بلاگستان

تاریخ اشاعت: جمعہ, January 27, 2012 - 15:42
ٹوئیٹر ایک آن لائن سوشل نیٹ ورک اور مائکروبلاگنگ سروس ہے جو اپنے استعمال کنندہ کو 140 الفاظ پر مشتمل پیغامات بھیجنے کی سہولت فراہم کرتا ہے۔ اسے انٹرنیٹ کا ایس ایم ایس بھی کہہ سکتے ہیں اور ٹوئیٹر خود بھی پاکستان میں موبائل فون کے تمام نیٹ ورکس پر ٹوئیٹس کو پذریعہ ایس ایم...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 26, 2012 - 22:07
سانسیں ۔ مستقل طور پر چلتی ہوئیں - ایک مناسب  وقفے کے ساتھ ۔ ابتدا کی سختی سے نالاں نہ ہی انجام سے وحشت زدہ - بس اپنی ہی دھن میں برابر چلتی رہتی ۔ نہ اتنی تیز کہ خود کو تھکا ڈآلیں نہ اتنی سست کہ ان کا وجود ہی خطرے میں پڑ جائے ۔ نہ  تھکن کوئی نہ عجلت ۔ نہ اتنی خاموش کہ لاشعور ہی ان کی آواز سے بیگانہ ہو جائے اور نہ اتنی آواز کہ کانوں میں مدھم سی آواز کو بھی آنے سے روکیں۔ ا ایک لڑی میں پروئی ہوئی بلاامتیازhttp://www.blogger.com/profile/01265011304348792367noreply@blogger.com1
زمرہ: اردو بلاگ

دبیر کی مرثیہ گوئی

تاریخ اشاعت: جمعرات, January 26, 2012 - 17:58
                        مرزا سلامت علی دیبر اُردو مرثیہ کی تاریخ کا ایک اہم اور بڑا نام ہے۔ صنف مرثیہ کو بام عروج پر پہنچانے میں میرانیس کے ساتھ ساتھ ان کی کوشش بھی ہر لحاظ سے قابل ِ داد ہیں ۔ مرزا دبیر نے چونکہ عربی اور فارسی علم و ادب کا گہرا مطالعہ کیا تھا۔ اور دوسرے حساس طبیعت کے باعث وہ سنجیدہ ہوگئے تھے اس لئے انہیں شعر و سخن کی سلطنت میں یک گونہ عافیت کا احساس ہوا، شاعری سے انہیں فطری wahab ijazhttps://plus.google.com/108810020715170166715noreply@blogger.com0
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, January 23, 2012 - 01:05
بچپن  سب کا ہی اچھا گذرتا ہے لیکن کچھ لوگوں کا یہ کہنا کا زندگی کا بہترین دور ہی بچپن کا تھا تو یہ بات بھی معقول ہے۔جیسا کہ میرا بچپن،نہیں یاد پڑتا کے کبھی معصوم سی شرارتیں کی ہوں گی،ہمیشہ مار پڑنے والے کام اور بڑے بڑے نقصانات ہی کۓ۔گلی ڈنڈا اور کنچے کھیلتے ہوۓ خیال آیا کہ کچھ کھیل لڑکیوں والے بھی کھیلنے چایۓ،اس لۓ ایک خوبصورت سی گڑیا کی تلاش شروع کی،گڑیا ملی تو لیکن وہ خوبصورت ہرگز نا تھی۔گھٹیا پلاسٹک کی بنی ہوئ جس کے ہاتھ پاؤں ڈھیلے ڈھالے انداز میں الاسٹک کے ساتھ بندھے ہوۓ تھے۔پچانویں کے اوئل میں اپنی 6 انچ  بلند گڑیا کی شادی کا سوچا،میری سمدھن میرے پڑوس میں رہتی تھی لیکن اسکا گڈا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 22, 2012 - 22:08
مصنف: سائنسیات

اللہ کا نام لے کر آغازِ کلام تو لکھ دیا ہے لیکن عنوانِ بلاگ کےلئے کوئی نام ابھی تک جچ نہیں رہا ہے، احسن یہی ہے کہ سب سے پہلے بلاگ کیلئے بہتر نام سوچا جائے اور یہی ہمارے ہاں پسندیدہ عمل ہے۔
ابھی یہ سطور لکھنے تک کیونکہ بلاگ صرف میرے ہی زیرِمطالعہ ہے اس لئےبتاتا چلوں کہ اب تک دو دفعہ عنوان کی تبدیلی عمل میں آ چکی ہے۔ پہلا عنوان " sciurdu " تھا؛ جو کہ سائنس اردو کی تلخیص تھا لیکن پھر یہ ترک کر دیا کہ یہ عنوان میں انگریزی زبان کا اثر زیادہ لگ رہا ہے ۔اس کے بعد "صد رنگ" رکھا لیکن یہ ایک اردو ڈائجسٹ "سب رنگ" سے بہت ملتا جلتا لگ رہا تھا اور ساتھ ہی عنوان سے بلاگ کا موضوع گرافکس کی اشارہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 22, 2012 - 13:01
غزل

سخن ہاے دل و جاں مر گئے کیا
کہو کچھ تو کہو ہاں مرگئے کیا

یہ کیا آٹھوں پہر چپ سی لگی ہے
وہ کچھ کہنے کے ارماں مر گئے کیا

جیے جاتے ہیں ہم اک دوسرے بن
ہمارے عہد و پیماں مر گئے کیا

یہ خاموشی تو اب رونے لگی ہے
وہ آنے والے طوفاں مرگئے کیا

یہ دل کیوں سینہ کوبی کر رہا ہے
یہ تم مجھ میں مری جاں مر گئے کیا

اسیرانِ خمِ زلفِ زمانہ
پریشاں تھے پریشاں مر گئے کیا

جو دن دھّمال کرتے آ رہے تھے
وہ رستے ہی میں رقصاں مر گئے کیا

کوئی تو دارسامانی کو آتا
گرانی میں سب ارزاں مر گئے کیا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 19, 2012 - 08:58
یہ تب کی  بات ہے جب میں شاید سولہ برس کا تھا سکول کی چھٹیاں تھیں سردیوں کی اور گائوں آیا ہوا تھا ۔ رات کو بیت خلا جانے کی حاجت ہوئی تو گائوں میں نقشے وغیرہ تو تھے نہیں اور بیت الخلا بھی بعد میں باہر کی طرف بنا ہوا تھا میں خاموشی سے اٹھ کر جونہی باہر نکلا تو سامنے ایک عورت کو کھلے بالوں کے ساتھ بہت وحشی انداز میں دیکھ کر میری حالت خٔوف سے غیر یو گئی ایک لمحے کے لیے کانپ ہی گیا لیکن خوش قسمتی بلاامتیازhttp://www.blogger.com/profile/01265011304348792367noreply@blogger.com6
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 18, 2012 - 15:11
مولانا اعظم ہاشمی کی داستانِ ہجرت (ترکستان تا پاکستان) بعنوان "سمرقند و بخارا کی خونیں سرگذشت" کتابی شکل میں سن 1969ء میں شائع ہوئی تھی جس کا تعارف مولانا مرحوم کے پوتے کفایت ہاشمی نے اردو محفل فورم پر یہاں کروایا ہے۔
یہ دلچسپ کتاب جو کہ دراصل تاریخ کا ایک باب بھی ہے ، archive.org پر پی۔ڈی۔ایف شکل میں موجود ہے۔ ڈاؤن لوڈ لنک نیچے دیا جا رہا ہے۔

