بلاگستان

تاریخ اشاعت: منگل, April 9, 2019 - 08:17
ڈی کنسٹرکشنزم یعنی ردِّ تشکیلیت کے مفہوم تک پہنچنے کی کوشش: کسی لفظ یا فقرے میں ’’معنی‘‘ فی الحقیقت کہاں واقع ہے؟ یہ مختلف مقامات پر ہوسکتاہے۔ ۱۔ لکھاری کے ذہن میں ۲۔ لکھی ہوئی تحریر میں ۳۔ یا پڑھنے والے کے ذہن میں ’’نیو کرٹسِزم‘‘ بھی ادبی تنقید میں ایک تحریک کا نام ہے۔…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, April 9, 2019 - 08:07
جدید لسانیاتی مباحث اپنی وضع میں پوسٹ ماڈرن مباحث سے ماخوذ ہیں۔ ان مباحث کی رو سے الفاظ کے تمام تر اطلاقات اور معانی معاشرتی ماحول اور نفس کی کیفیاتی تناظر کے مرہون منت ہوتے ہیں۔ اسی فلسفے کے زور پر فلسفہ لسانیات کے ماہرین الہامی کتب کی نہ صرف آفاقیت پر سوال کھڑا کرتے…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 8, 2019 - 16:04
دنیا کی ٢٣ روایتی، الہامی دینی تہذیبوں میں انسان عبد تھا۔ وہ جو اس نیلی کائنات میں خدا کے آگے سر بسجود ایک ہستی تھا جو اپنی آخرت کی اصلاح کے لیے فکر مند اور مستقبل کی حقیقی زندگی کے لیے کوشاں رہتا تھا۔ لیکن اٹھارہویں صدی میں جدیدیت کی آمد کے بعد یہ عبد…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 8, 2019 - 15:57
احمد جاوید صاحب کے محاضرہِ جدیدیت کے چیدہ چیدہ اہم نکات پیش خدمت ہیں 1۔روایت انسان،کائنات اور خدا کی تثلیث پر پیدا ہونے والے نظام شعور اور ضابطہ وجود کو کہتے ہیں۔اہل روایت انہی تین حقیقتوں کے تناظر میں اپنے معاملات کا جائزہ لیتے ہیں۔ 2۔روایت پسند وہ ہے جو اپنے ہر چھوٹے بڑے مسئلہ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 8, 2019 - 15:53
مغربی دنیا میں مذہب اور عقل کی کشمکش ماضی قریب کی انسانی تاریخ کا ایک اہم باب ہے۔ اس کشمکش نے پوری دنیا پر دور رس اثرات ڈالے ہیں۔کشمکش کا پس منظر یہ ہے کہ مغربی دنیا جس مذہب سے واقف تھی وہ خدا کا نازل کردہ نہ تھا بلکہ اس کی منحرف شکل تھی۔…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 8, 2019 - 15:31
جدید انسان صرف وہ ہے جو حسی، تجربی، سائنسی ذریعہ علم پر یقین رکھتا ہے، اور غیر حسی، غیر تجربی، غیر طبعی، مابعد الطبیعیاتی، الہامی مذہبی ذرائع سے ملنے والے علم کو جہل، ظلمت، گمراہی تصور کرتا ہے، کیوں کہ ان ذرائع سے ملنے والے علم کی تصدیق تجربہ گاہ میں آلاتِ سائنس سے نہیں…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, April 7, 2019 - 08:42

کل کو اللہ سُبحانُہُ و تعالٰی آپ سے یہ نہیں پوچھے گا کہ

تم نے کیا خواب دیکھے تھے ؟
تم کیا سوچتے تھے ؟
تمہارے منصوبے کیا تھے ؟
تم نے کتنا بچا کر جمع کیا ؟
تم کیا پرچار کرتے رہے ؟

بلکہ اللہ سُبحانُہُ و تعالٰی یہ پوچھے گا کہ
تم نے قرآن پر کتنا عمل کیا ؟
تم نے حقدار کو اُس کا حق پہنچایا ؟
تمہارا دوسروں سے سلوک کیسا تھا ؟

