بلاگستان

تاریخ اشاعت: بدھ, December 27, 2017 - 17:48
مصنف: شعیب صفدر

(نوٹ یہ تحریر مجھے بذریعہ وٹس اپ موصول ہوئی لکھاری کا علم نہیں مگر حسب حال ہے)

‎ہم پر یہ راز کھلا ک...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 27, 2017 - 17:14
مصنف: کچھ دل سے
~!~ آج کی بات ~!~
اچھا فیصلہ کرنے کی صلاحیت تجربے سے پیدا ہوتی ہے؛ ...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 27, 2017 - 13:08
اسلامی تاریخ کے سرسری مطالعے کی بنیاد پر یہ رائے قائم کیا گیا ہے کہ جب مسلمانوں کو قدرت و طاقت حاصل ہوجائے تو شاید یہ شرعی حکم ہے کہ تلوار لے کر تمام غیر مسلم ملکوں اور لوگوں پر چڑھ دوڑو۔۔حقیقت اسکے برعکس ہے۔اسلامی ریاست عام طور پر اعلا کلمۃ اللہ کی بنیاد پر…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 27, 2017 - 12:39
یہ مکالمہ ڈاکٹر مشتاق صاحب چیئرمین شعبہ قانون اسلامی یونیورسٹی، ڈاکٹر شہباز ، پروفیسر سرگودھا یونیورسٹی، ڈاکٹر زاہد مغل صاحب پروفیسر نسٹ یونیورسٹی کے درمیان ہوا۔ اس میں وہ تمام اشکالات زیربحث آئے جو کہ ایک نظریے کی اشاعت کے لیے جنگ کے جواز پر اٹھائے جاسکتے ہیں۔ اعتراضات ڈاکٹر شہباز صاحب نے اٹھائے اور…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 27, 2017 - 08:06
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 26, 2017 - 21:17
سید ابو الحسن علی ند وی کا تصو ر پا کستا ن   خصوصی تحریر: بسلسلہ یوم وفات 31دسمبر1999ء   تحر یر عتیق الر حمن  (اسلام آ با د )(مضمون نگار وفاقی اردویونیورسٹی اسلام آباد میں ایم فل اسلامیات کا طالب علم ہے،شعبہ صحافت سے گذشتہ 10سال سے وابستہ ہے ملک کے بڑے چھوٹے جرائد میں ''دیس کی بات'' کے نام سے مضامین اشاعت پذیرہوچکے ہیں۔علمی و مطالعاتی شعبہ میں سید ابوالحسن علی ندوی کی کتب سے استفادہ کرتے ہیں۔اسی کی روشنی میں تعلیم یافتہ نوجوانوں کیلئے فکری پیام کے انتقال کیلئے علی میاں کی یوم وفات کے سلسلہ میں یہ مضمون تحریر کیا ہے ۔جس کو شائع کرکے ممنون فرمائیں۔) بر صغیر میں...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 26, 2017 - 16:28
مصنف: کچھ دل سے

بھلے لوگوں کی صفاتمسجد حرام کے امام وخطیب فضیلۃ الشیخ فیصل بن جمیل الغزاوی
جمعۃ المبارک 4 ربیع الثانی 1439 ہ بمطابق 22 دسمبر 2017
 ترجمہ محمد عاطف الیاس
اللہ رب العالمین کے لیے بے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 26, 2017 - 13:01


میری کرسمس – کفر یا ایمان؟
ڈاکٹر محمد عقیل
میری کرسمس پر آج کل زوردار بحث چل رہی ہے۔ ایک گروہ اس اصطلاح کا مطلب خدا کا بیٹا لے کر اس کے کہنے والوں پر کفر کا اطلاق کررہا ہے تو دوسرا گروہ وارفتگی میں میری کرسمس بولنا مذہنی و اخلاقی فریضہ ثابت کرتے ہوئے دکھائی دیتا ہے۔ حقیقت ان دونوں کے بین بین ہے۔
جہاں تک میری کرسمس کے لغوی معنی کا تعلق ہے تو یہ سادہ الفاظ میں "ہیپی کرسمس "یا "کرسمس مبارک ہو” بنتا ہے۔ بالکل ایسے ہی جیسے ہم عید مبارک کہتے ہیں۔ بالفرض میری کرسمس کے لغوی معنی خدا کا بیٹا ہی کے ہیں تب بھی اس اصطلاح کے موجودہ معنی ” کرسمس...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 26, 2017 - 12:57


بگ بینگ سے پہلے کچھ نہ تھا ؟اسٹیفن ہاکنگ کے جواب کا تجزیہ
ڈاکٹر محمد عقیل
سوال: کیا کائنات کہیں ختم ہوتی ہے۔ اگر ہاں تو اس اختتام کے اس پار کیا ہے؟