کتاب کے شروعاتی صفحات ہی سے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, January 17, 2012 - 11:05

لوگ اکثر کہتے ہیں کہ دنیا میں انصاف نہیں رہا ، ہر کسی پر ظلم ہو رہا ہے، ہر کسی کو اپنا آپ مظلوم نظر آتا، ہر کسی کویہ لگتا ہے کہ میں ہی بیچارہ ہوں ، پر میں نے تو جب بھی مشاہدہ کیا مجھے یہ ہی نظر آیا کہ دنیا میں ہر روز ہر کسی کے ساتھ انصاف ہوتا ہے اور ایسا انصاف ہوتا ہے کہ اس دنیا کی کوئی عدالت ویسا انصاف نہیں کر سکتی، سب سے بڑا جج تو انسان کے اندر بیٹھا ہوتا ہے، جو ہمیں بتا تا ہے کہ یہ نا کرو وہ نا کرو، اگر ایسا کرو گے تو نقصان ہو گا ، اگر ویسا کرو گے تو تباہ و برباد ہو جاؤ گے، ہاں یہ جو(دل) ہم جھوٹا وکیل ہائر کر لیتے ہیں نا دلائل دینے کو اِسے اگر نوکری سے برطرف کر دیا جائے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 15, 2012 - 20:03
سعید اجمل نے انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز سے پہلے کہا ہے کہ وہ انگلینڈ کے خلاف ایک نئی ڈیلیوری متعارف کروائیں گے۔ ماہرین سعید اجمل کی نئی ڈیلیوری کو ’تیسرا‘ کہہ رہے ہیں۔ باؤلرسعید اجمل کا کہنا ہےکہ انہوں نے دوسرا کے بعد اپنی جادوئی نئی بال دورہ زمبابوے سے قبل ہی ایجاد کرلی تھی تاہم اسے انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لیے بچا کررکھا تھا۔
آخر یہ "تیسرا" کیا بلا ہے آیئے جانتے ہیں۔
تیسرا دراصل ٹاپ اسپن گیند ہوتی ہے جس کی اچھال دوسری گیندوں سے قدرے زیادہ ہوتی ہے۔
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 15, 2012 - 11:39
غزل

لوگ پہچان نہیں پائیں گے چہرا اپنا
اب نہ بدلے تو بدل جائے گا نقشہ اپنا

برق ایک ایک نشیمن کا پتہ جانتی ہے
اب کے پھر ڈھونڈ نکالے گی ٹھکانا اپنا

طعنہء دربدری دے مگر اتنا رہے دھیان
راستہ بھی تو بدل سکتے ہیں دریا اپنا

بول، اے بے سروسامانیء گلشن، کچھ بول
خلقتِ شہر طلب کرتی ہے حصّہ اپنا

یہ بھی کب تک کہ ہر آفت کا سبب ہے کوئی اور
منزلیں خود بھی تو گُم کرتی ہیں رستہ اپنا

ہم کہاں اپنے سوا اور کو گردانتے ہیں
ہم نے لِکھا بھی تو لکھیں گے قصیدہ اپنا

افتخار عارفؔ

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, January 14, 2012 - 01:51
مصنف: فراز بیگ

سنتے آئے ہیں کہ تاریخ اپنے آپ کو دہراتی ہے۔ شاید بہت سے لوگوں کے لیے تاریخ میں سوائے بوریت کے اور کچھ نہ ہو لیکن واقعہ یہ ہے کہ تاریخ کا مطالعہ نہ صرف آنے والے خطرات کی پیش بندی کا موقع فرہم کرتا ہے بلکہ وہ موجودہ حالات کو بھی ایک مختلف تناظر میں متعارف کرا سکتا ہے۔ آج کل ہمارے ملک کا سب سے بڑا مسئلہ مہنگائی یا بڑھتی ہوئی خودکشیاں نہیں بلکہ ایک ایسا معاملہ ہے جس میں ہمارے ملک کی اعلیٰ ترین مقتدر شخصیات کا ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا اندیشہ ہے۔یہ معاملہ ہے میمو گیٹ اسکینڈل کا (نہ چاہتے ہوئے بھی یہ مانگے کی اصطلاح استعمال کرنی پڑ رہی ہے ورنہ صدر نکسن کا قصور اتنا بڑا...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 12, 2012 - 18:37

کسی کے چھوڑ جانے سے،سانسوں کی مالا کا،دھاگا کب ٹوٹا ہے،تو پھر یہ سوگ کیسا ہے!یہ دل کا روگ کیسا ہے!یہ کیسی آگ لگتی ہے!یہ کیسا درد اُٹھتا ہے!کہ مجھے کو چین نہیں آتا!چلو اک کام کرتی ہوں، وہ سب میں بھول جاتی ہوں،ہاں میں اِک قبر بناتی ہوں، کہ جس کے مقبرے پر میں، تمھارا نام لکھتی ہوں،تمھاری یادوں کے سائے، میں اس میں دفن کرتی ہوں،چلویہ فرض کرتی ہوں،کہ تم کو بھول جاتی ہوں، مگر یہ سب ناکارہ ہے،تمھارے بن نا پہلے تھا،نا اب میرا گزارہ ہے۔
ناعمہ عزیز :)

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 12, 2012 - 13:59
مصنف: سائنسیات
 آغازِکلامسب سے پہلے خدا  کا شکر ہے کہ اس نے زندگی جیسی نعمت عطا کی، عقل و فہم سے نوازہ، اور آپ سے مخاطب ہونے کی توفیق دی۔
آج سے اپنے بلاگ کا باقاعدہ آغاز کرنے لگا ہوں جس کے لیے جناب "م بلال م" اور اس کے علاوہ جناب "محمد شاکر عزیز" کا بھی بہت احسان مند ہوں، کہ جن کی وجہ اردو بلاگ لکھنے کی ترغیب ملی۔ جو لوگ اردو میں بلاگ لکھنا چاہتے ہیں وہ اس کتاب "اردو اور...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 11, 2012 - 11:26
اس کو آج کل کا ایک نہایت ہی سنگین المیہ ہی کہا جا سکتا ہے کہ ایک مسلمان کا دوسرے مسلمان کے انتقال پر خوش ہونا۔