Having sat for many years across many tables from many of the ‘folks’ the US tortured in the global ‘war on terror,’ men like Murat Kurnaz and Mohammed al-Qatani, and having heard first-hand their stories of being...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 5, 2019 - 10:11
  منشائے کلام متکلم بتائے گا یا کوئی اور؟ Athense کے میلے میں ایک مصور کا شاہکار نصب کیا گیا اور لوگوں کی رائے مانگی گئی مصور نے انگوروں کا ایک خوشہ بنایا جسے انسانی ہاتھ نے اپنی گرفت میں لے رکھاتھا انگور اصل [Real]سے اس قدر مماثل [Similar] تھے کہ پرندے ان انگوروں پر چونچ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 5, 2019 - 08:42
بات یہ نہیں کہ دور گذشتہ میں اسلامی تہذیب کوکوئی چیلنج درپیش نہیں ہوا، لاریب کہ ہوا، ایک سے زیادہ مرتبہ ہوا، خود انھی صلیبیوں اوریہودیوں کے آباء واجداد کے ہاتھوں بھی اور تاتاریوں کے ہاتھوں بھی۔ وہ تاتاری ٹدی دَل کہ زمین کا دِل جس سے لرزتا تھا اور جن کے اسپ تازی کی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 5, 2019 - 08:25
مشہور مفکر و فلاسفر احمد جاوید صاحب کی ایک قیمتی تحریر پیش ہے، اس میں احمد صاحب نے ناصرف مغرب کی طرف سے مسلم دنیا کو درپیش بڑے چیلنجز کو تفصیلی اور عام فہم انداز میں بیان کیا ہے بلکہ انکے مقابلے کے لیے کرنے کے اہم کاموں پر بھی روشنی ڈالی ہے۔ ایڈمن **…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 5, 2019 - 08:23
نظام تعلیم کی دینی بنیاد: ہمیں جو چیزیں فوری طور پر علمی چیلنجز کا سامنا کرنے کیے لیے سیکھنی چاہیے وہ یہ اصول ہے کہ دین کا علم بھی اُسی ذہن سے بہتر طریقہ سے حاصل ہوسکتا ہے ، اور اُسی ذہنی صلاحیت کا متقاضی ہے کہ جس ذہنی صلاحیت کو کام میں لاکر کانٹ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 16:21
اسلامی دنیا میں آج اصلاً افراد کے دو ہی طبقے موجود ہیں جن کا تعلق مذہبی، عقلی اور فلسفیانہ مسائل سے ہے یعنی طبقہ علما جن میں عام طور پر دیگر مذہبی اور روایتی مستند لوگ (مثلاً صوفیا) شامل ہیں اور(دوسرا) متجددین کا وہ طبقہ جسے اب بھی مذہبیات سے دلچسپی ہے۔ لیکن اب ایک…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 16:11
پچھلے وقتوں کے سیدھے سادے ایمان والے جو بہت تھوڑی معلومات مگر بہت راسخ ایمان رکھتے تھے آج کی دنیا میں نہیں جی سکتے جہاں ہر لمحہ ان پر بے اعتقادی اور کفر کے دلائل کی چاند ماری ہوتی رہتی ہو۔ آج سیلابِ زمانہ کے سامنے اپنے عقائد پر جمے رہنے کے لیے اعتقادات کا…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 16:06
مغربی تصورات کے پیدا ہوئے فتنہ ارتداد کے خلاف ہمارا (دیندار طبقے کا) ردِ عمل اگرچہ کئی طرح کا ہے لیکن اب تک اِس کا حل مکمل بے بسی کے سوائے اور کچھ نہیں ۔اس میں وہ غیرتِ دینی کا مظاہرہ اور وہ جوش و خروش بلکل نہیں جو مذاہب کے پیدا کیے ہوئے فتنہ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 16:01
مغربی تہذیب نے جس فلسفہ اور سائنس کی آغوش میں پرورش پائی ہے وہ پانچ چھ سو سال سے دہریت‘ الحاد‘ لامذہبی اور مادہ پرستی کی طرف جا رہے ہیں۔ وہ جس تاریخ پیدا ہوئی اسی تاریخ سے مذہب کے ساتھ اس کی لڑائی شروع ہو گئی‘ بلکہ یوں کہنا چاہیے کہ مذہب کے خلاف…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 15:56
حکومت و فرمانروائی اور غلبہ و استیلا کی دو قسمیں ہیں۔ ایک ذہنی اور اخلاقی غلبہ‘ دوسرا سیاسی اور مادی غلبہ۔ پہلی قسم کا غلبہ یہ ہے کہ ایک قوم اپنی فکری قوتوں میں اتنی ترقی کر جائے کہ دوسری قومیں اسی کے افکار پر ایمان لے آئیں‘ اسی کے تخیلات‘ اسی کے معتقدات‘ اسی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 15:51
معروضیت : بعض مسلم دانش وروں کے تاثرات کی روشنی میں ایک جائزہ : اصولِ تحقیق پر جدید دور میں جو کتابیں لکھی گئی ہیں، ان میں ایک اصول Objectivism کا ذکر کثرت سے کیا جاتا ہے۔ عربی میں عام طور پر اس کے لیے ’الحياد البحثي/ العلمي‘ اور اردو میں ’غیر جانب داری‘ کا…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 13:21
مصنف ابن ابی شیبہ میں ابن محیریز سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: ”فارس نطحة أو نطحتان، ثم یفتحھا اﷲ، ولکن الروم ذات القرون، کلما ھلک قرن قام قرن آخر“(أخرجه ابن أبی شیبة فی المصنف (4: 206) والحارث بن أبی أسامة کما فی زوائد الہیثمی (2: 713) ونعیم بن حماد فی الفتن…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 13:04
ہم عالم اسلام پر اللہ کا یہ فضل ہے کہ اپنے تہذیبی وفکری وجود کا آ غاز ہم ”اسلام“ سے ہی کرتے ہیں اور اپنی تاریخی شناخت انبیاءِ کرام سے ہی وابستہ رکھتے ہیں۔ نبیِ آخر الزمان ﷺ کی بعثت سے ماقبل عرب زندگی کا مطالعہ کرتے ہیں تو صرف اور صرف ’زمانۂ جاہلیت‘ کے…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 12:53
کوئی اگر سوال کرے کہ وہ کونسی قوم ہے جس کے ساتھ پچھلے چودہ سو سال سے عالمِ اسلام کی مسلسل جنگ ہو رہی ہے، بغیر اس کے کہ اس جنگ میں کوئی ایک دن کا بھی وقفہ آپایا ہو، تو اس کے جواب میں ’روم‘ کے علاوہ شاید آپ کسی بھی قوم کا نام…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 12:32
دنیا میں انسان کی زندگی کے لیے جو نظام نامہ بھی بنایا جائے گا اس کی ابتدا لامحالہ ما بعد الطبیعی یا الٰہیاتی مسائل سے ہو گی۔ زندگی کی کوئی اسکیم بن نہیں سکتی جب تک کہ انسان کے متعلق اور اس کی کائنات کے متعلق جس میں انسان رہتا ہے واضح اور متعین تصور…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 12:20
مغربی ذرائع ابلاغ اور مختلف فورموں کے ذریعے سے یہ تاثر پیدا کیا جاتا ہے کہ اسلام اپنے اصل کے اعتبار سے بس کچھ مجرد قسم کی پابندیوں اور رسوم و رواج کا مجموعہ ہے اور موجودہ نظریاتی دور میں اس کا کوئی کردار اس کے علاوہ نہیں ہے کہ یہ مغرب کی پھیلائی ہوئی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 11:40
مغربی تہذیب پر ہم خواہ کتنی ہی تنقید کیوں نہ کریں مگر حقیقت یہ ہے کہ اس کے سلسلے میں ہمارے دلوں میں ایک چور پایا جاتا ہے اور چور چوری سے جاتا ہے مگر ہیرا پھیری سے نہیں جاتا۔ چناں چہ یہ چور ہمارے خیالات اور عمل کے ایوانوں اور گلی کوچوں میں اکثر…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 11:17
ہمارے ایک دوست نے گزشتہ دنوں یہ سوال اٹھایا کہ کیا اہل مغرب نے اپنے علم، معاشرے اور تہذیب کے بنیادی اصول قرآن مجید سے حاصل نہیں کیے؟ ہم اپنے زوال کی وجہ سے جس ذمہ داری کو فراموش کر چکے ہیں، اہل مغرب نے اسے پورا کر دکھایا؟ یہ سوال دراصل جواب ہے۔ ہمارے…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 4, 2019 - 11:00
جس طرح پرانے زمانے کے بعض لوگوں پر جن آتے تھے اسی طرح ہمارے زمانے کے اکثر لوگوں پر الفاظ آتے ہیں۔ بالکل جنوں ہی کی طرح وہ ہمارے سروں پر مسلط ہو جاتے ہیں اور ان کے اثر میں ہم نہ جانے کیا کچھ کہتے رہتے ہیں جس کی ہمیں کچھ خبر نہیں ہوتی۔…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 1, 2019 - 17:25
مصنف: شعیب صفدر


