بلاگستان

تاریخ اشاعت: اتوار, May 6, 2018 - 14:21


السلام علیکم
اسرا کے زیراہتمام کل میں نے ایک لیکچر دیا کیا جو دین کے صحیح تصور کے حوالے سے تھا۔ جس میں یہ بتایا گیا کہ دین اللہ نے صرف وحی کے ساتھ ساتھ فطرت کے ذریعے بھی دیا ہے اور یہی وہ یونی ورسل دین ہے جس کا علم ہر انسان کے پاس موجود ہے۔ اس لیکچر کی ریکارڈنگ بھی ہوئی ہے جو دلچسپی رکھنے والے لوگوں میں شئیر کردی جائے گی۔
اسرا ایک آن لائن تعلیم و تربیت کا ادارہ ہے جس کے تحت مذہبی و سماجی کورسز کرائے

جاتے ہیں۔ ۔ الحمد للہ ، اب اسرا نے آن لائن دنیا سے فزیکل گراؤنڈ میں قدم رکھ لیا ہے ۔
ہمارا ارادہ ہے کہ اسرا کی فزیکل سرگرمیوں کو باقاعدہ شکل دی جائے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, May 5, 2018 - 13:15
<picture> <!-- Default low resolution image --> <source srcset="small.jpg" type="image/jpg"> <!-- Medium resolution image --> <source srcset="medium.jpg" media="(min-width: 768px)"> <!--High resolution Image --> <source srcset="large.jpg" media="(min-width: 1200px)"> <!-- Fallback image incase the picture element is not supported --> <img src="small.jpg" alt="description of image"> </picture>

The post ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, May 5, 2018 - 09:35

دوسروں کو موردِ الزام ٹھہرانا غلط جائے پناہ ہے

کسی بھی خرابی کی وجہ معلوم کرنے کیلئے آدمی کو اپنے اندر جھانکنا چاہیئے اور اسے دُور کرنا چاہیئے

علامہ محمد اقبال نے کہا ہے
عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی
یہ خاکی اپنی فطرت میں نہ نُوری ہے نہ ناری ہے

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, May 4, 2018 - 16:25

’’میں نے جس گھرانے میں آنکھ کھولی، وہاں حجاب لباس کا حصہ سمجھا جاتا ہے۔ سو شروع ہی سے حجاب لیا۔ ہاں! شعوری طور پر حجاب کی سمجھ جب آئی جب خود قرآن کو اپنی آنکھوں سے پڑھنا ، سمجھنا اور پڑھانا شروع کیا۔ ہم جس ماحول میں پروان چڑھے، وہاں حیا اور حجاب ہماری […]

The post جب جنرل مشرف نے مجھے باحجاب دیکھا appeared first on نوک قلم.

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, May 4, 2018 - 12:59

یہ سڑک کے کنارے کھڑا سترہ اٹھارہ برس کا چھلی والا تھا ہم نے بھی چھلی لینے کے ارادے سے گاڑی روکی اک چھلی بنانے کا کہہ شیشہ اوپر کرنے ہی لگے تھے کہ اس کے ساتھ دو اسی عمر کے لڑکے ( ایک پینٹ بابو تھا اور دوسرا اس جیسا ہی مگر اس سے […]

The post چھلی والے تیرے ایمان کو سلام : اسریٰ غوری appeared first on نوک قلم.

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, May 4, 2018 - 11:05

کچے آموں (کیریوں ) کا اچار ابھی کل ہی ختم ہوا تو آج صبح اور لادی گئیں کہ اور بنایا جائے یہ کچھ بڑی تھی پچھلی کیریوں سے سوچا ان کا ذائقہ اور بھی اچھا ہوگا سو جلدی جلدی ہری مرچوں کے ساتھ اچار بنانے کے لئے چولھے پر رکھا خیال یہ تھا کہ سخت […]

The post اچار اور رشتے ” سبق ” : اسری غوری appeared first on نوک قلم.

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, May 3, 2018 - 22:48

میری ڈائری سے۔۔۔۔
٭ اصل قید جسمانی نہیں ذہنی ہوتی ہے۔ (نیلسن منڈیلا۔۔۔" لانگ واک ٹو فریڈم")۔ 
۔۔۔۔۔۔
 ٭ دھند ۔۔لکھنا ایک بہت بڑا ذہنی بوجھ ہے۔یہ دُھند میں ایک ایسا سفر ہے جس کی راہ میں کوئی نشان نہیں۔ بلکہ آپ کو یہ بھی معلوم نہیں ہوتا کہ آپ سفرکس جانب کر رہے ہیں اور کیوں کر رہے ہیں۔(جین پیٹرک موڈی اینا۔فرانسیسی ناول نگار۔۔۔ ادب کا نوبل پرائز 2014)۔
۔۔۔۔۔
 ٭ہر انسان پہاڑی کی چوٹی تک پہنچنا اور وہاں رہنا چاہتا ہے۔یہ جانے اور محسوس کیے بغیر کہ اصل خوشی اس رستے میں ہے جو ہمیں اس بلندی کے سفر کی طرف لے جاتا ہے۔ (گبرئیل گارسیا مارکیز۔۔۔1927۔۔2014...ادب...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, May 3, 2018 - 12:10

حضرتِ اقبال کی خوبصورت نظم کا بہت ہی خوب بیڑہ غرق کیا ہے جناب رشید عبد السمیع جلیل صاحب نے؛ آپ کی خدمت میں پیش ہے۔ ملاحظہ فرمائیے۔ 
دماغ آفریدی خلل آفریدمکروں جلد شادی یہ حل آفریدم
'جہاں را زِ یک آب و گل آفریدی'اسی آب و گل سے محل آفریدم
'تو از خاک فولادِ ناب آفریدی'میں دھونے دھلانے کو نل آفریدم
تو دنیا میں لاکھوں حسیں آفریدیمیں دل میں ہزاروں کنول آفریدم
تو فردوس و خلدِ بریں آفریدیزمیں پر میں نعم البدل آفریدم
تری حکمتیں بے نہایت الٰہیمیں از روئے حکمت کھرل...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, May 1, 2018 - 17:53
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, May 1, 2018 - 16:54