جواب: ہمارا مشاہدہ ہمیں یہ بتاتا ہے کہ کائنات ایک انتہائی تیز رفتار اسراع کے ساتھ پھیل رہی ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ یہ پھیلاو لامتناہی ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ اس کی وجہ سے کائنات مزید خالی اور تاریک ہوتی چلی جائے گی۔ اگرچہ کائنات کا کوئی اختتام نہیں پر اس کا ایک آغاز ضرور ہے۔ آج اس آغاز کو ہم بگ بینگ کہتے ہیں۔ یہ پوچھا جا سکتا ہے کہ بگ بینگ سے پرے کیا تھا اور اس کا جواب ہو گا کہ کچھ نہیں۔ایسے ہی جیسے قطب جنوبی سے پرے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 25, 2017 - 16:05
کیا ڈیڑھ چلو پانی میں ایمان بہہ گیا

دور جدید کا ایک بڑا خسارہ برداشت کا جنازہ ہے۔ چند اہل علم و ہنر اس بات کو تسلیم کرنے سے انکاری ہیں اور ان کا خیال ہے کہ مروت، محبت اور رواداری قریب المرگ ضرور ہیں مگر ابھی جنازہ نہیں اٹھا۔ بعض کے ہاں یہ خیال پایا جاتا ہے کہ سکرات طاری ہے مگر ممکن ہےکہ پھر سے صحت پائیں۔ میں ان پرامید لوگوں کی شمع امید گل کرنا نہیں چاہتا مگر ان سے یہ سوال ضرور پوچھ لیتا ہوں کہ قریب المرگ ہے تو کب تک سرہانے سے لگے اس کو دیکھو گے؟سکرات طاری ہے تو وینٹیلیٹرز کب تک کام کریں گے؟موجودہ معاشرے میں جہاں ایک "فارورڈ" کے بٹن نے تحقیق کا گریباں چاک کیا ہے وہیں "کاپی پیسٹ"...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 25, 2017 - 12:51
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 25, 2017 - 09:49

الله کے حُکم سے پاکستان بنانے والے مسلمانانِ ہند کے عظیم راہنما قائد اعظم محمد علی جناح کا آج یومِ ولادت ہے ۔ میں اس حوالے سے قائد اعظم کے متعلق لکھی ہوئی چند اہم تحاریر کے عنوان مع روابط لکھ رہا ہوں ۔ آپ سب پاکستانی ہیں یا کم از کم پاکستان سے تعلق رکھتے ہیں ۔ آپ کو پاکستان کے متعلق بنیادی حقائق معلوم ہونا چاہئیں تاکہ معاندانہ پروپیگنڈہ سے محفوظ رہ سکیں

قائد اعظم کی خواہش پر کہ بھارت کے ساتھ نہ کیا جائے پاکستان کا اعلان 14 اور 15 اگست کی درمیانی رات 11 بج کر 57 منٹ پر اور بھارت کا 12 بجے کے بعد کیا گیا ۔ 27 رمضان المبارک 1366 ھ اور 15 اگست 1947ء بروز جمعة المبارک سرزمینِ پاکستان...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 23, 2017 - 14:38


خدا شخصی ہے یا غیر شخصی ؟اسٹیفن ہاکنگ کے اعتراض کا تجزیہ
ڈاکٹر محمد عقیل
حال ہی میں اسٹیفن ہاکنگ کا ایک انٹرویو شائع ہوا ہے جس میں انہوں نے دس سوالات کے جواب دیے ہیں۔۔ ان کے پہلےجواب پر تبصرہ پیش خدمت ہے ۔ اس کا مقصد اہل مذہب کی غلطیوں کے ساتھ ساتھ اہل سائنس کی کوتاہیوں کی نشاندہی کرنا اور ایک ریکنسی لی ایشن کے نتیجے تک پہنچنا ہے۔
سوال: اگر خدا نہیں ہے تو اس کے وجود کا تصور اتنا مقبول کیسے ہو سکتا ہے؟

جواب: میں نے یہ دعوی کبھی نہیں کیا کہ خدا وجود نہیں رکھتا۔ ہم اس جہان میں کیوں ہیں؟ یہ سوال جب بھی ایک انسانی ذہن میں اٹھتا ہے تو اس کی...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 23, 2017 - 13:12
جہاد کی فرضیت اسلام کے جاری کردہ احکام میں سے نہیں ہے بلکہ کلمہ حق کی سربلندی اور انسانی سوسائٹی پر آسمانی تعلیمات کی بالادستی کے لیے جہاد اس سے قبل بھی ہوتا رہا ہے اور قرآن کریم نے اس جہاد کے مختلف مراحل کا تذکرہ بھی کیا ہے۔ جہاد کا تذکرہ بائبل میں بھی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 23, 2017 - 12:31
لفظ ’جہاد‘ کا استعمال آئے دن سیاست دانوں،نشریاتی ایجنسیوں اور صحافتی اداروں کے ذریعے ہوتارہتاہے۔ اکثر موقعوں پر اِس کااستعمال دہشت گردی (Terrorism)اور کھلی تباہی(Wanton Destruction)جیسے مطالب بیان کرنے کی غرض سے کیاجاتاہے۔ حد یہ کہ ۱۱/ستمبر ،۷/جولائی اور حالیہ ممبئی حملوں پربھی مغربی تجزیہ نگاروں نے بڑی شاطرانہ چال سےاسی ’جہاد ‘کا لیبل چسپاں…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 22, 2017 - 13:16
مصنف: کچھ دل سے