ہمارے ایک دوست جو اب ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل ہو گئے ہیں پہلے ہماری طرح اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ پبلک پراسیکیوٹر (...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 1, 2019 - 09:52
شفیق الرحمن کی نیلی جھیل کا طلسم میرے اوپر بہت دیر تک رہا۔جھیل کی دوسری جانب کیا ہے؟ وہاں پریوں کے ڈیڑے ہیں۔بونے وہاں رہتے ہیں یا سمرفس وہاں آباد ہیں ۔جھیل کی دوسری جانب ایلس ان ونڈر لینڈ آباد تھا۔یا سنہرے بالوں والی شہزادی اپنے شہزادے کے انتظار میں بہتی کرنوں کو ڈھونڈ رہی تھی یا پری تھی کوئی ، کسی دیو کی قید میں ،کسی بہادر لکڑہارے کے بیٹے کے انتظار میں ۔ وہ کب آئے گا اور اسے رہائی دلائے گا۔ نیلی جھیل کی پراسراریت ایک رومانوی معنویت کے ساتھ ہمیشہ میرے ساتھ رہی ہے۔کسی ان دیکھی منزلوں کا متلاشی، کسی دیو ملائی حقیقتوں کا منتظر۔کبھی ٹی وی پر کسی انگلش فلم میں دکھائی دینے والے معصوم چہرے کے ذہن پر...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 30, 2019 - 15:00
مصنف: نوک جوک

آپ کسی ادارے میں کام کر رہے ہیں، اور آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔
ترقی کرنا چاہتے ہیں۔
تو اس کے لیے آپ کو ایک follower کے رول سے آگے بڑھ کر ایک leader کا رول اپنانا ہو گا۔
لیڈر بننے کے لیے آپ کو 12 خصوصیات اپنے اندر پیدا کرنا ہوں گی۔
1.لیڈر جو ہوتا ہے، وہ بہادر ہوتا ہے۔ مسائل سے گھبراتا نہیں ہے۔ اپنا حوصلہ قائم رکھتا ہے، اور اپنے ساتھ کام کرنے والوں کا حوصلہ بھی بڑھاتا ہے۔ فیصلے کرنے سے ڈرتا نہیں ہے۔
2.اچھا لیڈر اپنے کام کو اچھے سے جانتا ہے۔ جو کام کرتا ہے اس پر اسے مہارت ہوتی ہے۔
3.چوں کہ اچھا لیڈر اپنے کام کو جانتا ہے، اسی وجہ سے وہ پر اعتماد بھی ہوتا ہے۔...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, March 29, 2019 - 06:23
آرزوں کی خاک جب لالچ کی دھول میں اڑتی ہے تو غرض و مفاد کی کنکریاں سہانے خوابوں کی نیل گیں روشنی کو دھندلا دیتی ہے۔ ہر چہرے پہ ایک ہی عینک سے منظر صاف دکھائی نہیں دیتے جو نظر سے دھندلائے گئے ہوں۔ ایک ہی عینک سے ایک اخبار کو بہت سے لوگ پڑھ لیتے ہیں۔ عقل انسان پہاڑوں سے لڑھکتے پتھروں کی مثل پستیوں میں گر گر ٹوٹ پھوٹ جاتے ہیں۔ بلندیوں کو چھونے والے پہاڑ اور پرندے مجبوری سے پستیوں میں گرتے ہیں یا اترتے ہیں۔ خواہشیں اور آرزوئیں منزل تک پہنچنے کے مقصد نہیں ہوتے۔ بادل بننے کی خواہش دل کے ارمان ہوتے ہیں جو بادل بن کر برسنے سے محروم رہ جائے تو گڑگڑاتے چلاتے ہیں۔ زندگی صرف پانے کا نام نہیں ہے دینا بھی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, March 28, 2019 - 08:20