ہماری سوسائٹی میں شب برات پر دو مکاتب فکر ہیں۔ ایک گروہ یہ کہتا ہے کہ شب برات نجات کی رات ہے، اس رات لوگوں کے نامہ اعمال اللہ کے حضور پیش ہوتے ، ان کی تقدیر کا فیصلہ کیا جاتا، ان کے جینے مرنے کا تعین ہوتا ، لوگوں کو جہنم سے آزادی دی جاتی ہے۔ چنانچہ اس رات کی عبادت بہت افضل ہے اور اس رات قبرستان جانا چاہئے اور نوافل و اذکار کثرت سے کرنے چاہئیں اور اگلے دن روزہ رکھنا چاہیے ۔ان کے نزدیک یہ سب سنت سے ثابت ہے

۔
دوسرا گروہ اس رات کی مذہبی حیثیت کو چلینج کرتا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ اس رات کی کوئی حیثیت نہیں۔ اس رات کی بنیاد ضعیف احادیث پر ہے اور اس کے فضائل مستند نہیں...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, May 1, 2018 - 11:38
ہمیں بچاؤ!محمد علم اللہمٹھ میں آج بھی مقدس بزرگوں کا مجمع لگاتھا،کوئی سفید براق جبہ سنبھالے آیا تو کوئی تسبیح کے دانے سہلاتا ہوا میٹنگ والے حجرے میں وارد ہوا۔ کسی کے ساتھ اس کا مرید پیچھے پیچھے نظریں جھکائے یوں چلا آتا تھا گویا اس کی گردن پر کوئی ہریل بیٹھا ہوا ہو۔ جب بھی کوئی نورانی صورت حجرے میں ظہور فرماتی تو پہلے سے وہاں موجود لوگوں میں ہلچل مچ جاتی، کوئی اٹھ کر آنے والے کے ہاتھوں پر ٹوٹ پڑتا، تو کوئی کرتے کا اگلا یا پچھلا دامن پکڑ کر چوماچاٹی میں لگ جاتا۔ البتہ حجرے میں پہلے سے موجود نورانی صورتیں نئے نورانی چہرے کی آمد پر اپنی جگہ جمی رہتیں اور کئی ایک کی آمد پر تو منہ بناتیں۔ آنے والا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 30, 2018 - 10:25

ڈاکٹر غلام جیلانی برق برصغیر کا عظیم دماغ تھے ۔ یہ 1901ء میں کیمبلپور (موجودہ اٹک) میں پیدا ہوئے ۔ والد گاؤں کی مسجد کے امام تھے ۔ ڈاکٹر صاحب نے اِبتدائی تعلیم مدارس میں حاصل کی ۔ مولوی فاضل ہوئے ۔ مُنشی فاضل ہوئے اور ادِیب فاضل ہوئے ۔ میٹرک کیا اور میٹرک کے بعد اسلامی اور مغربی دونوں تعلیمات حاصل کیں ۔ عربی میں Gold Medal لیا ۔ فارسی میں ایم اے کیا اور 1940ء میں پی ایچ ڈی کی ۔ امام ابن تیمیہ پر انگریزی زبان میں Thesis لکھا ۔ امامت سے عملی زندگی شروع کی ۔ پھر کالج میں پروفیسر ہو گئے ۔ آپ کے Thesis کو Oxford اور Harvard یونیورسٹی نے قبولیت بخشی ۔ اسلام پر تحقیق شروع کی ۔ 1949ء میں پاکستان...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, April 29, 2018 - 22:59
@media only screen and (min-device-width : 320px) and (max-device-width : 480px) { } /* Smartphones (landscape) ----------- */ @media only screen and (min-width : 321px) { } /* Smartphones (portrait) ----------- */ @media only screen and (max-width : 320px) { } /* iPads (portrait and landscape) ----------- */ @media only screen and (min-device-width : 768px) and (max-device-width : 1024px) { } /* iPads (landscape) ----------- */ @media only screen and (min-device-width : 768px) and (max-device-width : 1024px) and (orientation : landscape...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 10:09
محمد علم اللہاخبارات میں خبر آئی ہے کہ دارالعلوم دیوبند اپنے فتاوی کو کاپی رائٹ کرائے گا اور ذرائع ابلاغ کے لئے ان فتاوی کی ترسیل یا اس پر تبصرے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اس سلسلہ میں چند گذارشات ہیں۔پہلی: فتوی قرآن و حدیث سے مستنبط حکم ہے اور ظاہر ہے یہ دونوں ہی کسی کی ملکیت نہیں اس لئے فتوے کا کاپی رائٹ ہونا سمجھ سے بالاتر ہے۔دوسری: اگر دارالعلوم دیوبند چاہتا ہے کہ میڈیا اس کے فتوے پر بات نہ کرے تو پھر وہ فتوی براہ راست سائل کو ای میل یا ڈاک سے بھیجے اور ویب سائٹ پر تشہیر سے گریز کرے۔تیسری: دارالعلوم دیوبند کے دارالافتاء کو صرف شرعی اور فقہی معاملات پر ہی فتوے دینے چاہئیں۔ مودودی، غامدی،...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 10:08
محمد علم اللہ
ذرا دیر کو تصور کیجئے کہ اس وقت مرکز میں کوئی اور حکومت ہوتی اور اس طرح اسرائیلی وزیراعظم گاجے باجے کے ساتھ تقریبا ایک ہفتے کے دورے پر آتا تو ہمارے نام نہاد ملی قائدین کیا کر رہے ہوتے؟۔..... یقین مانیے یہ قائدین اتنا احتجاج اور اودھم مچاتے کہ حکومت کی اسرائیلی وزیراعظم کو بلانے کی ہمت ہی نہ ہوتی اور اگر دورہ ہوتا بھی تو چپ چاپ ہوتا؛
لیکن آج؟
آج انہیں ملی قائدین کی خاموشی دیکھئے کہ گھروں میں دبکے بیٹھے ہیں۔
کسی قائد کی مجال نہیں کہ مختصر سا احتجاجی مظاہرہ ہی کر لے۔ حتی کہ وہ حضرات جو ہر مسلمان نوجوان کی رہائی کا کریڈٹ لینے کے لئے اپنے زرخرید اردو رپورٹروں سے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 10:05
کیا  ناچ گانا ہی محض سنیما ہے ؟ محمد علم اللہ عقل پر تعصب کا پردہ پڑ جائے تو حقیقت نظر آنی بند ہو جاتی ہے اور اگر اس پر کم علمی کا بھی ایک پردہ چڑھا دیا جائے تو کچھ بھی دکھائی دینا نا ممکن ہے۔ خیر سنیما کو بطور میڈیم استعمال کرنے کی ضرورت پر میری فیس بک پوسٹ سے دوست خوب نالاں ہوئے۔ اس سلسلہ میں جو تبصرے آئے ہیں ان میں کچھ مناسب سوالات کی وضاحت کر دینا مناسب ہے باقی تبصرے چونکہ صرف مخالفت برائے مخالفت کی خاطر ہیں اس لئے ان پر کان دھرنے سے کوئی فائدہ نہیں۔ 
مبصرین کی اکثریت نے پوچھا ہے کہ ایسی کوئی ایک فلم بتائیے جس نے مسلمانوں کے بارے میں مثبت نظریہ قائم کیا ہو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 10:03