یا رب تو اپنے فضل سے آنا قبول کرتیرے سوا نہیں سہارا قبول کر
سوغاتِ فَقر دور سے لایا ہوں میں یہںوللہ تجھ کو فَقر ہے پیارا قبول کر
تیرے سوا نہیں سہارا قبول کر
الجھا ہے قلب خانہ کعبہ کی زلف میںتو ملتزم سے سینہ ملانا قبول کر
تیرے سوا نہیں سہارا قبول کر
زمزم ہے رشکِ و کوثر و تسنیم و سلسبیلزمزم سے دل کی آگ بجھانا قبول کر
تیرے سوا نہیں سہارا قبول کر
ہو رحم تیرا مجھ پہ تو آؤں گا بار باراب بھی بلایا تو نے کریما قبل کر
تیرے سوا نہیں سہارا قبول کر
اسود حجر کے چہرے پہ بوسہ ہے خوب تربوسہ نہ ہو سکے تو اشارہ قبول کر
تیرے سوا نہیں ہے سہارا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 22, 2017 - 09:45

محترم بہنو اور بھائیوں
السلام علیکم و رحمة الله و بركاته
آپ جانتے ہوں گے اگر نہیں تو تاریخ کا مطالعہ بتا سکتا ہے کہ جس سلطنت میں انصاف مِٹ جاتا ہے یا مذاق بن جاتا ہے وہاں ہر قسم کی برائیاں جنم لیتی ہیں ۔ اصلاح نہ کی جائے تو ایسی سلنطنت اُلٹ دی جاتی ہیں ۔ بابل و نَینوا کا کیا ہوا ۔ بہت بڑی سلطنتِ فارس نابود ہو گئی ۔ قومِ لوط ہو یا قومِ نوح اُن کا نام و نشان باقی نہ رہا ۔ عبرت حاصل کرنے کیلئے فرعون اور نمرود کے صرف نام باقی رہ گئے
اصحابِ کہف کا ذکر آج بھی ہے لیکن جس قوم سے عاجز آ کر الله کے اُن نیک بندوں نے الله کی پناہ مانگی تھی ۔ اُس قوم کو کوئی نہیں جانتا

ہم سب...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 21, 2017 - 23:10
شال پہنائے گا اب کون دسمبر میں تمہیں
بارشوں میں کبھی بھیگو گے تو یاد آؤں گا
فکاہیہ تشریح:
ہم اس حقیقت سے آنکھیں نہیں چرا سکتے کہ محبت کی داستان میں رنگ بھرنے کو مبالغہ آرائی اور لفاظی عام ہے۔ مگر مبالغہ آرائی اور لفاظی کو بھی کوئی بنیاد تو میسر ہو۔ شاعر اپنی اہمیت جتانے کے چکر میں زمینی حقائق بالکل ہی فراموش کر بیٹھا ہے۔ ایسی صورتحال تب ہوتی ہے جب آپ تیز تیز دلائل دینے کی کوشش میں مصروف ہوں اور پھر آپ کا تمام زور منطقی دلائل کی بجائے محض زور بیاں پر رہ جائے۔ ہم نے ساری عمر یہی دیکھا ہے کہ شال اوڑھائی جاتی ہے، پہنائی نہیں جاتی۔ اس پر ستم بالائے ستم یہ کہ وہ بھی بارش میں۔ یعنی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 21, 2017 - 18:33

منایئے نئے سال کی خوشیاں ویرا کے ساتھ۔۔ ویرا دینے جا رہا ہے بڑی بچت۔۔۔ 23 دسمبر سے 31 دسمبر تک ویرا نیو ایئر سیل 2018 ۔۔۔ جہاں صارفین کو ملے گا 43 فیصد تک زبردست ڈسکاونٹ۔۔۔۔ تو وزٹ کیجئے۔۔

...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 21, 2017 - 12:11
مصنف: کچھ دل سے