انسان اپنے تئیں عقلِ کُل سمجھتا ہے
لیکن
تجربہ بتاتا ہے کہ چیوٹیاں بھی انسان سے زیادہ سمجھ بوجھ رکھتی ہیں
...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 27, 2019 - 17:05

اگر کوئی نوجوان ہمارے ملک میں الیکٹریشن بننا چاہے، کار مکینک بننا چاہے، پلمبر بننا چاہے یا اسی طرح کے کسی اور شعبے میں آنا چاہے تو اسے مارکیٹ میں بیٹھے ہوئے کسی روایتی استاد سے یہ کام سیکھنا پڑے گا۔ ویسے بھی اس طرح کے تمام شعبوں میں زیادہ تر وہی نوجوان آتے ہیں جو یا تو میٹرک میں فیل ہوجاتے ہیں یا پھر ساتویں آٹھویں کلاس سے ہی بھاگ کر مطالبہ کرتے ہیں کہ انہیں کوئی کام سکھا دیا جائے۔ لہٰذا ان نوجوانوں کو تعلیمی میدان میں نااہل اور بھگوڑا تصور کرتے ہوئے روایتی استاد کی دکان پر چھوڑ دیا جاتا ہے

۔
دکان پر پہلے چار چھ مہینے اس سے صفائی کروائی جاتی ہے، پھر اگلے چھ مہینے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, March 25, 2019 - 11:42
ایک نئے خیال نے بہت دنوں سے ذہن میں کھلبلی مچا رکھی تھی کہ کچھ ایسا نیا ہونا چاہیئے جو اچھوتا ہو ، منفرد ہو اور مکمل بھی ہو۔ پھر وہی ہوا اچانک ایک نیا آئیڈیا دماغ میں عود کر آیا۔ سفید کاغذ پر چند آڑھی ترچھی لکیریں بنانے کے بعد مائیکروسوفٹ ایکسل پر رکھا تو وہ بنتا ہی چلا گیا۔چھ سات ماہ سے جسے پڑھا سیکھا سمجھا اور بنایا یہ اسی کا تسلسل ہےیعنی Math magic ۔ لیکن اس بار معاملہ زرا ہٹ کے ہے کیونکہ یہ ایک انوکھے، منفرد اور اچھوتے خیال کا شاخسانہ ہے۔یہ   Double math magic  کا آئیڈیا ہے جو بنتا تو ایک ہی  Pattern  سے ہے  لیکن دونوں   Math magic  الگ الگ بھی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, March 25, 2019 - 10:39
maharaja-kishen-pershad-life-history
مہاراجہ سر کشن پرشاد
(پ: یکم/جنوری 1864 ، م:13/مئی 1940)
سابق نظام شاہی ریاست حیدرآباد (دکن) میں دو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, March 25, 2019 - 09:59

یہ داستان مغلوں کے ہندوستان آنے سے کچھ سال پہلے کی ہے۔ضلع سرگودھا میں ایک قصبہ تخت ہزارہ تھا۔ جس کے چوہدری موجو کے آٹھ بیٹے تھے جن میں سے سب سے چھوٹا رانجھا تھا۔ کام کا نا کاج کا بس بانسری خوب بجاتا تھا۔لمبے لمبےبال، سوہنا گھبرو تھا ۔بھائیوں بھابیوں نے کام نہ کرنے پر پہلے پہل تو باتیں سنائیں  ۔ لیکن پھر تنگ آکر زمین کا بٹوارہ کرلیا اور سب سے نکمی زمین رانجھے کو دے دی۔ نازک اندام  رانجھا۔ مشقت اس کے بس کاکام نہیں تھا اورجلد ہی مایوس ہوگیا
ادھر جھنگ شہر میں سیال قوم رہتی تھی ۔ ان کے کے سردار مہر چوچک کی بیٹی کا  نام ہیر تھا جس کے حسن کی شہرت دور دور پھیلی ہوئی تھی۔یہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 23, 2019 - 15:00
مصنف: نوک جوک

آپ بہت ساری دولت کمانا چاہتے ہیں نا۔۔۔ یقین کیجیے آپ کر سکتے ہیں۔
دولت کمانا تو میں نے اس لیے کہا کہ لوگوں کو یہ موضوع اچھا لگتا ہے۔۔
لیکن اس کے علاوہ بھی، آپ کچھ بھی حاصل کرنا چاہتے ہیں ، تو آپ کر سکتے ہیں۔۔
اس کے لیے کچھ زیادہ نہیں کرنا۔ بس آٹھ قدم بڑھانے ہیں۔
1.سب سے پہلے تو اپنی سوچ کو وسیع کر لیں۔ بہت سے لوگوں کے دل میں خیال آتا ہے کہ وہ بہت ساری دولت کمائیں، تو اگلے ہی لمحے وہ خودسے کہتے ہیں، چھوڑو یار، یہ کیسے ممکن ہے۔
اس سوچ سے چھٹکارا پائیں۔ اپنی امیجی نیشن کو پابند نہ کریں۔ خود سے کہیں کہ جو بھی آپ سوچ رہے ہیں وہ ممکن ہو سکتا ہے۔
2.اور یہی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 23, 2019 - 07:08