سنیما کے سلسلہ میں برصغیر کےنوے فیصد دین اسلام کے ٹھیکیداروں کی یہی رائے ہے کہ یہ حرام اور لہو لعب ہے اس لئے شراب اور سور ہی کی طرح سنیما اور فلموں کو اچھوت قرار دے دیا گیا ہے۔ اس میں ان کا دوش نہیں ہے، دراصل انہوں نے سنیما کے نام پر مغل اعظم اور پاکیزہ کو ہی جانا ہے۔ انہیں معلوم نہیں کہ یہ کمرشیئل سنیما فلم سازی کے فن کا ایک بہت معمولی اور گھٹیا حصہ ہے۔ سنیما دراصل اظہار کا ایک موثر اور خوبصورت ذریعہ ہے۔ اپنی بات دنیا تک پہچانے کے معاملہ میں سنیما جتنا کامیاب رہا ہے،اتنا نہ تو تحریریں رہیں اور نہ تقریریں۔ دنیا بھر میں یہودوں کو مظلوم ترین قوم کے طور پر اسی سنیما نے شناخت دلائی۔...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:53

اس تہذیب نے اپنا دربار مغلیہ دربار کے طرز پر سجایا ضرور تھا لیکن طرز اس دور سے لیا تھا جب خود مغلیہ تہذیب کا چراغ بجھا چاہتا تھا اور اس میں روشنی پھیلانے کی قوت باقی نہیں رہی تھی. متوازن و صحت مند تہذیبیں شمشیر و سناں اور طاوس و رباب میں ایک توازن قائم رکھتی ہیں اور جب یہ توازن باقی نہیں رہتا تو طاوس و رباب ساری زندگی پر حاوی ہو جاتے ہیں. اودھ کی نئی تہذیب کے ساتھ یہی صورت پیش آئی تھی. انگریزی سامراج نے اسے چاروں طرف سے گھیر رکھا تھا اور حفاظت کی ذمہ داری کا احساس دلا کر تھکی ہوئی تہذیبوں کی طرح، اسے صرف راگ رنگ سے لطف اٹھانے پر مجبور کر دیا تھا. دیکھتے ہی دیکھتے راگ رنگ، لطف و مزہ، عیش...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:52
اقبال نے اپنے خطبات "اسلام میں مذہبی فکر کی تشکیل نو" میں سر سید کا کہیں ذکر نہیں کیا حال آں کہ فکر اقبال سر سید ہی کی فکر کا تسلسل ہے جس کے اثرات ان کی فکر و نظر پر بھی گہرے ہیں، اس کی وجہ یہ معلوم ہوتی ہے کہ سر سید کی فکر جدید کی وجہ سے کفر کے جتنے فتوے سر سید پر علمائے دین نے لگائے اور جس شد و مد کے ساتھ ان کی مخالفت کی، اقبال نہیں چاہتے تھے کہ سر سید کا نام لیکر وہ علماء کو بیدار و متوجہ کریں اور لوگ ان کے جدید خیالات سے بر گشتہ ہو جائیں. انھوں نے خاموشی سے فکر سر سید کے تسلسل کو باقی رکھا اور اسے اپنی فکر اور علوم جدیدہ سے آگے بڑھایا. اپنے خطبات کی تمہید میں اقبال نے جس نقطہ نظر کو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:49
ائے ہندی لوگو! جو ایمان لائے ہو ، جان لو کہ دو ہزار انیس کا الیکشن آنے والا ہے ۔ عنقریب تم دیکھوگے کہ بہت سے نکلیں گے اخبار اردو کے ، ہندی کے اور انگریزی کے ، ویب سائٹ بھی کئی رنگ کے نکلیں گے نئے ۔ خریدے اور بیچے جائیں گے بہتیرے لوگ ۔ تم ایسے لوگوں کو بھی عنقریب دیکھ لوگے جو چہرے رکھتے ہیں دو ، ایک دکھانے کے لئے تم کو اور دوسرا پردے کے اندر جس کے بارے میں تم نہیں جانتے ۔ اس وسیع آسمان کے نیچے محض اختر شماری میں تم ہو مصروف اور بہت سے خطرناک اجگر اور خونخوارکتے تمہیں محمود انداز لئے بھبھوڑنے کو بڑھ رہے ہیں آگے ، مگر تم بیدار ہونے کا نہیں لیتے نام ۔محمد علم اللہ 