اور کسی بھی ایک فرد کے کردہ گناہ کو بنیاد بنا کر اسے متعلق اور منسلک ہر فرد کو اسکا شریک کرنا بھی نہات ہی افسوسناک عمل ہے۔

اور یہ دونوں ہی باتیں انتہائی خطرناک ہیں جن کا ادراک ابھی تو ہمکو نہیں ہوتا مگر اس دن جس دن ماں اپنے جگر کے گوشوں کو بھی بھول جائے گی تو اس دن ہمارا یہ عمل بھی ہمارے لئے انتہائی مشکل کا باعث بنے گا۔

اس لئے کسی ایک فرد کے گناہ کو بنیاد بنا کر ساری قوم کو مورد الزام نہیں ٹھرانا چاہیے
میں نے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 11, 2012 - 00:33
مصنف: فراز بیگ

معاملہ بہت ہی چھوٹی سی بات سے شروع ہوا تھا۔ اتنی چھوٹی کہ جو کچھ اس کے بعد ہوا یہ یقین کرنا مشکل ہے کہ اس سب کا باعث یہ چھوٹی سی بات ہی تھی۔

یہ نومبر کی ایک شام کی بات ہے۔ اسی نومبر کی۔ شیردل اپنے گھر والوں کو بس میں سوار کرا رہا تھا جو کہ خانپور اپنے گاؤں جا رہے تھے۔ جس جگہ سے یہ بسیں چلتی ہیں وہ کیونکہ عین بازار میں واقع ہےاس لیے بسوں کی روانگی اور آمد کے وقت اچھا خاصا رش ہو جاتا ہے اور کبھی کبھار تھوڑی بہت دھکم پیل بھی ہو جاتی ہے۔ اس وقت بھی یہی کچھ ہو رہا تھا۔ بس کچھ نیمے دروں نیمے بروں انداز میں سڑک پر آرہی تھی۔ جانے والوں کو الوداع کہنے والے جلدی جلدی ان...

زمرہ: اردو بلاگ

آئندہ عشق کے شاعرنیّر ندیم سے مکالمہ

تاریخ اشاعت: سوموار, January 9, 2012 - 12:44
مصنف: محمود مغل
آئندہ عشق کے شاعرنیّر ندیم سے مکالمہمحفوظ رکھنا ترکِ تعلق کا تجربہآئندہ عشق میں بھی یہی کام آئے گا(نّیر ندیم )گفتگو : م۔م۔مغل نیّرندیم صاحب کا آبائی تعلق منقسم ہندوستان کے علاقہ برن(بلند شہر) سے ہے کسبِ روزگارکے لیے برسوں پاکستان ٹیلی وژن سے منسلک رہے بعد ازاں ایک نجی ٹیلی وژن سے منسک ہیں اور صحافتی فرائض کی ا نجام دہی میں مصروف ہیں ۔ نیّر ندیم صاحب کا تقریباً پورا خاندان ہی گیسوئے ادب سنوارنے محمد محمود مغلnoreply@blogger.com0
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, January 9, 2012 - 04:52

پہلی بار ایک دوست بلاگر   محترم ضیاء الحسن خان صاحب نے ٹیگ کیا۔پہلے تو معلوم ہی نہیں تھا کہ خدایا یہ کیا ماجرا ہے۔ظاہر ہے اب تک ہم وہ دوسرا ٹیگ ہی صرف جانتے تھے۔لیکن پھر اردو سیارہ کی مدد سے اکثر...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 8, 2012 - 23:52
پہلی بار ایک دوست بلاگر   محترم ضیاء الحسن خان صاحب نے ٹیگ کیا۔پہلے تو معلوم ہی نہیں تھا کہ خدایا یہ کیا ماجرا ہے۔ظاہر ہے اب تک ہم وہ دوسرا ٹیگ ہی صرف جانتے تھے۔لیکن پھر اردو سیارہ کی مدد سے اکثر اردو بلاگرز کے بلاگ پڑھے تو پتہ چلا کہ یہ بھی بلاگستان  کا [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 8, 2012 - 12:48



اس کتاب کے عنوان سے لگتا ہے جیسے یہ کوئی مہماتی قسم کا ناول ہوگا۔ لطف کی بات یہ ہے کہ اس میں یہ دونوں خوبیاں ہیں  مگر اس کے باوجود یہ اپنی طرز کی ایک بہت مختلف ، شاندار اور غیر معمولی کتاب ہے۔ یہ دنیا کی چالیس سے زائد زبانوں میں ترجمہ ہوکر کروڑوں کی تعداد میں فروخت ہوچکی ہے۔ مصنف نے انسانی زندگی کے چند بہت...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 8, 2012 - 05:05
مصنف: سعدیہ سحر





آپ کو پتا توھوگا نیا سال شروع ھو گیا ۔ میں نے سوچا ابھی تو شروع ھوا ھے مبارک باد دے ھی دوں ابھی یہ سال اتنا پرانا نہیں ھوا دسمبر کے آخری ھفتے نئے سال کی مبارک باد دینے لگی تھی مگر پھر سوچا اتنی بھی کیا جلدی ھے ابھی بہت وقت پڑا ھے آرام سے لکھوں گی پھر آرام آرام میں ایک ھفتہ گزر گیا ۔ میں نے نئے سال پہ خود سے وعدہ کیا تھا کہ ھفتے میں ایک تحریر تو ضرور لکھا کروں گی ۔ مگر میں جب بھی خود سے وعدہ کرتی ھوں وہ پورا نہیں کر سکتی لوگ دوسروں سے بے وفائ کرتے ھیں وعدہ خلافی کرتے ھیں ۔ میں خود سے کرتی ھوں ۔ شاید اسی وجہ سے دل کچھ روٹھا روٹھا رھتا ھے