flag-1بروز ہفتہ 12 صفر 1359ھ اور گریگورین
ہمارے وطن پاکستان میں 23 مارچ کو یومِ اِسلامی جمہوریہ پاکستان منایا جاتا ہے
جنتری کے مطابق 23 مارچ 1940ء لاہور میں بادشاہی مسجد اور شاہی قلعہ کی شمال کی طرف اُس وقت کے منٹو پارک میں جو پاکستان بننے کے بعد علامہ اقبال پارک کہلایا مسلمانانِ ہِند کے نمائندوں نے ایک مُتفِقہ قرارداد منظور کی جس کا عنوان” قراردادِ مقاصد“ تھا لیکن وہ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 23, 2019 - 01:13
مصنف: عامر منیر
ابو آج کل کام پر نہیں جا رہے تھے ، پہلے جب ہم سکول جانے کے لئے تیار ہو رہے ہوتے تھے تو وہ بھی اٹھ کر شیو کر چکے ہوتے تھے اور جیسے ہی وہ ناشتے کے لئے باورچی خانے میں امی کے پاس آ کر چوکی پر بیٹھتے، میں چھوٹے بھائی کو اشارہ کرتا جو ان سے لپٹ کر چونی یا اٹھنی کے دو سکے نکلوا لینے میں عموماً کامیاب رہتا۔ لیکن ہفتہ بھر سے یہ معمول چل رہا تھا کہ جب ہم سکول جانے کی تیاری کر رہے ہوتے تو ابو ابھی تک سو رہے ہوتے تھے، ہمارے جانے کے بعد کسی وقت وہ اٹھ کر باہر نکل جاتے اور رات گئے اس وقت واپس آتے جب ہم سو چکے ہوتے۔ پہلے دن ہم نے ارادہ کیا کہ ابو کو جگا کر ان سے اپنی چونی یا اٹھنی لی جائے، لیکن امی نے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, March 22, 2019 - 12:00
مصنف: نوک جوک

برصغیر پر جب انگریز قابض تھا۔ تو وہاں ریڈیو اسٹیشن کا ڈول ڈالا گیا۔سید ذوالفقارعلی بخاری اس وقت ریڈیو سے وابستہ ہوئے۔ اور براڈکاسٹنگ میں بہت نام کمایا۔یہاں تک کہ پاکستان بننے کے بعد یہاں ریڈیو پاکستان کے ڈائیریکٹر جنرل تک ترقی پائی۔
یہ قصہ ذوالفقار بخاری صاحب کی سرگزشت سے لیا گیا ہے۔۔اور اس وقت کا ہے، جب دہلی ریڈیو اسٹیشن کے لیے موسیقار منتخب کیے جانے تھے۔
سید زوالفقار بخاری اپنی سرگزشت میں لکھتے ہیں۔ کہ ان کا خیال تھا۔۔ جب یہ شہرت ہو گی کہ دہلی میں ریڈیو اسٹیشن کھل رہا ہے اور موسیقاروں کو اجرت پر پروگرام ملیں گے، تو میرے دفتر کے سامنے گانے والوں اور گانے والیوں کے ٹھٹھ کے ٹھٹھ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, March 18, 2019 - 10:20

وہم ایک ایسی بیماری بلکہ وائرس یا الرجی ہے جو آدمی کے ذہن پر قبضہ کر کے اُس کی سوچ کو منفی بنا دیتی ہے جس کے نتیجہ میں آدمی بہت نقصان اُٹھا سکتا ہے ۔ چین میں ابھی بھی قدیم کہانیاں موجود ہیں جو ہمارے ہاں مفقود ہو چکی ہیں ۔ یہ کہانیاں دانشوروں نے انسانوں کی اصلاح کیلئے بنائیں ۔ وہم کے سلسلہ کی ایک چینی کہانی کا ترجمہ ملاحظہ فرمایئے

ایک شخص کی کلہاڑی کھو گئی ۔ اُس کے دِل میں شک بیٹھ گیا کہ کلہاڑی اُس کے ہمسائے کے بیٹے نے چُرائی ہے
اس نے ہمسائے کے بیٹے کا بغور جائزہ لیا تو اُس کی چال بالکل چوروں جیسی لگی
اُس نے لڑکے کے چہرے کے تاءثرات دیکھے ۔ تو ہُو بہُو چوروں جیسے تھے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, March 17, 2019 - 16:06


ترتیب و تالیف:عبدالرشیدخان (ورجینیا امریکہ)
بے شک سب سے پہلی عبادت گاہ جو انسانوں کے لیے تعمیر ہوئی وہ وہی ہے جو مکہ میں واقع ہے اس کو خیر و برکت دی گئی تھی اور تمام جہان والوں کے لیے مرکز ہدایت بنایا گیا تھا (96) اس میں کھلی ہوئی نشانیاں ہیں، ابراہیمؑ کا مقام عبادت ہے، اوراس کا حال یہ ہے کہ جو اِس میں داخل ہوا مامون ہو گیا لوگوں پر اللہ کا یہ حق ہے کہ جو اس گھر تک پہنچنے کی استطاعت رکھتا ہو وہ اس کا حج کرے، اور جو کوئی اس حکم کی پیروی سے انکار کرے تو اسے معلوم ہو جانا چاہیے کہ اللہ تمام د نیا والوں سے بے نیاز ہے (97) (آلعمران 3:96,97)
پہلا دن 8 ذوالحجہ:- بعد نماز...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, March 17, 2019 - 16:02


ڈاکٹر محمد عقیل
نیوزی لینڈ کے سانحے پر غیر مسلموں کے دو کردار سامنے آئے۔ ایک کردار اس دہشت گرد کا ہے جس نے نسلی اور مذہبی بنیادوں پر معصوم مسلمانوں کا بے رحمانہ قتل عام کیا۔ دوسرا کردار نیوزی کی لینڈ کی وزیر اعظم اور