پڑھنے کے لئے آپ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:48
ملت ٹائمز اور ان کے با ہمت کارکنا ن کو سلاممحمد علم اللہ
ادھر گذشتہ کئی دنوں سے یہ دیکھنے میں آ رہا ہے کہ کچھ لوگ معروف نیوز پورٹل "ملت ٹائمز "کے خلاف اپنی ہرزہ سرائی اور زہر افشانیوں کا سلسلہ دراز کئے ہوئے ہیں ۔ دراصل یہی وہ لوگ ہیں جو جمہوریت ،اظہار رائے ، بولنے اور سوال کرنے کی آزادی پر پابندی لگا کر صحافت اور قلم کا گلا گھوٹنا چاہتے ہیں۔برسوں سے انھوں نے یہی کام کیا ہے حق کی آواز کو مارنے اور سچ کی آواز کو دبانے کا ۔ انھیں لوگوں نے قوم کو تھپکی دے دے کر سلانے ، اپنے جھوٹے ، فرضی ،جذباتی اور خود ساختہ دین کے ذریعہ لوگوں کو حقیقت سے منحرف اورگمراہ کرنے کا کام کیا ہے تاکہ ان کی اپنی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:46
سچ بات کوئی نہیں سننا چاہتا ۔۔۔محمد علم اللہ
کیا کسی جذبے کا اظہار،اختلاف یا تنقید محض گلستان میں کانٹوں کی تلاش ہے ۔۔۔؟
آپ کسی بھی اہل دانش سے دریافت کریں گے تو وہ یہی جواب دے گا کہ- ہر گز نہیں !
بلکہ وہ کہے گا کہ اسی کے ذریعے صحت کا معیار قائم ہوتا ، علم و تجربے کی قدر و حیثیت متعین ہوتی اور توانا معاشرہ تشکیل پاتا ہے ۔
لیکن ہمارے معاشرے کے کچھ عناصر کا حال یہ ہے کہ آپ ذرا ان کے مزاج کے غیر موافق بات کہیے خواہ وہ حقیقت ہی کیوں نہ ہو ،وہ آپ کے اوپر چڑھ دوڑیں گے ۔لڑنے بھڑنے کے لئے تیار ہو جائیں گے، کچھ کر نہ سکیں گے تو چوراہے پر کھڑے ہو کر لعن طعن ، طنز و تشنیع اور سب و...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:44
بڑوں کا بچپنکہانی ڈاکٹر رضی الاسلام ندوی کیایک عزیز کے عزیز آنے والے تھے ،فون پر بات ہو گئی تھی، انھیں دو دن رکنا تھا، ان کی وجہ سے کل آفس سے چھٹی کے بعد میں کوچنگ پڑھانے نہیں گیا ،سیدھے کمرے آیا ،مجھے کچھ تاخیر ہو گئی تھی تو روم پارٹنر کو ریسیو کرنے کے لئے بھیج دیا،شام ناشتہ وغیرہ لیکر واپس لوٹا تو دوست نے بتایا کہ وہ ہوٹل چلے گئے ، میں نے وجہ دریافت کی تواس نے بتایا مجھے نہیں پتہ؟ بس ان لوگوں نے کہا ہم ہوٹل جا رہے ۔ میں نے انھیں فون کیا تو ادھر سے جواب ملا ہاں ہم ہوٹل چلے آئے انھوں نے کوئی وجہ نہ بتائی،شاید ان کو ہمارا غریب خانہ پسند نہیں آیا یا انھوں نے کمفرٹ محسوس نہیں کیا، ان کے اس رویہ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:43
بڑوں کا بچپنسیریز (2)کہانی ڈاکٹر محی الدین غازی کی ۔۔۔کچھ شخصیتیں ایسی ہوتی ہیں جو پہلی ہی ملاقات میں اپنا گرویدہ بنا لیتی ہیں ، برادر بزگوار جناب ڈاکٹر محی الدین غازی بھی میرے لئے انھیں میں سےایک ہیں ،مجھے وہ ڈانٹتے بھی ہیں اور سرزنش بھی کرتے ہیں اور یقین جانئے۔۔۔ مجھے ان کا یہ انداز بڑا پیارا لگتا ہے ۔۔۔ ایک الگ قسم کی اپنائیت کا احساس ہوتا ہے ۔مدرسے میں غالبا عربی چہارم یا پنجم کا میں طالب علم تھا تب میری ملاقات غازی بھائی سے ہوئی ، میری کیا بلکہ انھوں نے ہی مجھ سے ملاقات کی ۔قصہ کچھ یوں ہے ۔۔۔مدرسۃ الاصلاح میں مرحوم اساتذہ سیمنار ہو رہا تھا۔ یہ طلباء سیمنار تھا ، جس کا سارا انتظام و انصرم...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:40
نپولین فاتح کیوں تھا؟ اور اسے یہ کامیابی کیوں کر ملی؟ اس کی کامیابی کا راز کیا تھا؟محمد علم اللہ جامعہ ملیہ، دہلی
مسلمانوں کی ناکامی، خصوصا ہندوستان کے تناظر میں اگر میں بات کروں، تو اس کی ایک وجہ قیادت میں نوجوانوں کا بحران بھی ہے۔ دنیا کی ترقی یافتہ قوموں کا جب ہم جائزہ لیتے ہیں تو دیکھتے ہیں کہ وہ نہ صرف اپنے نوجوانوں کو اس کے لیے تیار کرتے ہیں، بلکہ باصلاحیت نوجوانوں کی ہمت افزائی اور ان کی قابلیت کی قدر کرتے ہوئے انھیں مناسب جگہ بھی فراہم کرتے ہیں۔ جس کی واضح مثال کینیڈا کے 43 سالہ جسٹن تروڈ، اسٹونیا کے اڑتیس سالہ جوری ریٹس، یونان کے 40 سالہ الیکسس تسپارس، تیونس کے چالیس سالہ یوسف...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:38
اپنوں کی محفلیں کس لت کا نام ہے۔۔۔محمد علم اللہ جامعہ ملیہ، دہلی
فون کے ذریعے دعوت ملی، یہ عجیب و غریب دعوت تھی، ایک سپاہی نے مجھے اپنے یہاں بلایا تھا، اس نے بتایا کچھ اور سپاہی بھی ہوں گے، تمہیں فلاں جگہ پر فلاں وقت ملنا ہے، میں ٹھہرا مزدور انسان، اب مزدوری سے فرصت ملے تو کہیں پہنچا جائے، مگر یہ تو سپاہی کی دعوت تھی اور ایسے موقع پر بہانہ بازی یا حیلہ و حوالہ کی تلاش کم از کم میرے لئے تو جرم ہی ہے، سو میں نے حامی بھر لی، لیکن آفس میں عین موقع پر کام آ گیا اور اس کو نمٹاتے نمٹاتے رات کے تقریباً سات بج گئے۔
ادھر بار بار الگ الگ سپاہیوں کے فون نے مجھے زچ کر دیا، میں جلدی جلدی کام نمٹا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:35
چلو اک کام کریں ۔۔۔فوٹو کریڈٹ : انڈین ایکسپریس
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:32