خوشی کا حصول 
خوشی ہر آدمی  چاہتا ہے -  لیکن مطلوب خوشی کسی کو نہیں ملتی - چنانچہ خوشی عملاً ایک ناقابل حصول چیز بنی ہوئی ہے -  برٹش فلسفی برٹرینڈ رسل نے خوشی( happiness ) کے موضوع پر ایک کتاب لکھی ہے -  اس میں وہ بتاتا ہے کہ اس دنیا میں خوشی کسی کے لیے قابل حصول نہیں -  اس معاملے میں اسلام نے ایک فطری فارمولا اختیار کیا ہے -  قرآن میں بتایا گیا ہے اطمنان قلب انسان کو صرف اللہ کی یاد( الرعد :28) سے حاصل ہوتا ہے -  یعنی قرآن میں دو چیزوں کو ایک دوسرے سے الگ کر دیا گیا ہے،  مادی لذت( physical pleasure ) اور ذہنی اطمنان( intellectual...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 20, 2017 - 23:19
لو آج کی شب بھی سو چکے ہم
شہر اقتدار سے دانہ پانی اٹھنے کے بعد ہم نے زندہ دلوں کے شہر کا رخ کیا۔ جس دوست کو بھی یہ خبر سنائی، اس نے قہقہہ لگا کر ایک ہی بات کی۔ “جتھے دی کھوتی اوتھے آن کھلوتی”۔ ان دنوں دو باتوں پر ہماری زبان سے ہر وقت شکر ادا ہوتا تھا۔ ایک کہ یہ محاورہ مذکر نہیں۔ دوسرا اہلِ زبان اس میں مذکر کے لیے کچھ مناسب ترامیم کا ارادہ نہیں رکھتے۔ نئی ملازمت میں آتے ہی پتا چلا کہ شام کو آنا ہے۔ اور صبح سویرے منہ اندھیرے جانا ہے۔ چند دن گزارے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 20, 2017 - 22:22
مصنف: شعیب صفدر

یہ ابتدائی وکالت بلکہ وکالت کے پہلے چھ ماہ کے دور کی بات ہے ہمارے ایک دوست ایک فوجداری کیس میں پھنس گ...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 20, 2017 - 16:34
مصنف: نوک جوک

...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 20, 2017 - 16:31
مصنف: کچھ دل سے
~!~ آج کی بات ~!~
ایک کونے میں زبان کٹے، گونگے اور بہرے کی طرح بیٹھ جانا...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 19, 2017 - 17:50
مصنف: کچھ دل سے
~!~آج کی بات ~!~
جس روز مجھے یہ یقین ہو گیا کہ در کھولنا مخلوق کی قدرت سکت...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 19, 2017 - 16:31
مصنف: بلاگ اے
ہمارے یا کسی بھی ترقی پذیر معاشرے میں آرٹ یا فنون لطیفہ کو لوگوں کی بڑی تعداد کی طرف سے سراہا نہیں جاتا، عوام کا زیادہ دھیان زندہ رہنے میں ہی لگا رہتا ہے۔
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 19, 2017 - 15:41
مصنف: کچھ دل سے

یہ مکہ کی فضا ہے
میری قسمت مجھے اللہ نے دکھلا دیا کعبہمیری قسمت مجھے اللہ نے دکھلا دیا کعبہ
یہ مکہ کی فضا اور میں ہوںیہاں دار العطا ہے اور میں ہوں
...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 19, 2017 - 11:34

میں آج 2007ء کی تحریر دہرانے پر مجبور ہوا ہوں

اِسے جہالت کہا جائے ہَڈدھرمی کہا جائے یا معاندانہ پروپیگینڈا ؟ میں پچھلے 15 یا 16 سال سے دیکھ رہا ہوں کہ ہمارے ملکی اخباروں میں جب بھی قبلۂِ اوّل یعنی مسجدالاقصٰی کی خبر کے ساتھ تصویر چھاپی جاتی ہے تو وہ مسجد الاقصٰی کی نہیں ہوتی بلکہ قبة الصخراء کی ہوتی ہے ۔ قبة الصخراء کیاہمیت اپنی جگہ لیکن مسلمانوں بیت المقدس یا القدس سے اصل لگاؤ مسجدالاقصٰی کی وجہ سے ہے جو کہ قبله اوّل تھا اور تو اور جماعتِ اِسلامی جو دین اِسلام کی علَم بردار ہے اور جس میں پڑھے لکھے لوگوں کی کافی تعداد شامِل ہے نے پچھلے دِنوں بیت المقدس کے سلسہ میں احتجاج کیا...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: منگل, December 19, 2017 - 07:20
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 18, 2017 - 23:37

ہر برس ہی گراں گزرتے ہیں
خواہشوں کے نگار خانے میں
کیسے کیسے گماں گزرتے ہیں

رفتگاں کےبکھرتے سالوں کی
ایک محفل سی دل میں سجتی ہے

فون کی ڈائری کے صفحوں سے
کتنے نمبر پکارتے ہیں مجھے
جن سے مربوط بے نوا گھنٹی
اب فقط میرے دل میں بجتی ہے

کس قدر پیارے پیارے ناموں پر
رینگتی بدنما لکیریں سی
میری آنکھوں میں پھیل جاتی ہیں
دوریاں دائرے بناتی ہیں