خیر آپ سب کو نیا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 8, 2012 - 01:28
میں نے اسے کل پہلی بار دیکھ جب اسکا باپ اسے جاں بلب حالت میں گھر لایا ۔ ''صبغت اللہ صاحب سے ملنا ہے کیا وہ گھر پر ہیں''؟ میں نے کہا جی ہاں آ جایۓ ۔۔ مین گیٹ سے ڈرائینگ روم تک کے مختصر سے فاصلے تک میں نے ان کے پیچھے چلتے ہوۓ سینکڑوں باتیں سوچ لیں۔اس وجود کو صوفے پر لٹانے کے بعد وہ صاحب بولے! یہ میری بیٹی ہے مُرک اسی کے علاج کے سلسلے میں ہم صبغت اللہ صاحب سے ملنا چاہتے ہیں۔ ابھی میں نے یہ پوچھنے کے لۓ کہ اسے ہوا کیا ہے منہ کھولا ہی تھا کہ میرے سسر کمرے میں داخل ہوۓ اور کہا اچھا ہوا تم آگۓ پہلے ہی کافی دیر ہو چکی ہے۔اس کے بعد وہ ان اجنبی میاں بیوی اور ان کی بیٹی کو لے کر نکل گۓ۔رات کے کھانے پر...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, January 7, 2012 - 12:59
 ہم برابر ناجائز کاموں میں مبتلا ہیں ، ہمیں اس کا اعتراف بھی ہے ، لیکن اپنے  مقابل ساتھی کا مکروہ عمل ہماری آنکھوں میں کانٹا بن کر چبھتا ہے ۔ ۔ ۔ ۔مجھے سامنے والے کی ایک چھوٹی غلطی بھی  پہاڑ کے مانند نظر آنے لگتی ہے اور میں اس کا چرچا کرنے لگتا ہوں  ،  خود چاہے سو دفعہ وہی کام کرجا ؤں مجھے اس کا احساس تک نہیں ہوتا۔ ۔ ۔ مجھے زرداری سے تو شکوہ ہے کہ  وہ کرپٹ ہے لیکن میں اپنی کمائی کو  کتنا حلال کرکے کھاتا ہوں ، اسکا کبھی مجھے خیال بھی نہیں آیا۔۔۔۔۔۔  میں اس بات پر گلی میں کھڑے ہوکر بحثین کرتا ہوں کہ پولیس، کچہری والے رشوت کے بغیر کام ہی نہیں کرتے ،...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, January 7, 2012 - 11:39
میر ببر علی انیس (ولادت 1802ء دہلی میں اور وفات 1874ء لکھنوء) ایک مرثیہ میں یہ دعائیہ مصرع کہہ چکے تھے۔یا رب رسول پاک ﷺ کی کھیتی ہری رہےدوسرا مصرع حسب دل موزوں نہیں ہو رہا تھا دیر سے اسی فکر میں تھے، میر ببر علی انیس کی اہلیہ اس طرف سے گزریں تو انہوں نے پوچھا کہ کس سوچ میں بیٹھے ہیں؟ موصوف نے اپنا مصرع پڑھا اور کہا کہ دوسرا مصرع سوچ رہا ہوں بیوی نے بے ساختہ کہا یہ لکھ دو
صندل سے مانگ بچوں سے گود بھری رہےمیر انیس پھڑک اٹھےفورا یہ مصرع لکھ دیا۔ مطلع مکمل ہو کر زبان کی لطافت اور محاورے کی خوبی سے ضرب المثل ہوگیا۔
یا رب رسول پاک ﷺ کی کھیتی ہری رہے
صندل سے مانگ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, January 6, 2012 - 18:15
نئے سال کے آغاز پر ہر سال کی طرح اس سال بھی ملک کے مختلف شہروں میں نیو ائرنائٹ کے چرچے عام رہے۔ چراغان، آتش بازی اور پارٹی وغیرہ وغیرہ نیو ائر نائٹ منانے کے لیے لازم و ملزوم تصور ہونے لگے ہیں۔ دوسری طرف بلاگستان میں ایک بار پھر سے بلاگران کا ایک دوسرے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, January 6, 2012 - 13:53
 ڈیڈھ دو سال پہلے فاکس نیوز پر  غیر اخلاقی  ویب تلاش میں پاکستان کو اول ترین ملک قرارد دے دیا گیا تھا ۔  اس کے بعد سے آج تک مختلف حیلے بہانوں سے مخالفین کے ساتھ ساتھ اپنے بھی بوقت ضرورت پاکستانی قوم پر اسے ہتھیار کے طور پر استعمال کرنے سے نہیں چوکتے ۔
ٹی وی ڈرامے ہوں ، فحش فلمیں ، اخلاق سے گرے ہوئے گانے ہوں یا کلچرل شو کے نام پر ڈانس ۔ میڈیا کے ساتھ ساتھ قوم کو بھی دونوں ہاتھوں سے لیا جاتا ہے ۔ طعنے دینے کے لئے کسی خاص وجہ کی ضرورت نہیں ہوتی بلکہ بلا وجہ ہی اس کام کو سرانجام دیا جاتا ہے ۔
آج کل ٹی وی پر سیاسی مباحثہ کے نام پر جو کھیل کھیلا جاتا ہے ۔ یعنی دوسروں...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 5, 2012 - 23:59
مصنف: کاشف نصیر
ابا جان بچھڑے تو غم انکے بچھڑنے کا تھا، ملال ان کے ہجر تھا، رونا انکی جدائی کا تھا لیکن آج اس سے کہیں زیادہ کہ ایک باغبان نے تین ننے پودے لگائے، کمال چاو سے انکی آبیاری کی، کمال جانثاری سے انکی رکھوالی کی اور کمال ڈھنگ سے انہیں پرورش چڑھایا لیکن، لیکن جب […]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 5, 2012 - 23:59
مصنف: کاشف نصیر
جتنی کوشش کرلوتخلیقی عمل کو قید کرنا مشکل ہے، اندازہ تھا اور اس اندازہ کو مزید تقویت پہنچی پچھلے ہفتہ اور اتوار کے روز، دو ہفتوں سے تین مختلف موضوعات ذہن میں گھوم رہے تھے لیکن فرصت کے نایاب وقت میں لکھنے بیٹھا تو کوئی بھی مضمون شروع نہ ہوسکا اور بات کہیں کی کہیں […]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 5, 2012 - 13:59
متزلزل ایمان ،بچھڑا معبود تو کبھی تحریف کتاب
پالنا گروہی تو اب دکھائی دیتے ہیں استعجاب

کرنوں کی برسات ہے یہ مہتاب و آفتاب
رحمتوں کی سوغات ہے یہ جہانِ آب و تاب

نہیں رکھتا شہباز شوقِ ہما سرخاب
جینے کی جان نکال لیتی ہے اذیتِ خواب

دیتا ہے وہ چھپر پھاڑ کر بے حساب
شعور زمان سے اونچا ہے علم الکتاب

یقین محکم ہو تو ریگستان بھی ہو آب الباب
عقلِ خرد کو تو بہتی برستی دنیا بھی ہے سراب

عشقِ جنوں میں ہے دل بیقرار و بیتاب
ذرا سا خمیر اُٹھے تو ہے مے بھی آب

محمودالحق
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 5, 2012 - 03:21


تحقیق نے رحم کے سرطان کے مختلف عوامل اجاگر کیے ہیں۔




ایک تحقیق کے مطابق لمبے قد کی خواتین میں رحم کے سرطان کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔


بین القوامی محققین کا کہنا ہے کہ ایسی خواتین جنہوں نے کبھی ’ہارمون ریپلیسمنٹ تھراپی‘ نہیں کروائی ان میں زیادہ وزن بھی رحم کے سرطان کے امکانات میں اضافہ کرتا ہے۔