کچھ دوسروں سے بھی سبق سیکھیں ۔۔۔محمد علم اللہ جھوٹی واہ واہی اور بلا کام کا کریڈٹ لینے والے مسلم تنظیموں کے لئے تازیانہ عبرت، دیکھئے یہ عیسائی تنظیم کیسے کام کرتی ہے، 750 زبانوں میں ترجمہ اور لٹریچر گھر گھر پہنچانے کا کام، ان کا کہنا ہے ہم کئی ایسی زبانوں میں بھی ترجمہ کرتے ہیں جو صرف چند ہزار لوگ بولتے ہیں۔‏ ہم ایسا کیوں کرتے ہیں؟‏ کیونکہ یہوواہ خدا کی مرضی ہے کہ ہر طرح کے لوگ ”‏نجات پائیں اور سچائی کے بارے میں صحیح علم حاصل کریں۔‏“‏—‏ہمارے سیکھنے کے لئے بھی اس میں بہت کچھ ہے اس لئے یہ ارسال کر رہا ہوں، دونوں لنک ضرور دیکھیں..https://wol.jw.org/ur/wol/d/r109/lp-ud/1102012164https...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:30
شریعت بچانے کے نام پر دلالیمحمد علم اللہ
اتفاقاتِ زمانہ بھی عجب ہیں ناصر
آج وہ دیکھ رہے ہیں جو سنا کرتے تھے
تدبر اور بردباری کی معمولی سمجھ رکھنے والا شخص بھی اس سے بے خبر نہیں ہو سکتا کہ کسی بھی معاشرے میں جتنی اہمیت حقائق کی ہوتی ہے اتنی ہی تاثر کی بھی ہوتی ہے۔ اکثر دیکھا گیا ہے کہ مظاہر اور علامات ایسا تاثر پیدا کر جاتے ہیں کہ بڑے بڑوں کی نیک نیتی دھری کی دھری رہ جاتی ہے۔
پٹنہ میں اتوار کو ہوئی دین بچاو ،دیش بچاو ریلی میں لاکھوں افراد کی شرکت سے دل ابھی پوری طرح مطمئن بھی نہ ہوا تھا کہ خبر آ گئی کہ ریلی کے بانی مولانا ولی رحمانی کے معتمد اور ایک اردو اخبار کے مدیر خالد...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:25

مولانا سالم قاسمی کے انتقال پر ایک تاثراتی تحریر محمد علم اللہ
میں کل حضرت مولانا سالم قاسمی مرحوم پر مضمون لکھنا چاہ رہا تھا لیکن اس میں بہت سے مہہ جبینوں کا بھی تذکرہ آرہا تھا جنھوں نے ۲۳۔۲۴ مارچ ۱۹۸۲ء کی درمیانی شب میں دارالعلوم کی عمارات پر حکومت کے تعاون سے قبضہ کیا تھا اور اس کالی رات کو جاگیرداری اور منصب داری کے لالچ میں وہ ننگا ناچ ناچا تھا کہ آج بھی تاریخ اس کو ہند و پاک کی طرح دو سرحدوں کے نام سے یاد کرتی ہے۔ اس لئے اس اپنا ارادہ ترک کر دیا تھا ، لیکن پھر کئی احباب نے ایسا کرنے سے منع کیا اس لئے اپنے کچھ احساسات رقم کر رہا ہوں۔
مولانا سالم قاسمی(مرحوم) کے جانے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:22
Dilemma
By: Mohd Alamullah Homosapiens weren't what we are;
A thinking man who once ‘was’
Or may be ‘still is’
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 27, 2018 - 09:19
حقیقت سے آنکھیں چرا لینا مسئلہ کا حل نہیں !
محمد علم اللہ پتہ نہیں غالب نے کس رو میں کہا تھا لیکن تھی بڑے پتے کی بات۔بات پر واں زبان کٹتی ہےوہ کہیں اور سنا کرے کوئی
آج کل یہ شعر مجھ پر بہت صادق آ رہا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ ہم لوگوں نے قسم کھا لی ہے کہ اپنی کسی خرابی کی اصلاح تو دور اس پر بات کرنے والے کو بھی نہیں بخشیں گے۔ مدارس میں اساتذہ کے طریقہ تادیب پر میں نے ویڈیو شیئر کی تو بہت سے احباب چڑھ دوڑے۔ شکوہ کرنے لگے کہ میری پوسٹ سے مدارس بدنام ہو سکتے ہیں، میں اسکولوں کی بات کیوں نہیں کرتا؟ وغیرہ وغیرہ۔
ہر تبصرہ کرنے والا گھوم پھر کر یہی شکوے دہراتا ہے اس لئے فرداً فرداً...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, April 25, 2018 - 09:25