عوام کا ہے جنہوں نے شہداء کے لواحقین کو سینے سے لگایا ، ان کے لیے شمعیں روشن کیں اور ان کے غم میں آنسو بہا کر رنگ ، نسل اور مذہب سے بالاتر ہوکر اعلی اخلاقی اقدار کا ثبوت دیا۔ یہ ایک ہی نسل کے دو متضاد کردار ہیں۔ ایک نفرت ، تشدد، نسلی تعصب اور بے رحمی کی علامت۔ دوسرا محبت، امن، عدم تعصب اور رحمدلی کا علمبردار۔ اس سانحے کے رد عمل میں...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, March 15, 2019 - 11:42
alam-panah-urdu-novel-rafia-m
ناول نام : عالم پناہ
مصنفہ: رفیعہ منظور الامین
صفحات : 244
پی۔ڈی۔ایف فائل سائز: 12 ایم۔بی
ڈاؤن لوڈ لنک: نیچے دیا گیا ہے۔
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, March 14, 2019 - 17:50
مصنف: م بلال م
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 13, 2019 - 14:36

پچھلے پندرہ دن جس کتاب کے نشے میں گزارے ہیں اس پر تفصیلی تبصرہ نہ لکھا گیا تو شائد اس کتاب سے زیادتی ہوگی
یہ صرف ایک کتاب ہی نہیں بلکہ ایک ڈاکومیٹری ہے جو آپ کواپنے ساتھ سفر کرواتی ہےرچرڈ برٹن کا لکھا ہوا یہ ایک سفرحج ہے۔جو اٹھارہ سو ترپن میں مسلمانوں کے مقدس جگہوں کی تفصیلات حاصل کرنے کیلئے رائل سوسائٹی آف انگلینڈ کے تعاون سے مسلمان کے بھیس میں کیا گیا اور پھر  سارے سفر کی روداد ایک کتاب کی شکل میں ترتیب دی جو اٹھارہ سو چھپن میں شائع ہوئی۔کتاب میں صرف حجاز کے حوالے سے ہی معلومات نہیں دی گئیں بلکہ مختلف قوموں،عمارتوں، بیماریوں، رسموں، جغرافیائی   خدوخال کے حوالے سے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 13, 2019 - 14:35



جوڑوں کا درد محسوس کرنا ہوتو اس کیلئے سب سے بہترین جگہ ہمارے تاریخی مقامات اور پبلک پارکس ہیں ۔جہاں بھی نظر ڈالو ،اپنے درد کی تصویر سجائے کسی نہ کسی کونے، کسی راہداری کے پاس، آپ کو کوئی جوڑا بیٹھا ضرور نظر آئے گا۔اور میرے جیسا ٹورسٹ خواہ مخواہ احساس شرمندگی کاشکار ہوجاتا ہے کہ شائد ان کی خلوت میں مداخلت کرکے کسی جرم کامرتکب ہورھا ہوں۔ کٹاس میں بھی ایک مندر کے اندرشہد کی مکھیوں سے ڈرتے ڈرتے گھسا تو ایک جوڑے کی خلوت میں مداخت پر کئی دن تک شرمندگی کا احساس ہوتا رھا تھا۔خیر جوڑوں کے درد پر پھر کبھی بات کریں گے پہلے آتے ہیں آج کے موضوع کی طرف...ایک شالیمار باغ وہ ہے جس کو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 13, 2019 - 14:18

میں اسوقت ٹکسالی گیٹ کے قریب طبلہ بازار میں کھڑا ہوں.اس سے کچھ آگے جوتوں کی سب سے بڑی مارکیٹ ہے۔ میرے ارد گرد بے شمار دکانیں موجود ہیں جن میں موسیقی کے آلات بنانے والے ہنر بند موجود ہیں جو موسیقی کے ناصرف مختلف قسم کے آلات بناتے ہیں بلکہ یہیں سے دوسرے شہروں کو بھی بھیجے جاتے ہیں۔
اس گیٹ کے ساتھ وہ مشہور بازار ہے جس کو شاہی بازار کہتے ہیں جس کو راجہ رنجیت سنگھ کے ایک وزیر اعظم کے بیٹے ہیرا سنگھ کی حویلی کی وجہ سے ہیرا منڈی بھی کہتے ہیں ۔یہ بازار کب سے قائم ہے؟ اس کے بارے میں اگرچہ تاریخ خاموش ہے لیکن روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ مغلوں نے جب  لاہور کو اہمیت دینا شروع کی تو تفریح...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 13, 2019 - 11:07

ایک لمحے کے تعاقب میں

کچھ لمحے لافانی ہوتے ہیں۔ فردوسی لمحے ۔ وہ لمحے جن میں انسان قید ہوجاتا ہے ۔وہ لمحے جو تنہائی میں بھی مسرت کا سامان مہیا کرتے ہیں ۔وہ لمحے جو پروں کے بغیر اڑان بھرنے پر مجبور کردیتے ہیں ۔ایک انوکھی روحانیت، ایک انوکھی راحت۔وہ لمحہ بھی کچھ ایسا ہی تھا جس نے مجھے اپنی آغوش میں سمیٹ لیا۔ جس سے رہائی کا سوچ کر روح کانپ جاتی ہے۔
فطرت کے نظام میں کبھی ترتیب نہیں ہوتی لیکں اس ترتیب میں ایک حسن ہوتا ہے۔اور اس حسن کی تلاش میں ابوزر کے ہمراہ ایک بار پھر محو سفر تھا ۔کلرکہار انٹر چینج سے اتر کر چکوال روڈ پر سفر شروع کیا تو چند کلومیٹر کے فاصلے پر جلیبی چوک سے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, March 12, 2019 - 15:00
مصنف: نوک جوک