دھیان کی سیڑھیوں میں کیا کیا عکس
مشعلیں درد کی جلاتے ہیں
ایسے کاغذ پہ پھیل جاتے ہیں

حادثے کے مقام پر جیسے
خون کے سوکھے نشانوں پر
چاک کی لائنیں لگاتے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سوموار, December 18, 2017 - 15:43

میں کیوں لکھتا ہوں ؟ محمد علم اللہ جامعہ ملیہ، دہلیتقریبا ایک سال پہلے کی بات ہے۔ معروف پاکستانی ادیب نعیم بیگ صاحب نے اردو پروگریسیو رائٹنگ فیس بک پیج پرتمام لکھنے والوں سے ایک سوال کیا تھا، کہ وہ کیوں لکھتے ہیں؟ایک بڑے لکھاری یا ادیب کے پاس تو اس سوال کا جواب دینے کے لیے بہت کچھ مواد ہوتا ہے کہ ان کے پاس علم بھی ہوتا ہے اور تجربات بھی اور انھوں نے دنیا دیکھی ہوتی ہے، ایسے جہاں دیدہ افراد اس سوال کے جواب میں اگر کچھ لکھیں تو وہ یقینا ایک کارآمد چیز ہوتی ہے۔ نوآموز قلم کاروں کو ان سے بہت کچھ سیکھنے کو بھی ملتا ہے اور ان کی تحریروں کے آئنے میں خود کو جانچنے پرکھنے کا موقع بھی...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, December 17, 2017 - 12:48

سقوطِ ڈھاکہ پر لکھی گئی۔۔۔امجد اسلام امجد کی نظم
اے زمینِ وطن ہم گنہگار ہیں
ہم نے نظموں میں تیرے چمکتے ہوئے بام و در کے بیتاب قصے لکھےپھول چہروں پہ شبنم سی غزلیں کہیں، خواب آنکھوں کے خوشبو قصیدے لکھےتیرے کھیتوں کی فصلوں کو سونا گنا، تیری گلیوں میں دل کے جریدے لکھےجن کو خود اپنی آنکھوں سے دیکھا نہیں، ہم نے تیری جبیں پر وہ لمحے لکھے
جو تصور کے لشکر میں لڑتے رہے، ہم وہ سالار ہیںہم گنہگار ہیں
اے زمینِ وطن ۔۔۔ ہم گنہگار ہیں
ہم تیرے دکھ سمندر سے غافل رہےتیرے چہرے کی رونق دھواں ہو گئی اور ہم رہینِ غمِ دل رہےظلم کے روبرو لب کشائی نہ کی، اس طرح ظالموں میں بھی شامل...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: اتوار, December 17, 2017 - 12:10

تحریر  :  اسریٰ غوری

میدان کے عین درمیان میں لکڑی کی سادہ سی میز رکھی ھے جسکے دونوں طرف بھارتی فوج اور سپاہی الگ الگ قطار میں کھڑے ھیں ، میز کے گرد پہلے جنرل اروڑا بیٹھتے ھیں ا

ان کے برابر جنرل نیازی بیٹھ جاتے ھیں ۔ ۔

یہ ان کی زندگی کا سب سے زیادہ ذلّت آمیز لمحہ ھے ، مسّودہ میز پر رکھا ھے ، جنرل نیازی کا ہاتھ آگے بڑھتا ھے اور ان کا قلم مسودے پر اپنے دستخط ثبت کر دیتا ھے ۔۔۔ پاکستان کا پرچم سر زمین ڈھاکہ میں سرنگوں ھو گیا ۔۔ جنرل نیازی اپنا ریوالور کھولتے ھیں اور گولیوں سے خالی کر کے جنرل اروڑا کے ہاتھ میں تھما دیتے ھیں ۔۔ جنرل نیازی کے تمغے اور رینک سر عام اتارے...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 18:28