اپنے انگریزی بلاگ پر 28 ستمبر 2004ء کی تحریر کا اُردو ترجمہ پیشِ خدمت ہے
منافق (انگریزی ۔ hypocrite) بالعموم ہر دِل عزیز ہوتا ہے اور اس کے احباب کا دائرہ بہت وسیع ہوتا جو اُس کے دوغلے کردار کا مرہونِ منت ہوتا ہے
منافق زبانی زبانی دوست ۔ خیر خواہ اور ہمدرد سب کچھ ہوتا ہے لیکن در حقیقت نہیں ہوتا
با اصول آدمی وعدہ کرنے سے پہلے چند لمحے سوچتا ہے کیونکہ اُس نے وعدہ نبھانا ہوتا ہے
البتہ ضرورت کے وقت فوری وعدہ بہت اہم ہوتا ہے ۔ فوری وعدہ منافق دے سکتا ہے کیونکہ پورا کرنے کا ارادہ نہیں ہوتا چنانچہ ضرورتمند منافق کا...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 23, 2018 - 22:12
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 23, 2018 - 22:09
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 23, 2018 - 22:00
مصنف: فراز بیگ

ایم اے جناح روڈ پر ایک کے بعد ایک تاریخی عمارت واقع ہے۔ ہر عمارت انگریز کی یادگار ۔ مگر ایک عمارت ایسی ہے جو خود تو انگریز کی یادگار ہے ہی۔ اس کا پورا انتظام اور نظم و نسق ابھی انگریز کے دور کی ہی ایک یادگار ہے۔ وہ دونوں اس وقت اسی یادگار یعنی سٹی کورٹ کےاحاطہ میں بیٹھے اپنے وکیل کا انتظار کر رہے تھے۔ صبح کے آٹھ بجے کا وقت دے کر اس بندہ خدا نے دس بجا دئیے تھے اور بدستور دیدار کی کوئی نوید نہیں تھی۔ احاطہ کے چاروں طرف لوہے کا جنگلہ تھا جس کے دوسری طرف ٹریفک رواں دواں تھا اور پرانے رکشوں کی طرح، چل کم رہا تھا اور دھواں زیادہ دے رہا تھا۔

جنید نے حسرت سے ایک آہ بھری...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 23, 2018 - 20:25
مصنف: م بلال م
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 21, 2018 - 10:02
ترنول پریس کلب کے صحافیوں نے ہمیشہ عوام کے مسائل کو اجاگر کیا،اسد عمردیہی علاقوں کے صحافیوں کی پاس وسائل نہ ہونے کے باوجودبھی مثبت صحافت کرنا لائق صد تحسین ہے،ایم این اےصحافی عوامی مفاد کی خاطر اپنا سکھ چین قربان کردیتے ہیں،ضیاء اللہ شاہ، صحافی حق و سچ کے علمبردار ہوتے ہیں،سید امداد علی شاہترنول(نمائندہ خصوصی)ترنول پریس کلب نے ہمیشہ عوام کے مسائل کو اجاگر کیا،دیہی علاقوں کے صحافیوں کی پاس وسائل نہ ہونے کے باوجود مثبت صحافت لائق صد تحسین ہے۔ایوارڈ حاصل کرنے والوں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوئی ہے کہ وہ علاقہ کے مسائل کو بہتر انداز سے اجاگرکریں۔ان خیالات کا اظہار تحریک انصاف کے رہنما اور ایم این...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 21, 2018 - 02:59
مصنف: شعیب صفدر

یوں لگتا ہے کچھ دعائیں منظور ہو کر نہیں دیتی چاہے کتنا رو کر مانگو اور کچھ خیالات ابھی طلب کی دہلیز پ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 20, 2018 - 09:09

ناجانے ہمارے مُلک میں کِس کا زَور چلتا ہے کہ تاریخ کو مَسَخ کیا جاتا ہے ۔ حقائق کو بدل دیا جاتا ہے ۔ آج اِس کی ایک مثال پیشِ خدمت ہے

ایک صاحب جنہوں نے اپنا قلمی نام عاشُور بابا رکھا ہے لکھتے ہیں
سقوطِ ڈھاکہ کے بعد جب عوامی نیشنل پارٹی کے راہنماؤں کو پاکستان میں حراست میں لیا گیا تو ایک ایسا شخص تھا جو بہت ہی خستہ حال تھا ۔ اس کو گرفتار کر کے حیدرآباد جیل لایا گیا ۔ جیلر نے اس پریشان حال شخص کو دیکھا اور حقارت سے کہا ”اگر تم عبدالولی خان کے خلاف بیان لکھ کر دے دو تو ہم تم کو رہا کر دیں گے ورنہ یاد رکھو اس کیس میں تم ساری عمر جیل میں گلتے سڑتے رہو گے اور یہیں تمہاری موت ہو گی“۔...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, April 16, 2018 - 22:05
مصنف: سائنسیات

بابل کا امیر ترین آدمی ایک امریکی بیسٹ سیلر کتاب ہے  ۔ اس  کتاب کے مصنف جارج کلیسن ہیں ۔یہ کتاب ایک داستان کی طرز میں لکھی گئی ہے۔اس کہانی میں بتایا گیا ہے کہ کس طرح ایک عام مزدور  کچھ سادہ اصولوں کو اپناتا ہے اور آہستہ آہستہ وہ  بابل کا امیر ترین شخص بن  جاتا ہے۔ ۔اگرچہ یہ کتاب 1926 کو شائع ہوئی ۔لیکن اس میں شامل اسباق آج بھی اتنی ہے اہمیت رکھتے ہیں۔اسی لئے تقریباً ایک صدی گزرنے کے بعد بھی  اس کی مقبولیت وافادیت دن بدن بڑھتی رہی ہے۔اس کتاب کو کلاسیک کا درجہ حاصل ہے ۔کہا جاتا ہے کہ معاشی آسودگی کا خواب دیکھنے والے ہر شخص کو یہ کتاب ضرور پڑھنی چاہیے ۔...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, April 15, 2018 - 09:31