اس سے قبل کی گئی تحقیقات میں بھی ایسے نتائج سامنے آ چکے ہیں...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, January 5, 2012 - 02:05
 وہی جو دکھ بھرے موسم کی ویرانی میں سینون پر دھنک لمحوں کی خوشبو سے مہکتا ہاتھ رکھتا ہے،دلوں کو جورتا ہے اور پھر ان میں محبت نام کی سوغات رکھتا ہے،سفر میں راستے گم ہوں یا رداۓ گمراہی کتنی ہی میلی ہو اور غموں کی دھوپ میں پھیلی ہو۔۔اسے کوئ کہیں کس حال میں بھی آواز دیتا ہے وہ سنتا ہے۔۔بہت ہی مہربان ہے اور رحم کرتا ہے۔۔وہ سچ ہے اور سچ بولنے کا حکم دیتا یے۔۔ سو اس کو یاد کرتے ہیں اور اسی کے نام سے آغاز کرتے ہیں۔
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 4, 2012 - 15:06
مصنف: دریچہ
آج ہمارا ٹی کیفے والے چاچا کافی دینے آئے تو گیس کی لوڈشیڈنگ اور قیمت بڑھنے، سی این جی والوں کی ہڑتال، اور گزشتہ دو دنوں سے ٹرانسپورٹ کے مسائل کے بارے میں بتانے لگے۔ بات کرتے کرتے انہوں نے کہا کہ ہم لوگ اوپر والوں اور اختیار رکھنے والوں کو الزام دیتے ہیں جو کسی حد تک تو درست ہے لیکن ہم اپنی ذاتی اور انفرادی حیثیت میں بھی تو اپنے فرائض کی بجاآوری میں کوتاہی کرتے ہیں۔ جب بجلی اور گیس قسمت سے ہمیں بغیر تعطل کے ملتی ہے تو اکثریت اسے انتہائی لاپرواہی سے استعمال کرتی ہے۔ بات سے بات نکلی تو کسی نے کہا کہ ہم جن لوگوں میں رہتے ہیں یا جن کے ساتھ کام کرتے ہیں ان سے بہت کچھ سیکھتے ہیں اور وہ ہماری شخصیت...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 4, 2012 - 13:01
یہ پہلی مرتبہ ہے کہ کسی نے مجھے بھی ٹیگ کیا اور جہاں تک میری یاداشت کام کر رہی 2009 سے مستقل بلاگ پڑھ رہا ہوں پہلے میری نظر سے ایسی کوئی ٹیگنگ پوسٹ نہیں گذری خیر اچھی بات روایت ہے جاری رہنا چاہیے

مجھے تو ٹیگ کیا ہے حجاب نے

م- 2012ء میں کیا خاص یا نیا کرنا چاہتے ہیں؟

اپنی اماں اور اھلیہ کیساتھ حج ان شاءاللہ تعالی

۔ 2012ء میں کس واقعے کا انتظار ہے؟

مسلمانوں میں اتحاد ہونے کا انتظار ہے


3۔ 2011ء کی کوئی ایک کام یابی؟

اللہ کا شکر ہے بغیر کسی نقصان کے سال گذر گیا :)...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, January 4, 2012 - 11:25


ہمارے سیاستدانوں میں ایک جاوید ہاشمی کی شخصیت ایسی ہے جسے سب ہی قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ وہ ہیں بھی قابلِ قدر کیونکہ وہ ان گنے چنے سیاست دانوں میں سے ہیں جو مفاد پرستی کی سیاست میں نظریہ اور استقامت کی علامت ہیں۔ حال ہی میں جاوید ہاشمی نے مسلم لیگ۔ ن چھوڑ کر تحریکِ انصاف میں شمولیت اخیتار کی ہے۔ جب جاوید ہاشمی سے اس بابت استفسار کیا گیا تو ہمیں توقع تھی کہ اس تبدیلی کے پس منظر میں بھی کوئی نہ کوئی نظریہ یا نظریاتی اختلاف ہی ہوگا لیکن توقع کے برخلاف انہوں نے کہا کہ مجھے نظرانداز کردیا گیا، مجھے پوچھا نہیں گیا، مجھے پس منظر میں دھکیل دیا گیا ۔ یہ بات مایوس کن سہی لیکن اپنے ٹریک...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, January 3, 2012 - 21:52
مصنف: محمد اسد

سال 2009ء میں بلاگنگ کے آغاز سے پہلے میں کافی عرصے تک مختلف اردو بلاگز کا خاموش قاری رہا۔ اس دوران بلاگز کے درمیان ٹیگنگ کا بڑا دلچسپ سلسلہ ہوا کرتا تھا۔ اس میں میری دلچسپی کی بڑی وجہ کئی نئے  بلاگز کا پتہ چلنا تھا۔ بعد میں اردو بلاگستان کا حصہ بنا تو محسوس ہوا کہ ٹیگنگ کا یہ سلسلہ دم توڑ چکا ہے۔ ممکن ہے اس کی وجہ بلاگرز کے درمیان نظریاتی اختلافات میں شدت، نامعلوم تبصروں میں اضافہ، ملک کے بدلتے سیاسی حالات یا پھر کچھ اور ہو لیکن یہ حقیقت ہے کہ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, January 3, 2012 - 19:14

بات اگرچہ کچھ ایسی نہیں کہ ایک عدد پوسٹ ماری جائے لیکن تجربہ اتنا دلچسپ ہے کہ شیئر کئے بنا رہا نہیں جاتا۔
اس لنک پر کلک کریں اور دیکھیں کہ کیا وقوع پزیر ہوتا ہے۔
ہے نا مزے کی ٹپ؟

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, January 3, 2012 - 12:04

شبِ سیاہ پر پڑتی کرنوں سے بنتے جاتے سائے ہیں
محبوب پر حقِ احسان کہ ہم تو اسکے ہمسائے ہیں

تمازتِ آفتاب بھی رکھتا باری رحمت کا اجمال ہے
ایک شاخِ پتے میں جذب اس کی قوتِ عطائے ہیں

مدفن خزینوں سے مہرباں حسنِ زن و زمین آراستہ
محبت میں ہیں سب مہمان نہیں کوئی بن بلائے ہیں

گرتے پانیوں سے پھیلتی روشنیوں تک کے فاصلے
شمعِ جہاں کے سب پروانے کچھ اپنے کچھ پرائے ہیں

بہت مشکل میں ہے انسان عالمِ جاودانی کے محور میں
بندھے ہوئے یہ سب جہاں روشنیوں کے سدھائے ہیں