میدان کے عین درمیان میں لکڑی کی سادہ سی میز رکھی ہے جس کے دونوں طرف بھارتی فوج اور سپاہی الگ الگ قطار میں کھڑے ہیں، میز کے گرد پہلے جنرل اروڑا بیٹھتے ہیں، ان کے برابر جنرل نیازی بیٹھ جاتے ہیں۔ یہ ان کی زندگی کا سب سے زیادہ ذلّت آمیز لمحہ ہے، مسّودہ میز پر رکھا ہے، جنرل نیازی کا ہاتھ آگے بڑھتا ہے اور ان کا قلم مسودے پر اپنے دستخط ثبت کر دیتا ہے۔ پاکستان کا پرچم سر زمین ڈھاکہ میں سرنگوں ہوگیا۔ جنرل نیازی اپنا ریوالور کھولتے ہیں اور گولیوں سے خالی کر کے جنرل اروڑا کے ہاتھ میں تھما دیتے ہیں۔ جنرل نیازی کے تمغے اور رینک سر عام اتارے جاتے ہیں۔ ہجوم کی طرف سے گالیوں کی بوچھاڑ شروع ہوتی ہے۔ جنرل...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 17:13
مصنف: کچھ دل سے
~!~ آج کی بات ~!~
" عزت وقتی طور پر ایک “غیر مستحق” کو بھی مل جاتی ہے ،...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 14:22
. آج سے دو سو برس پیشتر ایک آدمی اچھا مسلمان ہو سکتا تھا اور رہ سکتا تھا خواہ اس نے کبھی امام غزالی اور ابن عربی کا نام بھی نہ سنا ہوتا۔ اس وقت نرا ایمان کافی تھا کیونکہ اس کی حفاظت ہوتی رہتی تھی۔ آج کا مسلمان اگر ان عقائد کے بارے میں…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 13:37
مصنف: کچھ دل سے
بیت المقدس کی فضیلت اور مسئلے کا حل - خطبہ جمعہ مسجد نبویترجمہ: شفقت الرحمان مغل
فضیلۃ  الشیخ ڈاکٹر جسٹس حسین بن عبد العزیز آل شیخ حفظہ اللہ نے 27-ربیع الاول- 1439 کا خطبہ جمعہ مسجد نبوی میں بعنوان " بیت المقدس کی فضیلت اور مسئلے کا حل " ارشاد فرمایا ، جس میں انہوں نے کہا کہ مسئلہ فلسطین ہر مسلمان کا مسئلہ ہے کوئی بھی اسلامی ملک یا  معاشرہ اس مسئلے کو ایک...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 12:16
عالم اسلام میں آئیں تو سب کشمکش آج اس پر ہے، اور ہوگی، کہ ہم اپنی اُسی ملت پر اصرار کریں جو چودہ سو سال سے ہماری نظریاتی تشکیل کرتی آئی؛ اور اُن کے دیے ہوئے اِس نئے تصورِ ملت کو اپنے لیے قبول نہ کریں۔ ’اپنی ملت کو قیاس اقوامِ مغرب سے نہ کرنے‘…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 12:06
اسلام جہاں ایک اصولی دستورِ حیات ہے وہاں فطرت کے مقاصد کا بہترین نگہبان بھی ہے۔ اپنے کنبے قبیلے سے عام انسانوں کی نسبت آدمی کو زیادہ محبت ہونا، خاص اپنی زبان اور پھر زبان میں بھی خاص اپنا لہجہ بولا جا رہا ہو تو آدمی کا اس پر پھڑک اٹھنا، اپنے خون کےلیے آدمی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 11:32

ہمارے مُلک کے ایک بڑے حصے کو علیحدہ ہوئے 46 سال بِیت گئے لیکن مجھے وہ خوبصورت نوجوان Assistant Works Manager محبوب نہیں بھولتا ۔ سُرخ و سفید چہرہ ۔ دراز قد ۔ چوڑا سینہ ۔ ذہین ۔ محنتی ۔ کم گو ۔ بہترین اخلاق ۔ اُردو باقی بنگالیوں کی بجائے نئی دہلی کے رہنے والوں کی طرح بولتا تھا ۔ مشرقی پاکستان میں نئی مکمل ہونے والی فیکٹری میں اُسے اوائل 1970ء میں بھیج دیا گیا کہ وہ بنگالی تھا (سِلہٹ کا رہائشی)