کسی کی مدد یا کام معاوضے کے خیال کے بغیر کرنا خوشی لاتا ہے
اپنے آپ کو دھوکہ نہ دیجیئے کہ آپ دوسرے کی بھلائی کر رہے ہیں کیونکہ آپ اچھائی اپنی ز ندگی بہتر بنانے کیلئے کرتے ہیں
کسی کی تنقید یا کسی کو نصیحت کرتے وقت خیال رکھیئے کہ جو بُرائی آپ دوسرے میں دیکھتے ہیں وہ آپ میں بھی ہوتی ہے ورنہ وہ بُرائی آپ کو نظر نہ آتی
اللہ کسی دوسرے سے کہا گیا آپ کا ہر لفظ پرکھے گا ۔ اسلئے بولنے سے پہلے اچھی طرح سوچ لیجیئے کہ جو آپ کہنے لگے ہیں وہ بلا شک و شُبہ درست ہے

سورت 2 البقرۃ ۔ آیت 44 ۔ کیا لوگوں کو بھلائیوں کا حُکم کرتے ہو ؟ اور خود اپنے آپ کو بھول جاتے ہو باوجودیکہ تم کتاب...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 22:43

عرصہ تین سال پہلے کی بات ہے۔میں اپنے ایک عزیز کو لینے پشاور ائرپورٹ جا رہا تھا،صبح کی آذانیں ہوچکی تھی  ۔ہلکی ہلکی تاریکی تھی۔ میں نے گاڑی کی ہیڈ لائٹس جلا رکھی تھی۔ اسی اثناء میں آرمی چیک پوسٹ پر پہنچا اور چیکنگ کیلئے گاڑی میں انتظار کرنے لگا۔

فوجی جوان ناکے پر کھڑا تھا اور اسکے ہاتھ میں بڑی ٹارچ تھی۔اس نے ٹارچ جلائی ،میری طرف آنے لگا ،اور ساتھ ہی اس نے ٹارچ سیدھی میری آنکھوں پر ڈال دی،اور مسلسل ڈالے رکھی۔ میری آنکھیں چندھیا گئی تھی اور میں نے ٹارچ کی روشنی سے بچنے کیلئے اپنا ہاتھ اپنی آنکھوں کے سامنے کیا۔
اسی اثنا ء میں وہ میرے قریب آیا اور کہا کہ ہاں جناب...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 17:38
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 17:37
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 16:08
فیس بک، یا فیسبک آج کل پھر سے خبروں میں ہے۔ مارک ذکربرگ کو امریکی سینٹ کی ایک کمیٹی میں مدعو ہو کر تندو تیز سوالوں کا سامنا کرنا پڑا۔ کیمبرج اینالئٹکا سکینڈل، امریکی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت...

طفل مکتب کی تحریر کا یہ اقتباس آپ مکمل شکل میں وہیں ملاحظہ فرما سکتے ہیں۔ ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 15:35


...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, April 14, 2018 - 10:39

تپتی تڑپتی سلگتی ریت پر گرجتے برستے بادل بوند بوند پانی سےزرے زرے کی تشنگی مٹانے سے قاصر رہتے ہیں۔دنیا  ایسا نمکین سمندر ہے جو محبت کے پیاسے کی چندگھونٹ سے تشنگی نہیں مٹا سکتا۔آنکھ میں نظر آنےوالی تڑپ جزب کی کیفیت کا ایسا خالی پن ہے جو خلاء کی ایسی وسعت رکھتا ہے جہاں اندر داخل ہوتے جاو تو وسعتیں پھیلتی چلی جاتی ہیں۔ محبت کی دنیا وہ مقام ہے جو نظر سے قرب سے حسن سے دل تک رسائی پا کر آئینہ میں خود میں اچھا لگنے ، زیر لب مسکرانے اور کن آکھیوں سے شرمانے تک ہے۔ مگر عشق کی دنیا کی تشنگی ذات آدم سے مٹ نہیں سکتی۔فطرت اپنا حسن رگ رگ میں سمو دے تو انسانی بستیاں محبت کے مجسموں میں ڈھل بھی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, April 11, 2018 - 20:56
مصنف: م بلال م
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, April 10, 2018 - 23:06
میرا اپنے رب سے تعلق کوئی انتہائی منافقانہ قسم کا ہے۔ میں جانتے بوجھتے فرائض کی ادائیگی میں غفلت کا مرتکب ہوتا ہوں، ،میرا ضمیر کچوکے لگاتا ہے کہ می٘ں غلط کر رہا ہوں لیکن میں ٹس سے مس نہیں ہوتا۔ ارادہ...

طفل مکتب کی تحریر کا یہ اقتباس آپ مکمل شکل میں وہیں ملاحظہ فرما سکتے ہیں۔ ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, April 10, 2018 - 10:33

عبادت دل کا بوجھ کم کرتی ہے
بغیر ذاتی فائدہ کے کسی کی مدد اللہ پر یقین کا ثبوت ہے
بُرائی اور گناہ سے بچنا شان بڑھاتا ہے
اگر آپ اچھائی کرتے ہیں تو قرآن شریف آپ کی کامیابی کا ثبوت ہے
اگر آپ غلط کام کرتے ہیں تو قرآن شریف آپ کی قباحت یا ناکامی کا ثبوت ہے