ایڈون سی بارنس ایک غریب سا آدمی تھا، لیکن تھامس ایڈیسن کا بزنس ایسو سی ایٹ ، یا پارٹنر بننا چاہتا تھا۔۔
جی، اسی تھامس ایڈیسن کا، جس نے لائٹ بلب سمیت دو ہزار سے زیادہ چیزیں ایجادکیں۔
اور جس وقت ایڈون کے دل میں یہ خواہش پیدا ہوئی، اس وقت ان کے پاس کوئی وسائل نہ تھے۔
اتنی رقم بھی نہ تھی کہ ایڈیسن کے پاس جانے کے لیے ٹرین کی ٹکٹ خریدی جا سکتی۔
عام طور پر ہم لوگوں کو کوئی چیز مشکل لگے تو ہم کوشش ہی چھوڑ دیتے ہیں۔
اکثر دل میں کوئی خواہش پیدا ہوتی ہے، تو خود سے کہتے ہیں۔۔چھوڑو یار، اپنے پاس تو اتنے وسائل ہی نہیں۔
یعنی وسائل پیدا کرنے کی کوشش کرنے کے بجائے، مشکل...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, March 12, 2019 - 10:09

کچھ روز قبل محترم چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ایک قتل کے ملزم کی رہائی کا حکم دیا جو 10 سال سے ایک غلط شناخت پریڈ کے باعث جیل میں تھا
جس کے بیٹے کے قتل میں وہ گرفتار تھا اس نے کہا ” آخر میں اپنے بیٹے کے قاتل کو کہاں تلاش کروں ؟ میں اب تک 3 کروڑ روپیہ خرچ کر چکا ہوں“۔

یہ خبر سُن کر میرا دماغ ماضی کو کُریدنے لگا اور کچھ ایسی ہی واقعات یاد داشت پر اُبھرنے لگے جو اخبارات کی وجہ سے مشہور ہوئے تھے

یہ واقعہ 1985ء کی دہائی کا ہے کہ ایک قیدی کو جب 27 سال بعد سینٹرل جیل کراچی سے رہا کیا گیا تو اس نے Jailer سے کہا
”صاحب ۔ مجھے یہاں رکھا کیوں گیا تھا ؟ میں کہاں جاؤں گا ؟...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, March 10, 2019 - 19:53


عورتوں کا عالمی دن
ڈاکٹر محمد عقیل
عورتوں کے عالمی دن پر بعض خواتین کی جانب سے نامناسب پوسٹرز کی تشہیر نے کئی بحثوں کو جنم دیا ہے۔ پہلی بات یہ ہے کہ ان پوسٹرز کے ذریعے تشہیر کرنے والی خواتین اس معاشرے کا ایک فی صد حصہ بھی نہیں۔ اس لیے ان کے پوسٹرز کو عام خواتین کی اکثریت کا مطالبہ سمجھنا ایک غلطی ہے ۔ اس لیے ان کے مطالبات کو زیر بحث لانا اور ان کا جواب دینا ایک لایعنی بحث ہے ۔ دوسری بات یہ کہ ہماری خواتین کے مسائل مغربی معاشرے سے بہت مختلف ہیں۔ اس لیے تحریک نسواں کے علمبرداروں کو مغرب کی بجائے پاکستان کے تناظر میں خواتین کے مسائل کو دیکھنا ضروری ہے۔
اگر ہم...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, March 10, 2019 - 17:17
مصنف: نوائے نے
مجھے یاد پڑتا ہے کہ ابا جی بچپن لڑکپن میں ناراض ہوتے تو بعض اوقات دنوں تک وہ غصے اور میں ڈر سے بات نہ کرتا ، لیکن باجی (والدہ) ناراض ہو جاتیں تو نیند نہ آتی، معافی تلافی کر کے ہی سکون آتا ، تو بھائی ہمارے تو دل پہ عورت کا سکہ چلتا ہے، یہ موزوں والی بیبیاں بے چاری اپنے تئیں جس "جہاد فیمینزم" پہ نکلی ہیں، یہ قطعی کوئی نئی بات نہیں ، بس بات اتنی سی ہے کہ الگ طرح کی زبان میں کمپوز کی گئی یک سطری عبارتیں انہیں "عام عورت" کے طور پہ پیش کر کے ہمارے معاشرتی دھارے میں دھارے کے رخ بہتے عامی کو مزید کنفیوز اور مائل بہ "مساوات" کرنے کی ایک سنجیدہ کوشش ہے۔ وہ دوست جو ان "مجاہدات" اور ان کے ہینڈلرز کو اس...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, March 8, 2019 - 16:23
مصنف: م بلال م
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, March 7, 2019 - 12:01


زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, March 6, 2019 - 15:26
حضرتِ انسان اور ہم یعنی بُلبُلِ بے تاب بقلم خود​
نہ جانے اس کے پیچھے کیا راز ہے لیکن سچی بات یہ ہے کہ حضرت انسان کو ہم سے شروع سے ہی کچھ پرخاش سی ہے۔ سو اس نے ہمیشہ اس پرخاش پر لبیک کہا اور ہماری چونچ میں دم کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیا ۔ یعنی خود اشرف المخلوقات ہو کر بھی ہم سے چونچ لڑانے پر تُلا رہا اور یہ بھی نہ سوچا کہ بھلا میں انس کہاں، جانور غریب کہاں۔۔! انسانوں میں بھی بالخصوص شعراء ہم سے ٹھیک ٹھاک بیر رکھا کرتے ہیں۔

یہی دیکھ لیجے کہ ہماری اوائل عمری میں ہی انسان نے ہمیں مشقِ ستم بنا لیا تھا۔ ہوا یوں کہ ایک سبز بخت نے انسانوں کے بچوں کے لئے نظم لکھنے کے نام پر...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, March 5, 2019 - 18:00
مصنف: نوک جوک