یکم جولائی 1969ء کو مجھے ترقی دے کر Production Manager Weaponsتعینات کر کے فیکٹری کے 8 میں سے 4 محکموں کی سربراہی کے ساتھ نئے اسِسٹنٹ ورکس منیجر صاحبان کی تربیت بھی ذمہ داریاں دے دی گئیں ۔...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 11:25
کس معصومیت اور تجاہل عارفانہ سے سوال اٹھایا جاتا ہے کہ کیا سیکولرزم لادینیت کا نام ہے؟اور پھر سارا زور یہ ثابت کرنے میں لگا دیا جاتا ہے کہ سیکولرزم تو محض انسان دوستی اور اعلی اخلاقیات کا نام ہے اسے لادینیت نہیں کہا جا سکتا۔ پاکستانی معاشرے کی اپنی نفسیات ہیں۔مذہبی تعلیمات پر عمل…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 11:25
برادر سید متین نے پروفیسر امجد علی شاکر صاحب کے ایک اقتباس کی روشنی میں سوال اٹھایا ہے کہ سیکولر ریاست کا معنی کیا ہوتا ہے؟ پروفیسر صاحب فرماتے ہیں کہ مولانا مودودی نے سیکولرازم کا ترجمہ “لادینی” کیا ہے تو یہ درست نہیں بلکہ سیکولرازم کا معنی “ہمہ دینی یا کثیر مذہبی” ہوتا ہے۔…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 11:06
موجودہ تہذیب آزادی کے نام پر یہ جھانسہ دیتی ھے کہ فرد یہاں ”جو” چاھنا چاھے چاھنے اور اسے حاصل کرسکنے کیلئے آزاد ھے”۔ مگر فی الحقیقت یہ ایک لغو دعوی ھے، عملا اس نظام میں فرد صرف وہی چاہ سکتا اور چاھتا ھے جس کے نتیجے میں سرمائے میں اضافہ ھو کیونکہ آزادی کا…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 10:29
1. کون سا اِسلام جناب، کیونکہ مولویوں کا اسلامی احکامات کی تشریح میں اختلاف ہے، لٰہذا جب تک یہ اختلاف ختم نہیں ہوجاتے،اسلام کو اجتماعی نظم سے باہر رکھو۔ 2. ٹھیک ہے اختلافات ہمارے درمیان بھی ہیں،مگر ہم لڑتے تو نہیں نا، مولوی تو لڑتے ہیں،ایک دوسرے کو کافر وگمراہ کہتے ہیں۔ 3. عقل پر…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 10:20
سیکولرز کا پیش کردہ اشکال: کونسی شریعت شریعت شریعت تو سب کرتے ہیں۔ مگر اِن داعیانِ شریعت میں سے آج تک کوئی یہ نہیں بتا سکا کہ کونسی شریعت؟ کوئی ایک شریعت ہو تو بات کریں۔ یہاں خمینی کی شریعت ہے۔ نمیری کی شریعت ہے۔ ضیاءالحق کی شریعت ہے۔ قذافی کی شریعت الگ ہے۔ سعودیہ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 10:12
 ٭عقل پر مبنی اجتماعی نظم ڈاگمیٹک نہیں ہوتا جب ان باتوں کا جواب نہیں بنتا تو عقل پرست و سیکولر لوگ ایک نئے قسم کا داؤ پیچ کھیلتے ہیں اور وہ یہ کہ ‘مذہبی عقیدہ چونکہ معین،غیر متبدل وآفاقی ہونے کا مدعی ہوتا ہے لٰہذا یہ اپنے ماننے والوں میں ڈاگمیٹک (متشدد) رویے کو فروغ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 09:50
گزشتہ بحث کےبعد یہ غلط فہمی خودبخود صاف ہوجانی چاہیئے کیونکہ اپنے دائرہ عمل میں سیکولر ریاست صرف انہی تصورات خیر اور حقوق کو برداشت کرتی ہے جو اسکے اپنے تصور خیر (ہیومن رائٹس،یعنی ہیومن کی آزادی) سے متصادم نہ ہوں، اور ایسے تصورات خیر جو ہیومن رائٹس سے متصادم ہوں انکی بذریعہ قوت بیخ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: سنیچر, December 16, 2017 - 09:35
اس ضمن میں سیکولر لوگ بڑے طمطراق سے یہ بھی کہتے ہیں کہ سیکولر ریاست مذہبی اختلافات (مثلاً شیعہ،سنی،دیوبندی،بریلوی) کو ختم کرکے انکے پرامن بقائے باہمی کوممکن بناتی ہے، اور ہمارے چند دینی لوگ بھی اس جھانسے کاشکار ہوکر اسے سیکولر ریاست کی کوئی ‘خوبی’ اور اہل مذہب پر اس کا کوئی’احسان’ تصور کرنے لگتےہیں۔…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 15, 2017 - 20:35
سیکولر لوگوں کی پھیلائی ھوئی بہت سی مغالطہ انگیزیوں میں سے ایک یہ بھی ھے کہ ”سیکولر ریاست مذہبی ریاست کی طرح فرد کی ذاتی زندگی میں مداخلت نہیں کرتی، لہذا یہ مذہبی ریاست کی طرح جابرانہ (coercive) نہیں ھوتی۔ پس ریاست کو مذہبی نہیں بلکہ سیکولر بنیاد پر قائم ھونا چاھئے”۔ مگر حقیقت یہ…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 15, 2017 - 20:30
لبرل ریاستوں کا موجودہ پالیسی فریم ورک علم معاشیات کے مباحث سے ماخوذ ہے۔ معاشیات کی کتب لکھنے والے مصنفین بظاہر اپنے قاری کو یہ تاثر دیتے ہیں کہ ’’ریاست کو کیوں نجی سیکٹر کے معاملات میں مداخلت نہیں کرنا چاہیے‘‘ ۔ معاشیات میں گریجویشن کرنے والے عام طالب علم اور لبرل سیاسی فکر کا…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 15, 2017 - 17:49
مصنف: کچھ دل سے

جاہ و جلال, دام و درم اور کتنی دیر
ریگِ رواں پہ نقش قدم اور کتنی دیر

اب اور کتنی دیر یہ دہشت، یہ ڈر، یہ خوف
گرد و غبار عہدِ ستم اور کتنی دیر

حلقہ بگوشوں، عرض گزاروں کے...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 15, 2017 - 15:14