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, April 6, 2018 - 08:55

پھتوئی ۔۔۔۔۔تحریر صفی الدین اعوانچند سال پرانی بات میرے ایک دوست کے پاس لڑائی جھگڑے کا کیس آیا وہ عدالت میں پیش ہوا تو جج نہایت ہی اول درجے کا رشوت خور تھا لیکن معتصب نہ تھا بین المسالک ہم آہنگی بین المزاہب ہم آہنگی اور بین الصوبائی یکجہتی پر یقین رکھتا تھا وہ رنگ ونسل زبان صوبایئت اور مذہب کی تفریق کیئے بغیر سب سے رشوت بٹورا کرتے تھے جج صاحب کا نام تھا بالا دوبئی والا میرے دوست نے ضمانت کی درخواست داخل کی تو سادگی میں جج صاحب کو رشوت دینے کی ہمت نہ کرسکےخیر جج صاحب نے ضمانت کی درخواست پر نوٹس کردیا اور ایک ہفتے بعد کی تاریخ مقرر کردی اب میرا دوست کمرہ عدالت کے باہر کھڑا تھا کہ اس کو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 16:54
صِرف اس شوق میں پوچھی ہیں ہزاروں باتیںمیں تیرا حُسن ، تیرے حُسنِ بیاں تک دیکھوںمارچ 2018۔۔دسمبر 2017۔۔۔۔11 فروری 2017۔۔۔
 2017۔۔
یکم مارچ 2016۔۔۔
 سفر ہے شرط۔۔ "سفرِحراموش"۔۔2016۔۔
 کُل بارہ اقساط ہیں ان میں سے پہلی قسط۔۔۔ 
۔75 واںجنم دن۔۔۔
یکم مارچ 2014۔۔
https://www.facebook.com/zahid.zaman.737/videos/10202671037512393/?hc_ref=ARS86KdW85pCLXAqf10qACh6w3ZRKj5HNVLEKp-3AgCQO6J96MmPumS5U_۔۔
۔ سفر ہے شرط۔"سفرِنگر"راکا پوشی  بیس کیمپ۔۔۔2014۔
ستمبر 2011۔۔۔.۔2010کوپن ہیگن۔۔۔صدف مرزا کو دیا گیا انٹرویو۔۔۔۔2007 روس۔۔۔ صدائے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 12:07
مصنف: اس طرف سے


میں بس اسٹاپ پر پہنچ کر ابھی دم نہ لینے پایا تھا کہ کسی نے دونوں ہاتھوں سے میرا داہنا بازو تھام لیا۔ 
میں نے خود کو پر سکون رکھتے ہوئے اپنی داہنی طرف دیکھا۔ ایک بوڑھی روسی سفید فارم خاتون تھی جن...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 10:01
ایک صاحب نے مشہور فلسفی کانٹ کے حضرت ابراھیم علیہ السلام پر اعتراض کے حوالے سے پوسٹ لگائی ہے کہ کانٹ کے مطابق حضرت ابراھیم نے بیٹے کو قربان کرتے وقت خدا کی طرف اپنی اخلاقی ذمہ داری تو نبھائی مگر انسان کی طرف اپنی اخلاقی ذمہ داری نبھانے میں ان سے چوک ھوگئی، یعنی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 09:56
دورِ نزول قرآن سے لے کر اب تک عیدالاضحیٰ پر جانوروں کی قربانی، اُمت مسلمہ میں ایک مجمع علیہ اور متفق علیہ عبادت کی حیثیت سے تواتر کے ساتھ قائم رہی ہے۔ معتزلہ، جو ابتدائی زمانہ میں حدیث اور سنت نبوی سے گریزاں رہے ہیں، بھی قربانی کاانکار نہ کرپائے۔ لیکن ہمارے زمانے میں غلام…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 09:39

یہ بنیادی طور پر 3 خاندانوں کا قصہ ہے ۔ پہلا خاندان واڈیا فیملی تھی ۔ خاندان کی بنیاد پارسی تاجر لوجی نصیر وان جی واڈیا نے بھارت کے
شہر سورت میں رکھی

فرنچ ایسٹ انڈیا اور برٹش ایسٹ انڈیا میں جنگ ہو چکی تھی ۔ برطانوی تاجر فرانسیسی تاجروں کو پسپا کر چکے تھے ۔ پلاسی کی جنگ بھی ختم ہو چکی تھی اور میسور میں ٹیپو سلطان بھی ہار چکے تھے ۔ ایسٹ انڈیا کمپنی کو اب مغل سلطنت پر قبضے کے لئے برطانیہ سے مضبوط رابطے چاہیں تھے ۔ یہ رابطے بحری جہازوں کے بغیر ممکن نہیں تھے

لوجی واڈیا لوہے کے کاروبار سے وابستہ تھے ۔ وہ انگریزوں کی ضرورت کو بھانپ گئے چنانچہ انہوں نے 1736ء میں ہندوستان میں...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 09:31
جہاں تک قربانی کے سنت اور مشروع ہونے کا تعلق ہے، یہ مسئلہ ابتدا سے اُمت میں متفق علیہ ہے اور اس میں کوئی اختلاف نہیں رہا ہے۔سب سے بڑا ثبوت اس کے سنت اور مشروع ہونے کا یہ ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے عہدِمبارک سے لے کر آج تک مسلمانوں کی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 09:25
ایک صاحب فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے عرفہ کو رؤیتِ ہلال پر منحصر نہیں رکھا، اور اس لیے جب ہمیں معلوم ہے کہ ”آج“ حجاج عرفات میں جمع ہو رہے ہیں تو ہمارے لیے بھی عرفہ آج ہی کا دن ہے۔ان صاحب سے پوچھنا چاہیے کہ عرفہ کے لیے رسول اللہ ﷺ نے…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, April 5, 2018 - 09:19
وہ سچا عظیم معبود۔ کائنات کا حقیقی مالک اور خالق! اُس کی صفات کا احاطہ کون کر سکتا ہے! اور اُس کی عظمت کا اعتراف کیونکر ہو….! لوگ اپنے چھوٹے چھوٹے اور حقیر معبودوں کی تعظیم سے سیر نہیں ہوتے! ’وطن‘ کے گیت گاتے نہیں تھکتے! ’قوم‘ کی ترقی کا ورد نہیں چھوڑتے ۔ ’ملک‘…
زمرہ: اردو بلاگ

Pages

Subscribe to بلاگستان فیڈز