اگر آپ ایک hard working انسان ہیں۔آپ کو محنت وغیرہ کرنے کا بہت شوق ہے۔تو براہ مہربانی، یہ تحریر نہ پڑھیں۔
کیوں کہ میں ان محنتی لوگوں سے بہت تنگ ہوں۔
بندہ صبح صبح دہی کھا کر دفتر جاتا ہے۔۔ تو وہاں جاتے ہی کام تو نہیں شروع کر دیتا نا۔ پہلے سارے دفتر والوں سے حال احوال لیتا ہے، گپ شپ لگاتا ہے، جو کولیگ موجود نہ ہو اس کی غیبت کرتا ہے۔پھر ناشتہ منگواتا ہے، ناشتہ کرتاہے۔۔ پھرجا کر موڈ بنے تو کام شروع کرتا ہے۔
لیکن یہ لوگ وقت پر دفتر پہنچتے ہی کام بھی شروع کر دیتے ہیں۔ کم بخت ناشتہ بھی گھر سے کر کے آتے ہیں۔تو غصہ نہ آئے تو اور کیا آئے۔
پھر اس قسم کے لوگ خواہ مخواہ کی اہمیت...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, March 4, 2019 - 14:50
غزل

ایک تاریخ مقرر پہ تو ہر ماہ ملے
جیسے دفتر میں کسی شخص کو تنخواہ ملے

رنگ اکھڑ جائے تو ظاہر ہو پلستر کی نمی
قہقہہ کھود کے دیکھو تو تمہیں آہ ملے

جمع تھے رات مرے گھر ترے ٹھکرائے ہوئے
ایک درگاہ پہ سب راندۂ درگاہ ملے

میں تو اک عام سپاہی تھا حفاظت کے لئے
شاہ زادی یہ ترا حق تھا تجھے شاہ ملے

ایک اداسی کے جزیرے پہ ہوں اشکوں میں گھرا
میں نکل جاؤں اگر خشک گزر گاہ ملے

اک ملاقات کے ٹلنے کی خبر ایسے لگی
جیسے مزدور کو ہڑتال کی افواہ ملے

گھر پہنچنے کی نہ جلدی نہ تمنا ہے کوئی
جس نے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 2, 2019 - 18:39

یہ بہت سال پہلے کی بات ہے ۔جولائی کا مہینہ تھا اور ایک سنہری شام مون سون نے لاہور میں جل تھل کر دی تھی۔میں اپنے ایک دوست کے ساتھ موٹر سائکل پر نکلا تو گھومتے گھماتے دو موریہ پل کے قریب سے گزر کر شاہ عالمی طرف جارہے تھے تو ایک جگہ  چائے پینے کیلئے رکے تو باتوں باتوں میں پتا چلا کہ قریب ہی دھلی گیٹ ہے اور اس کے اندر مسجد وزیر خان ہے۔اگرچہ شام ہوچکی تھی لیکن ابھی واپسی کا موڈ نہیں تھا اس لیئے چائے ختم کرکے دھلی دروازہ عبور کرکے مسجد تک پہنچے تو پتا چلاکہ ٹرانسفارمر جل چکا ہے اس لیئے مسجد کا اندھیرا چند مصنوعی لائٹوں کے ساتھ دور کیا جارھا ہے۔اوریوں مسجد کو دیکھنے کی حسرت لیئے واپس لوٹ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 2, 2019 - 17:14
مصنف: نوک جوک

آپ نے کوشش کی۔۔ اور ناکام ہو گئے۔۔ تو اس کی بھی ایک وجہ تھی۔
بلکہ ایک بھی نہیں۔۔ اس کی تیرہ وجوہات تھیں۔۔
جی۔آپ میں، اور شاندار کامیابی کے راستے میں تیرہ وجوہات کھڑی ہوتی ہیں۔
ناکامی کی وجہ نمبر ایک۔ ۔ سب سے پہلے تو ہمیں پتہ ہی نہیں ہوتا، کہ ہم کرنا کیا چاہتے ہیں۔ کوئی باقاعدہ مقصد نہیں ہوتا۔ لائی لگ ہوتے ہیں۔ جو دوسروں کو کرتے دیکھتے ہیں، خود بھی وہی کرنے لگتے ہیں۔ اور پھر جلد ہی دل چھوڑ دیتے ہیں۔ ہمت ہار دیتے ہیں۔ چوں کہ پتہ ہی نہیں ہوتا کہ زندگی میں کرنا کیا ہے۔ اس لیے کوئی بھی کام دل سے نہیں کرتے۔
نمبر دو۔۔ لگن ہی نہیں ہوتی۔۔ نہ آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔ نہ آگے بڑھنے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, March 2, 2019 - 09:18

گِنَیس بُک آف ریکارڈ (Guinness book of world record) کے مطابق کیپٹن شہناز لغاری دُنیا کی پہلی با حجاب خاتون پائیلٹ ہیں ۔ کیپٹن شہناز لغاری حقوقِ انسانی کی علمبردار ہیں ۔ اُنہوں نے نادار لوگوں کیلئے مُفت تعلیم اور سلائی مرکز کھولا ہوا ہے ۔ کیٹن شہناز لغاری اکیلی بلا شرکتِ غیر بڑا ہوائی جہاز اُڑاتی ہیں جبکہ مکمل طور پر حجاب میں ہوتی ہیں
شہناز لغاری نے 2013ء کے عام انتخابات میں بطور آزاد اُمید وار این اے 122 سے حصہ لیا تھا ۔ ان کا انتخابی نشان گائے تھا ...

زمرہ: اردو بلاگ

Pages

Subscribe to بلاگستان فیڈز