...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعہ, December 15, 2017 - 08:00

اس امر میں کوئی شبہ نہیں کہ اس وقت دنیا کو عسکری طاقت نہیں بلکہ میڈیا کی طاقت کے ذریعے کنٹرول کیا جارہا ہے ۔۔۔۔۔ دنیا کی حکمران ایلیٹ یعنی اصل اور بڑا سرمایہ دار طبقہ جیسے چاہے عوام کی رائے تبدیل کرنے پر قادر ہے ۔۔۔۔ اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ میڈیا دنیا کی خبریں بلا کم و کاست پہنچا دیتا ہے تو اس کی شدید غلط فہمی ہے ۔۔۔۔ دنیا بھر کے میڈیا پر ترقی یافتہ ممالک کے سرمایہ داروں کا مکمل کنٹرول ہے اور ترقی پذیر ممالک کا میڈیا ان مغربی اداروں کا دست نگر ہے جو سرمایہ دارانہ نظام کے محافظ کا کردار ادا کر رہے ہیں۔
معروف مفکر نوم چومسکی اور ایڈورڈ ہرمن نے 1988 میں شائع ہونے والی اپنی کتاب The...

زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 14, 2017 - 16:02
گذشتہ ایک تحریر میں راقم نے مولانا حمید الدین فراہی اور مولانا امین احسن اصلاحی کی فکر میں موجود تصورِ خلافت پر اپنی طالب علمانہ گزارشات پیش کی تھیں۔اس تحریر میں زیادہ فوکس ان بزرگوں کی قرآنی فکر اور تفسیری آرا پر رہا اور اپنے تفسیری افکار کے ضمن میں انھوں نے جہاں اسلامی روایت…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 14, 2017 - 15:44
12اپریل 2017ء کے ایک کالم میں جناب خورشید احمد ندیم نے محترم جاوید احمد غامدی صاحب کے جوابی بیانیے کے الفاظ کو نکات کی شکل میں ملخص کر کے پیش فرمایا ہے۔ بات پرانی ہے، اس پر لکھا بھی بہت کچھ جا چکا ہے۔ ان سطور میں پہلے سوال پر گفتگو کرنے کی کوشش کی…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 14, 2017 - 09:03
آج کا سب سے زیادہ فیشن ایبل سیاسی نظریہ سیکولر جمہوریت ہے، اس وقت دنیا میں یہ کہا اور سمجھا جارہا ہے کہ دنیا کے مختلف نظاموں کے تجربات کرنے کے بعد آخر میں میں سیکولر جمہوریت ہی سب سے بہتر نظام حکومت ہے۔ یہاں تک کہا جارہا ہے کہ اب اس سے بہتر نظام…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 14, 2017 - 08:48
تھیوکریسی(Theocracy): تھیوکریسی کا لفظ یونانی اصلیت رکھتا ہے۔ یونانی زبان میں Theo خدا کو کہتے ہیں، ( اور اسی سے تھیولوجی بنا ہے لوجی کہتے ہیں علم کو۔ توتھیولوجی کے معنی عالم الٰہیات ہیں)، Cracy کے معنی ہیں حاکمیت۔ اس طرح Theoracyکے معنی ہوئے خدا کی حاکمیت۔ اس نظام کا اصل تصور تو بڑا مبارک…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: جمعرات, December 14, 2017 - 08:32
خلافت کی ناگزیریت: فطری تقاضوں اور استطاعت کا مغالطہ ہماری تحریر “خلافت ناگزیر ہے” کے جواب میں احباب نے دلائل کی جو عمارت قائم کی ہے اس کا ایک ستون یہ ہے: “فطری تقاضوں (بشمول اجتماعی نظام کے قیام) کو فطرت تک ہی رکھنا چاھئے۔ فطری اور عقلی تقاضے بدیہات ہوتے ہیں۔ ان پر انسانوں…
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 13, 2017 - 17:07
مصنف: کچھ دل سے

~!~ آج کی بات ~!~
’اگر آپ کے جذبات آپ کے قابو میں نہیں، اگر آپ کو...
زمرہ: اردو بلاگ
تاریخ اشاعت: بدھ, December 13, 2017 - 16:00
یہ سوال پوچھتے پھرنا کہ “بتاؤ کس آیت میں لکھا ہے کہ خلافت قائم کرنا ضروری ہے” ظاہر کرتا ہے کہ سائل کو معاملے کی نوعیت کی خبر ہی نہیں۔ یہ سوال ہی باطل ہے۔ متعلقہ سوال یہ ہے کہ کیا اللہ تعالی نے جن حقوق و فرائض کو متعین کیا ہے ان کی ادائیگی…
زمرہ: اردو بلاگ

Pages

Subscribe to بلاگستان فیڈز