کھینچی کاغذ کی لکیروں پر زائچہ بازیچہ، اطفال ہے
قوس و قزح کے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, January 2, 2012 - 19:48
یہ سال بھی گزر گیا ، جب بھی میری سالگرہ آتی ہے اور جب بھی جنوری کا مہینہ شروع ہوتا ہے تو میں ایک بار پیچھے کی طرف ضرور نظر ڈالتی ہوں ، ہمیشہ میں ذہن میں یہ سوال آتا ہے کہ ’’ کل میں کیا تھی اور آج میں کیا ہوں ‘‘؟؟؟؟
ہاں اس بار جب پچھلے سال پر ایک نظر ڈالی تو اپنے اندر ایک فرق واضح محسوس کیا، اب میں بہت حد تک حقیت پسند ہو گئی ہو ں ، خوابوں اور خیالوں کی دنیا میں رہنا چھوڑ دیا ہے، پتا نہیں کیوں جو چیز نا ملے ہمیں اُسی میں اتنی کشش کیوں نظر آتی ہے !! مجھے ہمیشہ گلہ رہتا تھا کہ یہ چیز مجھے کیوں نہیں ملی ، لیکن اب میں نے زندگی سے سمجھوتا کرنا سیکھ لیا ہے، اور شاید سب...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, January 2, 2012 - 18:41
میں نے اسکو پہلی مرتبہ 2001 میں پاکستان کی ایک فرم میں بطور آیچ آر اسسٹنٹ کے دیکھا تھا اس وقت کچھ خاص دھیان بھی نہیں دیا تھا کیونکہ اس وقت میں دفتر کا کام بہت دل لگا کر کیا کرتا تھا ۔۔۔۔ اور چونکہ وہ ایچ آر میں تھی اور اپنا ٹریک ریکارڈ ماشاءاللہ سے آج تک اتنا شاندار ہے کہ وقت ہر آفس پہنچنا تو کبھی سیکھا ہی نہیں اس لیے ایچ آر والوں سے تو آلویز 36 کا آنکڑا رہتا ہے ۔

پھر کچھ ایسا ہوا کہ میں کمپنی چھوڑ کے 2002 دبئی چلا گیا اور جو اسکو پہلے مرتبہ دیکھا تھا وہ دبئی کی رنگنیاں دیکھ کر دل اور دماغ سے ایسے صاف ہوئی جیسے کچھ تھا ہی نہیں اور اس وقت تک واقعتاً کچھ نہیں تھا۔


...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, January 1, 2012 - 21:56
مصنف: عرفانیات
 اپنے عمار ابن ضیا کو لگا کہ اُردو بلاگنگ میں جو ایک روایت ٹیگ کی ہوا کرتی تھی وہ کافی عرصے سے دم توڑتی محسوس ہورہی ہے۔ لہذا انہوں نے نئے سال کے اس موقعہ پر اس روایت کو زندہ کرنے کی کوشش کرتے ہوئے اپنے بلاگ پر سات سوالات دیئےاور جن چار بلاگران کو ٹیگ کیا ان میں میرا نام بھی شامل کر دیا۔ ذیل میں ہیں ان کے سوالات اور میرے جواب:  2012ء میں کیا خاص یا نیا کرنا چاہتے ہیں؟ ۔2012 کاایک خاص ٹارگٹ: طبیعت کے لاابالی پن کو ذرا لگام دینا۔ ۔ 2012ء میں کس واقعے کا انتظار ہے؟ ۔ سٹاک مارکیٹ کے ٹرن اراونڈ کا۔...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 30, 2011 - 08:16
لو جی یہ سال بھی گززر گیا ہے ۔ اپنی ٹو ڈو لسٹ جو سال کے شروع میں بنائی تھی اس کو کھولا تو پتہ لگا کہ جو کام اس سال پورے کرنے کی ٹھانی تھی جوں کے توں اپنی جگہ پہ موجود ہیں۔ ان کو مکمل تو کیا ان کو ہاتھ بھی نہیں لگایا گیا۔ ہاں البتہ  کچھ تبدیلیاں دو ہزار دس کی لسٹ میں ضرور ہو گئیں ہیں وہ کام جو 2010 کی ٹو ڈو لسٹ میں اپنی طرف سے پورے کر چکا تھا وہ دوبارہ سے منہ کھول کر سوالیہ نشان کے ساتھ کھڑے ہیں بلاامتیازhttp://www.blogger.com/profile/01265011304348792367noreply@blogger.com3
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 29, 2011 - 15:40
مصنف: عرفانیات

ہماری زندگی کا وقت محدود ہے۔ اس محدود وقت کو لا محدود پیسہ کمانے کے لیے لگا چھوڑنا یہ کیسی بات ہے؟ اور اتنا زیادہ پیسہ کمانا جتنا ہم خرچ بھی نہ کر سکیں، اس کا فائد ہ؟  آپکا پیسہ تو وہی ہے نا جس کو آپ خرچ کر سکیں۔  خوش انسان تو وہ ہوتا ہے جس کی خواہشات اور ضرورتیں محدود  ہوئیں نہ کہ وہ جس کے پاس ضرورت سے زیادہ پیسہ ہو۔ 
اور یہ بھی کیسی بات ہے کہ ان لوگوں کے لیے کمائے چلے جاو جن کے ساتھ گزارنے کے لیے آپ کے پاس وقت ہی نہیں کیونکہ سارا وقت تو آپ اور زیادہ کمانے کے چکر میں رہتے ہو۔ جوانی میں آپ اپنی صحت سے بے پرواہ ہو کر روپے کے تعاقب میں صحت گنوا دیتے ہو۔ بوڑھے ہو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 28, 2011 - 13:05
سننے میں اچھا لگتا ہے یا شائد کسی کو برا لگتا ہے ۔ معصومیت بھرا لفظ ہے پھر اس سے کیوں ڈر لگتا ہے ۔ ڈھو نڈنے پیار کو یہاں آ گئے ۔ الفاظ کڑوی گولی کی طرح مفہوم مسیحائی میں سما گئے ۔
بیماری پنپتی جزبات میں گھائل روح تمازت سے ہے ۔ کھلی آنکھوں سے نظر میں سمائے تو بند آنکھوں سے دل میں اتر جائے ۔ پھر ڈرنے کی وجہ سمجھ سے باہر ہے ۔ اگر سمجھنا یہ ہے تو ایک جملے کو اتنی پزیرائی کیوں ۔ تپھڑ سے ڈر نہیں لگتا پیار سے لگتا ہے ۔ تپھڑ سے آنکھوں میں اندھیرا چھا جاتا ہے تو پیار سے عقل پہ پردہ ۔
نفرت آگ کی حدت ہے جو جلا نہ پائے تو پھگلا ضرور دیتی ہے ۔ مگر پیار ڈوری کی مانند دوسِروں کو باہم باندھ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 27, 2011 - 21:49
مصنف: کاشف نصیر
ارادہ یہ تھا کہ پورے دن کے بلاگی سرگرمیوں کو الفاظ کی پوشاک پہنائوں اورسجا سنوار کر اپنے برقی آشیانے میں بٹھادوں لیکن آئی بی اے کیمپس سے باہر نکلا تو دن کی روشنی ٹھنڈی رات کی چکاچوند میں بدل چکی تھی۔ کانپتا، سکڑتا ساتھی اردو بلاگر عمار ضیاء کے ساتھ چہل قدمی کرتا بس […]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 26, 2011 - 21:45

