بخوبی واقف ہیں۔ اِنہیں نقصانات میں سے ایک کمپیوٹر کے ذیادہ استعمال کا صحت پر منفی اثر ہے۔ نظر کا کمزور ہونا اور کمر کا درد سرِعام ہیں اور یہ دونوں بیماریاں بھی ایسی کہ جن سے جان چھُڑانا نہایت مشکل ہے۔ مُجھے بھی کُچھ عرصہ یہ کمر کا درد رہا تھا لیکن الحمدُللہ جلد ہی جان چھُٹ گئی لیکن اِک دوست اِس درد میں مبتلا ہے جس کو دیکھتے ہوئے اِس موضوع پر آج لکھنا چاہا۔ اب معاملہ یہ کہ خوب آرام کرو تو درد ختم لیکن تھوڑا سی مشقت یا کوئی کام کر لیا جائے یا کچھ دیر بغیر سہارے کے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, August 22, 2011 - 21:54

بسم اللہ الرحمن الرحیم

الیکٹرونیات میں رزسٹر استعمال کرنے کے دو بنیادی مقصد ہوتے ہیں۔ کرنٹ کو ایک مخصوص مقدار میں محدود کرنے کے لئے یا وولٹیج میں مطلوبہ کمی فراہم کرنے کے لئے۔ رزسٹر کی ویلیو کو اوہم  (Ω) میں ناپا جاتا ہے۔رزسٹر کی درجہ بندی انکی رزسٹینس ویلیو ، Tolerance اور پاور ریٹنگ(واٹیج) کے حساب سے کی جاتی ہے۔ رزسٹر کے سائز اور اسکی  ویلیو کے درمیان کوئی تعلق نہیں ہوتا یعنی یہ لازمی نہیں کہ اگر کوئی رزسٹر بڑا ہو تو وہ زیادہ اوہم (Ω) کا ہو یا کوئی رزسٹر چھوٹا ہو تو وہ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, August 21, 2011 - 08:28
مصنف: ابو موسیٰ


محبوبہ کا دل جیتنے کے لیے بھارتی فلموں میں اکثر ایک گھسا پٹا پر تیر بہدف طریقہ واردات استمعال کیا جاتا ہے … ہیرو کے چند دوست غنڈے ، موالی بن کر سرے عام ہیروئن کی عزت پر ہاتھ ڈالنے لپکتے ہیں اور بیچاری نازک سی لڑکی بچاؤ بچاؤ کا واویلا کرتی ہے ، کوئی بھی عام آدمی آگے نہی بھڑتا ، ایسی نازک صورتحال جب غنڈوں میں پھسی بےبس ، مصّوم رضیہ (ہیروئن) کی سب امیدیں ٹوٹنے لگتی ہیں تو اچانک سے ہیرو صاحب برآمد ہوتے ہیں ، اپنے لفنڈروں کو دو چار ٹکا کر بھگا نے کے بعد ہیروئن کے سامنے اپنے ہی رچائے کھیل کے ذریعه اصلی “ہیرو” بن جاتا ہے….

دنیا کی کوئی بھی تھکی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, August 21, 2011 - 07:36
کچھ دن قبل خواب میں اپنے مرحوم ماموں (صدیق پرویز) اور مرحومہ مامی کو دیکھا۔ اس خواب میں میرے لیے کچھ پیغام تھا، جو کہ باقی لوگوں کے لیے بھی فائدہ مند ہو سکتا ہے۔ اس خواب کو لکھنے کی بنیادی وجہ میرے خالہ زاد عثمان قیوم ہیں کہ انھوں نے کہا کہ اس کو بیان کروں۔ اس میں زیادہ دلچسپی تو میری فیملی کے لوگوں کو ہی ہو گی۔
خواب میں میں نے یہ دیکھا کہ میں کسی باہر ملک میں ہوں، غالبا ڈنمارک (میں کچھ عرصہ وہاں رہ چکا ہوں)۔ وہاں میں کسی بلاک کے اندر ہوں جہاں بہت سی بلڈنگ ہیں۔ میں ویاں کسی کام سے آیا تھا (جو کہ مجھے اب یاد نہیں)۔ بلاک سے واپسی کا رستہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, August 20, 2011 - 20:10
مصنف: محمد اسد

دیکھو دور اک لاش پڑی ہے،
چوراہے کے دائیں جانب،
کونے پر سنسان گلی کے،
کچرا کنڈی دیکھ رہے ہو؟

اس کے پاس لہو میں لتھڑی،
خاک آلودہ، بکھری بکھری،
غیر یا اپنا کون ہے جانے!
آؤ دیکھیں اور پہچانیں

نقش مٹا ڈالے گولی نے،
رنگت خون میں ڈوب گئی ہے،
جیب ٹٹولو کیا رکھا ہے؟

یہ تو خون سے تر گجرے ہیں،
دس دس کے دو نوٹ رکھے ہیں،
ہاتھ جو نیچے دبا ہوا ہے،
اس کی گرفت میں کیا رکھا ہے؟

شاید ہے اسکول کا بستہ،
جیب سے یہ کیا جھانک رہا ہے؟

یہ دیکھو اک پرچہ، خط ہے شاید
ٹوٹی پھوٹی سی اردو میں،
رنگ برنگی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, August 20, 2011 - 15:33
اس پوسٹ کی آٹھویں قسط یہاںملاحظہ فرمائیں
آسمان پر گہرے سیاہ بادل چھائے ہوئے ہیں، سرد اور تیزہوائیں چل رہی ہیں۔ بادل وقفے وقفےسے گرجتے ہیں تو یوں لگتاہےجیسے گڈو کی موت پر چپکے چپکے رورہے ہیں۔ ننھے گڈو کی میت اُٹھنے کی تیاری ہورہی ہے۔ مسجد سے لایا گیا جنازے کا ڈولا گھر کے باہررکھا ہوا ہےاور چونکہ آنگن میں لگا ٹین کا دروازہ بہت چھوٹا ہے اور ڈولا اندر لایا نہیں جاسکتالہذا پروگرام کے مطابق گڈو کو گود میں اُٹھا کر باہر جنازے کے ڈولے پر لٹایا جائے گااور اُس کے بعد میت قبرستان کی طرف روانہ ہوگی۔
...
زمرہ: اردو بلاگ

Pages

Subscribe to بلاگستان فیڈز