کافی دن انٹرنیٹ سے دور رہنے کے بعد میری واپسی ہوئی ہےامید ہےکہ یہ سلسلہ اب جاری رہے گا۔ دور رہنے کی وجہ تو کوئی نہیں تھی لیکن اب اچانک واپسی میں کئی عوامل کارفرما ہیں۔ابھی کل ہی بات ہے ایک جاننے والے مجھے ایک مسئلے کے سلسلے میں لے گئے ان کے کمپیوٹر میں وائرس تو تھا ہی لیکن وہ اس سے پریشان نہیں تھے کیونکہ یہ کوئی انوکھی بات نہیں رہی ، ہر ایک کو انہی شیطانوں سے واسطہ پڑتا رہتا ہے، بات اصل میں یہ تھی کہ وہ پورن سائٹس کے بند ہوجانے سے پریشان تھے۔ مجھے انہوں نے کچھ لنکس دیے کہ میں انہیں چیک کروں واقعی سائٹس دکھائی نہیں دے رہی تھیں۔ مجھے خیال گزرا کہ شاید حکومت نے انہیں بند کردیا ہےلیکن آج...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 26, 2011 - 03:48
مصنف: سعدیہ سحر

آج اس شخصیت کی پیدائش کا دن ھے جس کی تصویریں پاکستان میں سب سے زیادہ چھپتی ھیں مگر بہت کم لوگوں کے گھروں کی دیواروں پہ ان کی کوئ تصویر نظر آئے گی ۔ مگر ھم اپنا ایمان بیچتے ھوئے دوسروں کے ضمیر کا سودا کرتے ھر جائز و نا جائز کام کرواتے ھوئے انھیں کی تصویر سے کام چلاتے ھیں ۔ جی ھم نے انھیں نوٹوں پہ سجا رکھا ھے جنھیں ھم اپنا قائد کہتے ھیں ۔ سارے ملک کا نظام انھیں کی تصویروں کی بدولت چل رھے ھے ۔


ان کی تصاویر ان کی تقاریر ان کے اقوال تو ھم نے " ناجائز اثاثوں " کی طرح چھپا کر رکھا ھوا ھے کہیں ان کو ھوا نہ لگ جائے اور کسی چھوت کی بیماری کی طرح پھیل نا جائے - لوگ پاکستان بننے کے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, December 25, 2011 - 21:53

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, December 25, 2011 - 21:19
کراچی میں تحریک انصاف کے جلسے بعد پیدا ہونے والے سوالات
آج سے پہلے تحریک انصاف کے تمام جلسوں مختلف سیاسی لیڈروں کو برابھلا کہا جاتا رہا مگر آج کے جلسے میں عمران خان کا ایم کیو ایم اور الطاف حسین کے تذکرے سے گریز۔ کیوں
جاوید ہاشمی چند دن پہلے لاڑکانہ میں ن لیگ کے جلسے میں نواز شریف کے ساتھ بیھٹے تھے اور آج عمران خان کے ساتھ ۔ کیوں
آج سے پہلے کے تمام جلسوں امریکہ کی دل کھول کر مخالفت کی جاتی تھی مگر آج مکمل خاموشی۔ کیوں
قصور میں شرکاء کوکرسیوں پر بیٹھا گیا تھا آج شرکاء کو کھڑا رکھا گیا۔ کیوں...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, December 25, 2011 - 11:56
تقریبا تین یا چار ہفتے مجھے فیس بک پر اور ایک ایس ایم ایس کے ذریعے یہ پیغام ملا تھا جس کا متن یہ تھا۔ 
اگر کوئی کیو موبائل سیٹ استعمال کرتا ہے توانہیں آگاہ کریں کہ کیو موبائل قادیانیوں کی کمپنی ہے۔ اس کپمنی کے موبائل سیٹ پراگر آپ اردو یاعربی میں "محمد" کا نام مبارک لکھیں تو ٹیڑھی لائنیں آ جائیں گی اوراگر ایس ایم ایس سینڈ کریں گے تو کیو موبائل میں یہ عظیم نام نہیں آئے گا بگڑے ہوئے الفاظ بن جائیں گے۔ 
مگرآج کیوموبائل کمپنی نے اخبارات میں اشتہار شائع کیا ہے۔ جس کے مطابق کیوموبائل میں "کیو" سے مراد کوالٹی ہے قادیانی نہیں۔ اور جن صارفین کو موبائل سیٹس...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 24, 2011 - 13:21
گذشتہ رات پاکستان بلاگ ایوارڈز2011ء کی تقریب تقسیم ایورڈزکا انعقاد ریجنٹ پلازہ کراچی میں کیا گیا۔ میں چند وجوہات کی بناء پراس تقریب میں شرکت نہ کر سکا۔ پاکستان بلاگ ایوارڈز2011ء میں میرا بلاگ بھی" بہترین اردو بلاگر " کی فہرست میں شامل تھا۔
نتائج کے مطابق بہترین اردو بلاگر کا ایوارڈ مجھے دیا گیا ہے۔ کاش میں ایوارڈز کی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 24, 2011 - 05:54
مصنف: سعدیہ سحر

کبھی ھم بہت کچھ کہنا چاھتے مگر ایک تصویر وہ سب کچھ کہہ دیتی ھے
نیٹ پہ کچھ تصاویر دیکھی سوچا اپنے بلاگ پہ لگا دوں ۔

موبائل چھیننے کے بہت واقعات ھوتے ھیں اپنے موبائل کی حفاظت کا یہ آئیڈیا بھی کمال کا ھے



کار چوری ھونے کا ڈر ھے چور لاک کھول لیتے ھیں یہ لاک زرا الگ ھے

...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 21, 2011 - 20:10
سال2011ء میں پاکستانی کرکٹ ٹیم نے ٹیسٹ کرکٹ میں بھی بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا۔ 2011ء میں قومی ٹیم 5 ٹیسٹ سیریز کھیلی جس میں 4 میں کامیابی حاصل کی اور ایک سریز برابر رہی۔ پاکستان نے نیوزی لینڈ کوایک صفرسےشکست دی اوراورویسٹ انڈیز سے سریزایک ایک سے برابر رہی۔ اس کے بعد زمبابوےاورسری لنکا کوایک صفر، اوربنگلہ دیش کودوصفرسے شکست دے کرچار...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 21, 2011 - 18:58
سال2011ء قومی کرکٹ کیلئے کافی کامیاب سال رہا۔ 2011ء میں گرین شرٹس نے چھ ون ڈے سیریز کھیلی اور تمام میں ریکارڈ کامیابی حاصل کی۔ اس سے قبل پاکستانی ٹیم دو بار ایک سال کے دوران پانچ پانچ ون ڈے سیریز جیت چکی ہے۔ 2011ءمیں پاکستان ٹیم نے عالمی کپ کےسیمی فائنل تک بھی رسائی حاصل کی۔شاہد آفریدی کی کپتانی میں پاکستان نے نیوزی لینڈ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 21, 2011 - 14:26
مصنف: سعدیہ سحر




کسی نے کہا انقلاب آنے والا ھے کسی نے کہا اسے انقلاب کی چاپ سنائ دے رھی ھے کسی نے کہا حالات انقلاب والے ھیں اس لیے انقلاب کو آنے سے کوئ نہیں روک سکتا -

کسی نے تبدیلی کا نعرہ لگایا کسی نے انکشاف کیا عوام جاگ گئے - نجانے عوام کون سی نیند سو رھے تھے خواب خرگوش کے مزے لے رھے تھے یا گھوڑے بیچ کر سو رھے تھے یا غفلت کی نیند سو  رھے تھے

کسی نے کہا عوام میں شعور بیدار ھو گیا ھے انھیں اپنے حقوق کا علم ھو گیا ھے اب عوام کو کوئ بے وقوف نہیں بنا سکتا - اب عوام کی حکومت آئے گی - کسی نے کہا اب سونامی آنے والا ھے

آج تحریک انصاف کے جلسے میں عجیب...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 21, 2011 - 13:25
مصنف: دریچہ
پچھلے ہفتے کی بات ہے معلوم ہوا طلباء نے انٹر کے نتیجے میں تاخیر کے خلاف مظاہرہ کیا اور راولپنڈی بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کی عمارت میں توڑپھوڑ کی اور آگ بھی لگائی۔ اسی موضوع پر گفتگو کے دوران میری رائے یہی تھی کہ یقیناً بچے بہت پریشان ہیں اور مایوس بھی لیکن توڑ پھوڑ کرنے اور پبلک پراپرٹی کو نقصان پہنچانے سے مسئلہ حل تو نہیں ہو گا۔ بلکہ ایسے نقصان کی قیمت پوری قوم کو ٹیکسوں کی صورت میں چکانا پڑتی ہے۔ ہم ہر مسئلے کا حل تشدد سے نکالنے کے عادی ہوتے جا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 21, 2011 - 11:31
پاکستانی سیاست میں آئے دن نت نئے تماشے ہوتے رہتے ہیں ۔ کل قصورمیں ہونے والے تحریک انصاف کے جلسے کے اختتام پر جلسے کے شرکاءجن میں خواتین مرد اور بچے شامل تھے جلسہ گاہ میں موجود تمام کرسیاں لے کررفو چکر ہوگئے۔ عمران خان جو آئے روز سونامی کو پکار پکار کر بلا رہے تھے آخر وہ سونامی آ ہی گیا اور تمام کرسیاں بہا لے گیا۔ کرسیاں لے کرفرار ہو جانے سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ پاکستانی لیڈران کی طرح قوم کو بھی کرسی کتنی پیاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق جلسہ گاہ میں 30 ہزار پلاسٹک کی "نئی" کرسیاں موجود تھیں۔ میرے اندازے کہ مطابق پلاسٹک کی ایک کرسی کی قیمت 400 روپے ہے۔ اگر واقعی 30...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 20, 2011 - 15:05
مصنف: کاشف نصیر
بھلا کون کہ سکتا تھا کہ بحرہ عرب کے کنارے آباد بلوچ ماہی گیروں کی  ایک چھوٹی سی بستی کی قسمت کبھی ایسے جاگے گی کہ وہ عالم اسلام کی سب سے بڑی اور دنیا کی تیسری بڑی ریاست کے دارلحکومت کا روپ ڈھال لے گی ، اسے وادی سندھ کی اقصادی شہ رگ اور […]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 20, 2011 - 04:15

جی ہاں وہ جو کہتے ہیں نا کہ افٹر شاکس، تو کراچی کے ایک مدرسہ کے خلاف سماء ٹی وی کی من گھڑت رپورٹ  کے افٹر شاکس  اب بھی محسوس کئے جارہے ہیں ۔


ایک طرف اس رپورٹ کو بہانہ بنا کر پوش علاقوں میں مدارس بند کرنے کے نوٹس  جارہی ہوئے ہیں ،جس کے سبب ہزاروں بچوں کی مفت تعلیمی سلسلے میں رکاوٹ پیداہوجائے گی۔


دوسری طرف  نشیؤں کے اصلاحی مرکز  کو بند کرنے  کے بعد جو مریض اپنے گھروں کو واپس بھجوا دئے گئے تو ان میں سے کئی ایسے ہیں کہ اب ان کے والدین کاراحت و آرام غارت ہوگیا ہے، اسلئے کہ اب انکو اپنے ان نشئی اولاد  سے جان کے خطرئے لاحق ہوئے ہیں ۔


چنانچہ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 19, 2011 - 23:15
جی ہاں وہ جو کہتے ہیں نا کہ افٹر شاکس، تو کراچی کے ایک مدرسہ کے خلاف سماء ٹی وی کی من گھڑت رپورٹ  کے افٹر شاکس  اب بھی محسوس کئے جارہے ہیں ۔ ایک طرف اس رپورٹ کو بہانہ بنا کر پوش علاقوں میں مدارس بند کرنے کے نوٹس  جارہی ہوئے ہیں ،جس کے [...]
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 19, 2011 - 16:50
المانیہ او المانیہ: جرمنی کی سیرمحمد خلیل الرحمٰنقسط نمبر ایک
ہمیں کالے پانی کی سزا ہوگئی۔ یہ وہی سزا ہے جسے منچلے پردیس کاٹنا کہتے ہیں۔ سنتے ہیں کہ قسمت والوں ہی کے مقدر میں یہ سزا ہوتی ہے۔ عرصہ ایک سال ہم نے بڑی کٹھنائیاں برداشت کیں اور یہ وقت کاٹا۔ پھر یوں ہوا کہ ہمارے لیے اس علاقے ہی کو جنت نظیر بنادیا گیا۔پھر تو پانچوں انگلیاں گھی میں تھیں اور سر کڑھائی میں۔ پھر ہمیں یہ مژدہ جاں فزاء سننے کو ملا کہ ہمیں جرمنی میں پانچ ہفتے کی تربیت یا جبری مشقت کے لیے چن لیا گیا ہے۔ ہم خوشی سے پھولے نہ سمائے۔ اپنا سفری بیگ اٹھایا اور کراچی کے لیے روانہ ہوگئے۔ گھر پہنچ کر گھر والوں کو بھی یہ خوشخبری...
زمرہ: اردو بلاگ

Pages

Subscribe to بلاگستان فیڈز